NEWS

31-Jan-2017

شہر میں حالیہ لوڈشیڈنگ کی نئی لہر اور اضافی بلوں کی مد میں عوام سے لوٹ مار کرنے پر شدید تشویش کا اظہار۔وسیم آفتاب
کے الیکٹرک اضافی بلوں پر ازسر نونظر ثانی کرتے ہوئے عوام سے ناجائز حاصل کی گئی رقوم واپس کرے۔ترجمان پاک سر زمین پارٹی
کے الیکٹرک نے عوام سے اوور بلنگ کرتے ہوئے 100ارب سے زیادہ اضافی رقم لی ہے۔

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے ترجمان وسیم آفتاب نے شہر میں حالیہ لوڈشیڈنگ کی نئی لہر اور اضافی بلوں کی مد میں عوام سے لوٹ مار کرنے پر اپنی شدید تشویش کا اظہار کیا ہے، پاکستان ہاؤس سے جاری اپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ کے الیکٹرک کی موجودہ انتظامیہ نے نئی انتظامیہ کے چارج سنبھالنے سے قبل غریب عوام سے اوور بلنگ کرتے ہوئے 100ارب سے زیادہ اضافی رقم لی ہے جبکہ علاقائی دفتر سے رابطہ کرنے پر یہ کہا جاتا ہے کہ بل بھرنا لازمی ہے۔انہوں نے کے الیکڑک کی نئی آنے والی انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ ان اضافی بلوں پر ازسر نونظر ثانی کرے اور جن صارفین کو ناجائز بل بھیجے گئے ہیں ان کے بلوں کو تحقیقات کے بعد صحیح ریڈنگ کے حساب سے دوبارہ جاری کرتے ہوئے عوام سے ناجائز حاصل کی گئی رقوم واپس کرے۔ انہوں نے حکومت سندھ سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ محتسب اعلی سندھ کے پاس جمع کرائی ہوئی درخواستوں پر بھی کے الیکٹرک حکام سے جواب طلب کریں اور نئی آنے والی انتظامیہ کو اس بات کا پابند کریں کہ عوام کی سہولت کو مدنظر رکھتے ہوئے زائد بلنگ نہ کرتے ہوئے لوڈشیڈنگ میں کمی اور اس کے اوقات میں تبدیلی کریں اور جن علاقوں میں اے بی سی کیبل ڈالی جاچکی ہیں ان علاقوں کو بھی لوڈشیڈنگ سے مستثنٰی قرار دیا جائے تاکہ عوام کو ذہنی اذیت اور پریشانی سے نجات حاصل ہو۔

 

30-Jan-2017

 

قرار داد کراچی

کراچی وہ امانت ہے جو پاکستان کی ضمانت ہے ،کراچی کا حال پاکستان کا مستقبل
تبت سینٹر، ایم اے جناح روڈ، کراچی 29جنوری 2017

آج کی عوامی عدالت پاک سرزمین پارٹی کے پلیٹ فارم سے مطالبہ کرتی ہے کہ:۔
۱۔ آئین کے آرٹیکل 140A کے تحت مقامی حکومتوں کو مکمل مالی، سیاسی اور انتظامی اختیارات دیئے جائیں۔
۲۔ مردم شماری کو شفاف اور غیرجانبدار بنانے کیلئے بین الاقوامی اصول و ضوابط کے عین مطابق پورا کیا جائے۔ اور اسے سیاسی اثر و رسوخ سے پاک رکھا جائے۔
۳۔ ملک سے کرپشن کا مکمل خاتمہ اور ایسے تمام قوانین اور اصول و ضوابط کی مکمل حمایت۔
۴۔ ریاست کی ذمہ داری ہے کہ وہ ملک کے ہر شہری کو آئین اور قانون میں دئیے گئے تمام انسانی، آئینی، جمہوری اور بنیادی حقوق کے تحفظ کو یقینی بنائے۔
۵۔ کراچی کے ہر شہری کو پینے کا صاف پانی، نکاسی آب کا انتظام، صفائی ستھرائی، ٹرانسپورٹ، پارکس، سڑکیں، اسپتال، تعلیمی ادارے، تک رسائی کو ممکن بنایا جائے۔
۶۔ تعلیم، صحت اور روزگار کی فراہمی ہر شہری کیلئے یقینی بنائی جائے۔
۷۔ کراچی پاکستان کی معاشی شہہ رگ اور منی پاکستان ہے۔ اس کی تعمیر، ترقی اور خوشحالی کو استحکام پاکستان کیلئے یقینی بنایا جائے۔
۸۔ کراچی کیلئے چار اور حیدرآباد کیلئے دو کیڈٹ کالج قائم کئے جائیں۔

================================

30-Jan-2017

جلسے کی فقید المثال کامیابی اور کثیر تعداد میں شرکت پرپی ایس پی چیئر مین مصطفی کمال کااہلیان کراچی کو مبارکباد اور خراج تحسین
ہم سیمی فائنل تو پہلے ہی جیت چکے تھے اورکراچی کے جلسے میں اتنی کثیر تعداد میں شر کت کرکے کراچی کی عوام نے فائنل بھی جیتادیا ہے، مصطفی کمال
کامیاب جلسے پر اللہ کے حضور شکرانے کے نفل ادا کریں۔ مصطفی کمال کی وطن پرست عوام سے ا پیل

کراچی ( )چیئرمین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے اپنے بیان میں کہا کہ تبت سینٹر پرپی ایس پی کے تحت منعقد ہونے والے جلسہ’’کراچی وہ امانت ہے جو پاکستان کی ضمانت ہے‘‘ فقید المثال کا میابی سے ہمکنار ہوا۔انہوں نے کراچی کی عوام کواس تاریخی کامیابی پر مبارکباد دیتے ہوئے جلسے کے شرکاء کو خراج تحسین پیش کیا۔اپنے ایک بیان میں انہوں کہا کہ حید رآباد کی عوام کی طرح کراچی والوں نے بھی اپنے مستقبل کا فیصلہ سنا دیا کہ وہ پی ایس پی کے ساتھ ہیں۔ا نہوں نے کہا کہ ہم سیمی فائنل تو پہلے ہی جیت چکے تھے اورکراچی کے جلسے میں اتنی کثیر تعداد میں شر کت کرکے کراچی کی عوام نے فائنل بھی جیتادیا ہے انہو ں کہا کہ کراچی والوں اتنی بڑی تعداد میں شر کت نے مخالفین کے منہ بند کر دیے ہیں اور بتادیا ہے کہ کراچی حق اور سچ کے ساتھ ہے،29 جنوری مظلوموں کی فتح کادن تھا، جو شمع اہلیان کرعاچی نے 29 جنوری کو روشن کی اسکی روشنی پورے پاکستان میں پھیلے گی اور یہ جلسہ نام نہاد فرسودہ سیاست کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہو گا انہوں نے وطن پرست عوام سے اپیل کی ہے کہ کامیاب جلسے پر اللہ کے حضور شکرانے کے نفل ادا کریں۔

================================

سیا سی، سماجی ،مذہبی ،صنتکارو تاجرشخصیات نے پی ایس پی کے تحت 29جنوری کو ہو نے والے جلسے کو تاریخ ساز کامیا بی اورفتح قرار دیا ہے۔
پی ایس پی ملک گیر جماعت ہے اور پاکستان کی عوام لسانیت اور تعصب کی سیاست کو مسترد کرتے ہیں۔ پاکستان کی عوام کے تاثرات

کراچی( )سیا سی، سماجی ،مذہبی ،صنتکارو تاجرشخصیات سمیت پاکستان اور دنیا بھر سے تعلق رکھنے والے مختلف طبقہ فکر کے افراد نے پی ایس پی کے تحت 29جنوری کو ہو نے والے جلسے کو تاریخ ساز کامیا بی اورفتح قرار دیا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی ایس پی کے مرکزی سیکر یٹر یٹ پا کستا ن ہا ؤس میں ٹیلی فون،ای میل ،فیس بک،ایس ایم ایس اور سوشل میڈیا پر مبارکباد کے بڑی تعداد میں موصول ہونے والے پیغامات میں کیا۔انہو ں نے کہا کہ مصطفی کمال نے لوگوں کو آپس میں جوڑنے کی جوجدوجہد شروع کی ہے وہ قابل تعریف ہے اور یہ ان کی سچائی اور ایمانداری کا نتیجہ ہے کہ کراچی کی عوام سمیت پاکستان بھر سے تمام قومیتیں پی ایس پی کے قافلے میں شامل ہورہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ مصطفی کمال غریب ،مظلوم اور محروم طبقے کے لوگوں کے لئے امید کی واحد کرن ہیں۔واضح رہے کہ تبت سینٹرکے جلسے میں تمام قو میتوں سے تعلق رکھنے والی عوام نے بڑی تعداد میں شر کت کر کے یہ ثابت کر دیا ہے کہ پاک سر زمین پارٹی ملک گیر جماعت ہے اور پاکستان کی عوام لسانیت اور تعصب کی سیاست کو مسترد کرتے ہیں۔

================================

29-Jan-2017

کراچی کی امانت میں کسی کو بھی خیانت کرنے نہیں دیں گے, چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال

کراچی ( ) چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہاکہ کراچی کی امانت میں کسی کو بھی خیانت کرنے نہیں دیں گے اور جو عناصرآج تک اس امانت میں خیانت کے مرتکب ہیں ان کے جعلی مینڈینٹ کو آج عوامی عدالت سے حاصل ہونے والے حمایت اورمینڈینٹ کے ساتھ ا ن کی نام نہاد حکمرانی کے بت کو پاش پاش کر دیں گے ، کراچی کے حال کو بگاڑنے والے اس ملک کے مستقبل کو نیست و نابوت کرنا چاہتے تھے، را کے ایجنٹ چاہتے ہیں کہ پاکستان کی فوج کراچی اور دیگر شہروں میں مصروف ہو اور سرحدوں سے اس کی توجہ ہٹائی جائے ،سٹی حکومت کو متنبہ کرتے ہیں کہ 30 د ن کے اند ر ہماری پیش کی جانی والی قرارداد پر عمل درآمد نہ کیا گیا تو لائحہ عمل کا اعلان کریں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے تبت سینٹر پرمنعقد ہونے والے کراچی کے سب سے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر صدرپی ایس پی انیس قائم خانی ، سمیت تمام مرکزی رہنما بھی موجود تھے ، سید مصطفی کمال نے کہا کہ ماؤں بہنوں ، بچوں بزرگوں، نوجوانوں، سول سوسائیٹی وکلاء کی ایک بہت بڑی تعدادبھی اس پنڈال میں موجود ہیں اس شہر میں بسنے والی تمام قومیتوں ، مسالک اور مذاہب کے لوگوں تم سب کو مبارک ہوں اس جلسے کومیڈیا کی آنکھ سے دیکھنا مشکل نظر آرہا ہے کراچی کے شہریوں کو ہمیشہ الطاف حسین یا کسی بھی نام کی ایم کیو ایم سے جوڑا جاتا رہا ہے لیکن اردو بولنے والوں کے مینڈینٹ کو را کے ہاتھوں سے بیچ دیا گیا اور اس ملک کے حکمران اپنے مفادات کی خاطر الطاف حسین کو استعمال کرتے رہے ، علم والوں ،شعور والوں پاکستان بنانے والوں اور محب وطن لوگوں نے ہر قسم کی ایم کیو ایم چاہے وہ پولیو زدہ ہو یکسر مسترد کردیا ہے ، آج مہاجر، بلوچ، پنجابی، پختون، سرائیکی ، ہزارہ وال، گلگتی ، اور دیگر قومیتوں نے ایک دوسرے کو گلے لگا لیا ہے ، اب ہم ایک قوم بن کر اس ملک و قوم کی خدمت اور ترقی کیلئے اپنا مشترکہ کردار ادا رکریں گے، عوامی عدالت نے آج جو فیصلہ لینا ہے اس میں واپس پلٹنے کا کوئی راستہ نہیں ہے اور اب عوامی عدالت مینٖڈینٹ دے چکی ہے اور حکمرانوں کی نیندیں اب حرام کردیں گے ، مصطفی کمال اللہ تعالی کی اسٹیبلشمنٹ کا بندہ ہے اور اسی کی مدد سے اپنی قوم کو را کے ایجنٹوں سے نہ صرف نجات دلائے گا بلکہ اس ملک و ملت کو اس کی حقیقی حیثیت دلوائے گا، یہ قوم اب برائی میں پڑے گی نہ ہی ظلم سہے گی اورنہ ہی مزید لوگ لاپتہ ہوں گے ، کراچی کے لوگوں نے اب ہتھیار نہیں اٹھانے اب قلم ، کمپیوٹر اور تہذیب ہمارا ہتھیار ہوگی ،کراچی کے ہر علاقے میں اب تمام قومیتیں ایک دوسرے کا استقبال کرتی ہیں ،اب الطاف حسین کی وجہ سے کوئی سر شرم سے نہیں جھکائے گا ،انہوں نے کہاکہ ہم سے غلطی ہوئی کہ ایک شخص کو اپنا مسیحا سمجھا، ماؤں نے اپنے بچے قربان کیے لیکن اف تک نہ کی، ہمارے ساتھ دھوکہ ہوگیا،اب مینڈینٹ تقسیم نہ ہونے کی باتیں کرنے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں وہ آج کا عوامی سمندی دیکھ کر اپنا تجزیہ تبدیل کریں، شہر میں بجلی، پانی ، گیس اور بلدیاتی نظام بری طرح سے ناکال ہوچکا ہے ، کراچی میں لگنے والے بجلی کے 3500میگا واٹ منصوبے میں سے کراچی کا حصہ دیا جائے،غذائی اجناس کی کمی، صحت کے مسائل اور گندا پانی پینے کی وجہ دے لاکھوں بچے قبرستان کی نظر ہوگئے ہیں ، سی پیک کا راگ الاپنے والوے اب بچوں اور ا ن کی ماؤں پر رحم کریں ، پاکستان کو ہمارا شکریہ ادا کرنا چاہئے کہ جو لوگو ں کو سدھارنا ان کا کام تھا پاک سرزمین پارٹی نے انجام دیا ہے ، مصطفی کمال کا کوئی فائدہ نہیں صرف معاشرے کے لوگوں کو سیدھی راہ پر لانا ہے ، میرے پیچھے لگ کراپنی تعلیم، کاروبار ، روزگاراور زندگیا ں خراب نہ کریں ، اپنے والدین کی خدمت کرو او ر میرے لیے بھی دعا کرواؤ، صدر انیس قائم خانی نے عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ کراچی والوں نے ثابت کردیا ہے تم وطن پرستوں کے ساتھ ہو محب وطن ہو اور را کے ایجنٹو ں کا لگایا ہوا دھبہ مصطفی کمال نے صاف کردیاہے جلسے کا سراتبت سینٹر سے شروع ہو گا تو دوسرا سرا نظر میں نہیں آ پائے گا ، میرا شہر تباہ بربا د کر کے رکھ دیا اس شہرکے صحافی حضرات آکراسٹیج پر آکر دیکھ لیں کہ قائد کے مزار ، گرومند اور تین ہٹی تک عوام موجود ہیں کراچی اور حیدرآباد اٹھ کھڑے ہو ئے ہیں یہ بحث کو ختم کردیا ہے کہ کراچی اور پاکستان کے عوام کس کے ساتھ ہیں، لا کھو ں کی تعداد میں اس مجمعے نے پاکستان ہی دنیا بھر میں یہ پیغا م دیدیا ہے یہ قافلہ اب رکنے والا نہیں ہے ، مصطفی کمال نے 4سال میں اس شہر کو دنیا کے خوبصورت ترین شہروں کی فہرست میں نمایاں مقام دلوایا تھا قوم نے موقع دیا تو ملک بھر کو ترقی کی نہج پر لے کر جائیں گے کہ دنیا ہمیں دیکھ کر رشک کرے گی ،ڈاکٹر صغیرنے کہا کہ کراچی پر قائم را کے ایجنٹوں کی حکمرانی کو ختم کردیا گیا ہے ، کراچی کے لوگوں نے ثابت کردیا ہے کہ جب کراچی جاگتا ہے تو پورا پاکستان جاگتا ہے ، اپنی عوام سے چھینے گئے حقوق کو اپنے عوام کو واپس دلوائیں گے، پاکستان کے مسائل کا حل سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کے پاس ہے ، روایتی سیاست کو آج کراچی نے خیر باد کہ دیا،بنیادی حقوق سے محروم رکھنے والوں کو پیغام مل گیا ہے انیس احمد ایڈوکیٹ ہم ہوتے تھے تو جلسہ گاہ بھرتی تھی، نشہ اترے گا تو سمجھ آئے گی کہ تمہارا دور ختم ہوگیا اور مظلوم قوم کی جان کو چھوڑ دو جن کے بچوں سے قبرستان بھر دیے ۔ ہزاروں لوگوں کو مروا دیا اور لاکھوں کو غلط راہ پر ڈال دیا، توبہ کرو اور اللہ سے معافی مانگو ، سندھ کو ترقی دینے کا جو نسخہ مصطفی کمال دیں گے اسے پر ہمارا ساتھ دیجئے گا ۔ااشفاق منگی نے کہا کہ یہ اجتماع سیاست چمکانے اور ذاتی مفادات حکمرانی ختم کرنے کیلئے منعقد کیا گیا ہے ، آج ہمیں روزگار، تفریح گاہیں اور معیاری ٹرانسپورٹ کا نظام چایئے ہمیں حکومت نہیں انصاف چائیے ۔

 

29-Jan-2017

قرار داد کراچی

پی ایس پی کے تبت سینیٹر میں ’’کراچی وہ امانت ہے جوپاکستان کی ضمانت ہے کراچی کاحال پاکستان کی مستقبل ‘‘ کے عنوان سے ہونے والے جلسہ عام میں پیش کردہ 7قرار دادوں کی پی ایس پی کے سیکریٹری جنر ل رضا ہارون نے ہاتھ اٹھوا کر شرکائے جلسہ سے منظوری لی
شرکائے جلسہ نے زبردست تائید کے ساتھ قرار دادوں کو منظور کیا
پی ایس پی تبت سینٹرمیں ہونے والے عظیم الشان جلسہ عام میں7اہم قرار دادیں پیش کی گئیں جنکی پی ایس پی کے رضا ہارون
نے ہاتھ اٹھوا کر شرکائے جلسہ سے منظوری لی۔ شرکائے جلسہ نے زبردست تائید کے ساتھ قرار دادوں کو منظور کیاجوترتیب واردرج ہیں۔ . 

29-Jan-2017

`Today, we bury the politics of Altaf Hussain`

KARACHI: Declaring that the people of Karachi have rejected every kind of the Muttahida Qaumi Movement, Pak Sarzameen Party chairman Mustaf a Kamal on Sunday gave a 30-day ultimatum to the rulers to solve the problems of Karachi or `be prepared to face consequences`.

Mr Kamal was addressing at a big public meeting organised by his party on M. A.

Jinnah Road. It was his party`s second show of strength after the Dec 23, 2016 event at the Hyderabad`s historic Pucca Qila.

A large number of people, including women and children, attended the PSP rally. A stage was made under the Tibet Centre pedestrian bridge and both tracks of M. A. Jinnah Road up to the 7th Day Hospital bus stop were filled with people, who were waving national flag and chanting slogans in favour of the former mayor of Karachi and his party.

In his speech, Mr Kamal, who returned to Karachi around 11 months ago and formed his own party, once again heaped scorn at London-based MQM founder Altaf Hussain, repeated his allegations that he had sold the mandate his party had to Indian intelligence agency RAW and to Pakistani rulers for his own gains.

`We made a mistake when we considered a man our messiah,` he said. `Today, I want to bury the politics of Altaf Hussain.

He said that some people were selling a narrative that the existence of the MQM even without its founder was necessary for the Urdu-speaking people. `Those still preserving the MQM are the biggest enemy of the Mohajir community.

He said that the same elements gave an impression that the Urdu-speaking people did not want to go with the people of other ethnicities. `Today, people of Karachi irrespective of their ethnic origins participated in this public meeting and prove that their mandate is only for the PSP.

He said that civilised, patriotic and educated people of Karachi rejected every MQM and `there is no turning back as thispeople`s court has given its verdict`.

Mr Kamal rejected the perception that he was being supported by the establishment.

He said that Karachi was in very bad shape as heaps of garbage could be seen everywhere and roads were in a dilapidated condition. `The whole city has become a big garbage dump, where system of water supply, electricity, gas and sanitation has collapsed.

Criticising the elected representatives of Karachi, he said that there was no one who could dare raise issues of the metropolis.

He said that power projects to produce 3,500 megawatts were being installed in Karachi. He demanded that 20 per cent of electricity from these projects should be given to Karachi.

He also demanded that the governmenttake back the Rs62 billion the K-Electric had collected from the people of Karachi by overbilling before allowing its owners to sell the power utility to a Chinese firm.

He gave 30 days to the federal, provincial and the Karachi Metropolitan Corporation to solve problems of Karachi after which his party would announce its future course of action.

PSP President Anis Kaimkhani, Dr Sagheer Ahmed and others also spoke.

Resolutions Participants of the public meeting unanimously adopted several resolutions read out by PSP secretary general Raza Haroon.

The party demanded that the local gov-ernment be given financial and administrative powers under Article 140-A of the Constitution.

The forthcoming population census should be held in a transparent and impartial manner and there should be no political interference.

The meeting also demanded clean drinking water, improved sanitation and sewerage system, public transport, parks, hospitals and educational institutions for the people of Karachi.

Through another resolution, the party demanded that cadet colleges be established in Karachi and Hyderabad on the pattern the armyopenedin Fata and Balochistan. Youths of Karachi be recruited in the army and a Balochistan-like package be given to them. 

29-Jan-2017

Pak Sarzameen Party (PSP) chairman Mustafa Kamal has called upon the government to give priority not to the multibillion-dollar economic corridor but serve the masses which will put the country on the path to progress.

 

“The CPEC [China Pakistan Economic Corridor] can prove futile if the masses are not provided with basic facilities and children remain malnourished and out of school,” Kamal, who founded the PSP in March 2016, told his supporters at a party rally in Karachi Sunday evening.

“While we continue to claim CPEC can be a game-changer and a revolution will come as huge projects are being inaugurated, people do not have food to eat and hospitals if they fall sick.”

‘What’s wrong with rehabilitating criminals?’, asks Kamal

These malnourished and deprived children will be running the future economic affairs of this country, the former Karachi mayor said, and asked, “how can these projects prove successful if we don’t have eligible people to take lead and contribute to the society”.

“These children are not dying of an epidemic but due to unavailability of clean drinking water and food. Today, 10 million children in this country are suffering from mental and physical disabilities.”

More than 0.3 million children are dying every year from hunger and disabilities, Kamal, who was once a part of the Muttahida Qaumi Movement, said, vowing his party will build hospitals and provide facilities to the masses.

‘My establishment is Allah’

Kamal said the PSP was accused of receiving support from the establishment or some power to come into being. “Yes I am the establishment’s man but my establishment is Allah and I enjoy his support,” he said adding, “no establishment or power on earth could have changed the hearts of millions attending this gathering right now.”

The former Karachi mayor also took to task arch-rival MQM, saying people of this city will not accept the party in any form.

Resolution

Towards the end of the party conference, PSP leader Raza Haroon presented resolutions for the city which were unanimously adopted by the party members and supporters.

The following demands were made:

1- Population census census sans any political influence

2- Complete eradication of corruption

3- Basic legal and constitutional rights for all people

4- Provision of water, sewerage system, transportation and building of basic infrastructure for all citizens

5- Education, health and employment for people on merit considering it is their basic right

6- Karachi’s progress is linked with Pakistan’s progress and, therefore, steps should be taken for its prosperity

29-Jan-2017

 

Mustafa Kamal rubbishes claims he is supported by the establishment

Pak Sarzameen Party (PSP) Chairman Mustafa Kamal on Sunday denied claims that he was a part of the establishment, saying he has no connections with it whatsoever.

“Yes, I am a man of the establishment and my establishment is God,” Kamal said while addressing a crowd on Karachi’s MA Jinnah Road.

The PSP chief lauded his supporters in the rally, saying people in Karachi have broken the stereotype that they only support those who speak Urdu, Muttahida Qaumi Movement (MQM) and its chief Altaf Hussain.

He added that there was a “narrative” that people of Karachi are “obsessed” with MQM.

Kamal asserted that people of Karachi are well-informed and support educated lawmakers.

“Today, you have shown that,” Kamal added, saying Karachiites do not follow MQM blindly.

The former Karachi mayor also told his supporters that by attending today’s rally, they gad proved that the people of Karachi do not want “isolation” as purported in the “narrative”.

“[They say] Urdu-speaking people do not want to mix with people from other ethnicities but today you proved them wrong,” Kamal said, adding that an amalgam of people of various ethnic backgrounds came together in the metropolis to attend the PSP rally.

28-Jan-2017

صدر پاک سرزمین پارٹی انیس احمد قائم خانی کا تبت سینٹر کا دورہ
جس مقصد کیلئے کارکنان محنت اور لگن کے ساتھ یہ کام کررہے ہیں وہ بہت بڑا کام ہے، صدر پی ایس پی
جلسہ مصطفی کمال کو وزیر اعظم بنانے کیلئے نہیں بلکہ غربت اور مسائل کی چکی میں پستی ہوئی عوام کو انکے جائز و حقیقی وسائل دلوانے کیلئے ہے، انیس قائم خانی

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے زیر اہتمام کل بروز اتوار ایک عظیم الشان جلسہ منعقد کیا جارہا ہے، اس سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کی مرکزی قیادت ہفتہ کے روز سے جلسہ گاہ میں موجود ہے اور جلسے کی تیاریوں میں مصروف عمل ہیں، ہفتے کی شب صدر پاک سرزمین پارٹی انیس قائم خانی نے مرکزی رہنماؤں کے ہمراہ جلسہ گاہ کا دورہ کیا اور انتظامات کا جائزہ لیا، اس موقع پر انیس قائم خانی نے کارکنان و جلسہ گاہ میں موجود لوگوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ جس مقصد کیلئے یہ کام کررہے ہیں وہ بہت بڑا کام ہے اور اس نیک مقصد کیلئے آپ کی محنت ہرگز رائیگاں نہیں جائے گی، انہوں نے کہا کہ اگر ایک ماں کے بچے کو صحیح راہ پر لے آئے تو اس بڑا کام نہیں ہے، ہماری قوم کے لوگ پڑھے لکھے، باشعور اور تہذیب یافتہ سمجھے جاتے تھے آج را کے ایجنٹ ہونے کا طعنہ ملتا ہے، انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی واحد جماعت ہے جس میں آنے کیلئے لوگ اپنی آسائشیں اور سیٹوں کی قربانی دیتے ہیں اور پھر ہماری جدوجہد میں ہمارا ساتھ دیتے ہیں، اس موقع پر انیس قائم خانی نے عوام الناس سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ یہ جلسہ مصطفی کمال کو وزیر اعظم بنانے کیلئے نہیں بلکہ غربت اور مسائل کی چکی میں پستی ہوئی عوام کو ان. کے جائز و حقیقی وسائل دلوانے کی. جدوجہد ہے، کراچی کے عوام اپنی زندگی کے صرف چند گھنٹے 29جنوری کے دن تبت سینٹر پر پاک سرزمین پارٹی کی جانب سے لگائی جانے والی عوامی عدالت کو دیں ہم عوامی مینڈیٹ کے ساتھ حکمرانوں کو اپنے مسائل کو حل کرنے کیلئے مجبور کریں گے اور ان سے اپنا حقوق لے کر رہیں گے

KARACHI: The Pak Sarzameen Party (PSP) staged a rally on Friday on M.A. Jinnah Road near Tibet Centre in a bid to mobilise the masses and show its strength ahead of the party’s public meeting scheduled to be held on Jan 29.

The rally, jointly led by PSP chairman Mustafa Kamal and president Anis Kaimkhani, started from Surjani Town in the evening and reached Tibet Centre via North Karachi, North Nazimabad, Ayesha Manzil, Liaquatabad, Teen Hatti and Gurumandir.

A number of PSP workers and supporters on motorbikes, cars, buses, etc, participated in the rally. PSP leaders, including Mr Kamal, were on a truck to lead the rally.

Party camps had been set up in different areas, where scores of PSP workers welcomed the rally.

The participants carried the national flag and chanted slogans in favour of the PSP and Mr Kamal, who also addressed workers at different spots.

He said the people of Karachi would give the verdict on Jan 29 that they were all united on the platform of the PSP.

He urged citizens to spare some time and attend the PSP’s public meeting so that he could challenge the rulers in order to resolve the people’s long-standing civic problems.

He said that no one would be allowed to take the city hostage again and the ‘struggle’ he launched on March 3, 2016 when he returned to Karachi and quit the Muttahida Qaumi Movement would continue till every citizen of the country got justice without any hindrance.

The PSP chairman said that the people of this city needed educational institutions and not the ‘Shuhada graveyard’.

Published in Dawn, January 28th, 2017

26-Jan-2017

قلیل مدت میں فیڈڑیشن کی جانب سے اتنا بڑا پرو گروام انعقاد کر کے ایک مثال قائم کر دی، مصطفی کمال چیئر مین پی ایس پی
ہم نے کراچی کے حال کو تبدیل کرنا ہے تاکہ پاکستان کا مستقبل روشن ہو,،
اسٹوڈنٹس فیڈریشن آف پاکستان زیر اہتمام پہلے کنونشن کمپری ہینسو کالج کورنگی میں منعقدہ تقریب سے خطاب

کراچی ( )چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہا یہ کنونیشن ایک کمرے میں ہونا تھا لیکن ایک ماہ کی قلیل مدت میں فیڈڑیشن کی جانب سے اتنابڑا پرو گروام انعقادکر کے ایک مثال قائم کر دی اورہم نے کراچی کے حال کو تبدیل کرنا ہے تاکہ پاکستان کا مستقبل روشن ہو۔ انہوں نے کہاکہ نوجوان تم نے اس جماعت اور ملک کی باگ ڈور سنبھالنی ہے تعلیم حاصل کرو اور اپنی توانائیاں علم حاصل کرنے میں خرچ کرو اورنئے لوگوں نے پاک سرزمین پارٹی کا چیئرمین، صدر اور سیکریٹری جنرل بننا ہے خوشی ہوگی جب ہم. دیکھیں گے نوجوان پاک سرزمین پارٹی کی باگ ڈور سنبھالیں گے اپنے خیالات کا اظہار انہوں نے اسٹوڈنٹس فیڈریشن آف پاکستان کے زیر اہتمام پہلے کنونشن کمپری ہینسو کالج کورنگی میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ گورنر نے اس شہر کو اندھیروں میں جھونک دیا تھا اور میرے پلاٹ یہ پلازہ ہوتے تو نکال کر دکھاتے جھوٹے تھے اس لیے گورنر شپ ہاتھ سے گئی انہوں نے کہاکہ پہلے کراچی میں قومیتوں کے بارڈر بنے ہوئے تھے مصطفی کمال نے ان تمام بارڈرز کو ختم کرنے کی جدوجہد کی تھی اور ختم کردیا آج مہاجر پختونوں، سندھیوں پنجابیوں اور دیگر قومیتوں سے بغل گیر ہورہے ہیں ایک دوسرے کی خوشی اور غم میں شامل حال ہیں انہوں نے کہاکہ اس شہر میں ٹاپ کرنے والوں کی فہرست میں ایس ایف پی کے طلباء کا نام دیکھنا چاہتا ہوں اگر علم نہیں ہوگا تو کچھ نہیں کر پاؤ انہوں نے کہاکہ یہ قدرت کا نظام ہے کہ کراچی کے بیٹے کو ملک بھر میں جہاں جاتا ہے بھرپور استقبال کیا جاتا ہے انہوں نے کہاکہ جو لوگ ہمارے مخالف ہیں انہیں اور زیادہ محبت دینی ہے بلند اخلاق کا مظاہرہ کرنا ہے اورکسی بھی انسان کو گن پوائنٹ پر نہیں محبت کے پیغام سے اپنی جانب متوجہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ29 جنوری کو تبت سینٹر پر عوامی عدالت میں آپ عوام کا مقدمہ پیش کیا جائے گا اورتمام لوگ اپنے اہل و عیال کے ہمراہ اپنے روشن مستقبل کیلئے ہمارے جلسے میں شرکت کریں۔اس مو قع پر صدر اسٹوڈنٹ فیڈریشن آف پاکستان توصیف اعجاز نے کہاکہ آج کراچی میں تعلیمی اداروں میں طلباء کو تعلیمی سرگرمیوں سے دور کر کے سیاسی کاموں میں لگا دیا ہے لہذا ہمیں طلباء کو تعلیمی سرگرمیوں کی جانب راغب کرنے کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایس ایف پی میں تمام قومیتوں سے تعلق رکھنے والے افراد موجود ہیں۔

 

25-Jan-2017

ڈاک لیبر ورکرز یونین کے چیئر مین نیاز احمد خان اورکیماڑی سکندریہ آباد کے پختون عمائدین کی پی ایس پی میں شمولیت کااعلان
ہماری سچائی اور ایمانداری کا نتیجہ ہے کہ پاکستان بھر سے تمام قومیتیں پی ایس پی کے قافلے میں شامل ہورہی ہیں، سید مصطفی کمال

کراچی ( )چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال سے ڈاک لیبر ورکرز یونین کے چیئر مین نیاز احمد خان اورکیماڑی سکندریہ آباد کے پختون عمائدین کی پاکستان ہاؤس میں ملاقات، پاک سرزمین پارٹی کے نظریہ سیاست کو قبول کرتے ہوئے پاک سر زمین پارٹی کے چیئر مین مصطفی کمال اورانیس قائم خانی پر بھر پور اعتماد کر اظہار کرتے ہوئے پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان کر دیا ،سید مصطفی کمال نے شمولیت اختیار کرنے والے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے لوگوں کو آپس میں جوڑنے کی جدوجہد شروع کی ہے اور ہماری سچائی اور ایمانداری کا نتیجہ ہے کہ آپ لوگوں سمیت پاکستان بھر سے تمام قومیتیں پی ایس پی کے قافلے میں شامل ہورہی ہیں ، انہوں نے کہا کہ آج تمام قومیتیں آپس میں ایک دوسرے کو گلے لگارہی ہیں اورنفرتوں کی جمی ہوئی برف پگھلی ہے یہی ہماری جدوجہد ہے اور اس میں ہمارے ساتھ قدرت کی مدد بھی شامل ہے ۔پختوں عمائدین کے وفد نے کہا کہ آپ کی باتوں میں سچائی ہے اور ہم تمام پختون آپ کے ساتھ ہیں ، ہماری کسی سے کوئی لڑائی نہیں تھی ، لیکن نفرتوں کے بیج کو بو کر ہمیں مہاجروں سے لڑوایا گیا لیکن آج ہمیں سید مصطفی کمال نے ایک کردیا ہے ، اس موقع پر رکن نیشنل کونسل سید حفیظ الدین ، ورکرز فیڈریشن کے صدر توقیر احمد،انفارمیشن سیکریٹر ی جمیل سداگارسمیت دیگر بھی موجود تھے .

 

25-Jan-2017

ظلم ظالموں کی وجہ سے نہیں بلکہ ظلم برداشت کرنے والوں کی وجہ سے ہوتا ہے
حیدرآباد کی عوام نے سیمی فائنل جیت لیا اب کراچی میں فائنل ہوگا۔سید مصطفی کمال
29 کو جلسے میں عوام بھرپور شرکت کریں اور آئندہ نسلوں کو بچائیں
عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریباب سرجانی ٹاؤن، رابعہ سٹی، گلستان جوہر میں خطاب
صدر پی ایس پی انیس قائم خانی کانمائش چورنگی اور سوسائٹی پر لگائے گئے استقبالیہ کیمپوں کا دورہ

کراچی ( )چیئر مین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہاہے کہ ظلم ظالموں کی وجہ سے نہیں بلکہ ظلم برداشت کرنے والوں کی وجہ سے ہوتا ہے، حقوق کی جدوجہد کیلئے حیدرآباد کی عوام نے سیمی فائنل جیت لیا اب کراچی میں فائنل ہوگا،10 ماہ میں پاک سرزمین پارٹی 2 افراد سے شروع ہو کر ملک گیر پارٹی بن چکی ہے اورسندھ، پنجاب، بلوچستان، خیبر پختون خواہ، گلگت بلتستان، کشمیرسمیت ملک بھر میں پی ایس پی کا تنظیمی ڈھانچہ موجود ہے.ہم نے آتے وقت اس کامیابی کا نہیں سوچا تھاہم نے کوئی کمال نہیں کیا بلکہ صرف سچ بولا ہے آج پورے ملک میں جہاں جاتے ہیں وہاں لوگ ہمیں ویلکم کررہے ہیں ، ان خیالات اظہار انہوں نے 29جنوری کو تبت سینٹر پر ہونے والے جلسے کے سلسلے میں جاری عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات جن میں سرجانی ٹاؤن، رابعہ سٹی، گلستان جوہر میں خطاب کر تے ہوئے کیا ۔ اس مو قع پی ایس پی صدر انیس قائم خانی ، سیکریٹری جنرل رضا ہارون،سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر احمد سمیت نیشنل کونسل اور آرگنائزنگ کمیٹی کے ذمہ داران وکارکنان بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ پاک سرزمین پارٹی واحد جماعت ہے جس کا حصہ بنے کے لئے لوگ اپنی آسائشوں اور اقتدار کو ٹھوکر مار کے آرہے ہیں.ہمارے پاس ماضی میں طاقت اور اقتدار تھا لیکن صرف عوام کی خاطر سب کچھ چھوڑ کر چلے گئے تھے ،جن. کے پاس شہر کا مینڈیٹ ہے انہوں نے ہی شہر کو تباہ کر دیاہے30سالوں سے ہم نے ایم کیو ایم کو فطرہ، زکوٰۃ، کھالیں سب دیں لیکن بدلے میں شہر کچرے کا ڈھیر بن گیا اور25 ہزار نوجوانوں کو شہداء قبرستان میں دفنا کے آج مہاجروں کو کچھ حاصل نہیں ہوا ۔انہوں نے کہاکہ ہم اس لئے واپس آئے کہ ایک شخص اس قوم کو اندھی کھائی میں دھکیل رہا تھا یہ قوم جو تہذیب یافتہ اور تعلیم یافتہ تھی وہ جاہل اور راء کا ایجنٹ کہلانے لگی. انہوں نے کہاکہ عزت ذلت رزق سب اللہ کے ہاتھ میں ہے یہ یقین رکھ کر سب کے سامنے سچ رکھ دیااور ہمارے روزانہ کی بنیاد پر 10 سے زائد جگہوں پر پی ایس پی کی تقریبات منعقد کی جا رہی ہیں انہوں نے کہاکہ2018ا تک کراچی کی عوام کو لاوارث نہیں چھوڑ سکتے ،اپنے بزرگوں کو چھٹی منزل سے خودکشی کرنے کے لیے نہیں چھوڑ سکتے ،ہمیں اپنے اسکولوں میں تعلیم چاہیے اپنے بچوں کو جاہل بنتا ہوا نہیں چھوڑ سکتے انہوں نے کہاکہ کراچی کے لوگوں میں اتنی طاقت ہے کہ کراچی سے کشمیر تک تمام مسائل حل کر سکتے ہیں انہوں نے کہاکہ شہری حکومت کے نمائندے جب عوام سے ووٹ مانگنے گئے تھے تو بڑے بڑے دعوے کئے تھے اختیارات ہوں یا نہ ہوں کام کرنے کا دعوٰی کیا تھا. اب اگر عوام کی خدمت نہیں کر سکتے تو عوام کے حقوق کے لیے فوری ااستعفیٰ دیں اور جو لوگ اختیارات نہ ہونے کا رونا رو رہے ہیں وہ بتائیں اختیارات گئے کیسے . انہو ں نے کہاکہ بات ماننے والے کو گلے لگاؤں گا اور جو نہیں مانے گا اسے اور زیادہ اچھی طرح گلے لگاؤں گا، کارکنان صرف پاکستانیت کو بنیاد بنا کر بلا تفریق سب کی خدمت کریں. انہوں نے کہاکہ سیاست میرا روزگار نہیں بلکہ آخرت میں کامیابی کے حصول کا ذریعہ ہے ، انہوں نے کہا کہ کراچی کے باشور عوام29 کو جلسے میں بھرپورتعداد میں شرکت کریں اور آئندہ آنے والی نسلوں کو بچائیں، تقریبات کے اختتام پر شاندار اتش بازی کا مظاہرہ کیا گیا ، بعدازاں صدر پی ایس پی انیس قائم خانی نے دیگر رہنماوں کے ہمراہ سوسائٹی، نمائش چورنگی اوردیگر علاقوں پر لگائے گئے استقبالیہ کیمپوں کا دورہ کیا اور استقبالیہ کیمپوں پر موجود عوام میں پمفلٹ تقسیم کئے ۔

24-Jan-2017

٢٩ جنوری کو عوام کے مینڈیٹ کے ساتھ حکمرانوں کے احتساب کا آغاز ہو گا، مصطفی کمال پی ایس پی چیئر مین

ہمارے نظریے کی سچائی اور ایمانداری ہے جس کی وجہ سے 2 لوگوں سے شروع ہونے والی پارٹی آج لاکھوں لوگوں کا قافلہ بن گیا ہے

29جنوری کو تبت سینٹر کا اجتماع پی ایس پی کا نہیں کراچی سمیت پورے ملک کی عوام کے حقوق حاصل کرنے کی عوامی عدالت ہے۔ ، رضا ہارون

کورنگی چکرا گوٹھ ، نارتھ ناظم آباد اور شادمان ٹاون میں عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات سے خطاب

کراچی ( ) 29 جنوری کو ہو نے والے جلسے کے حوالے سے پاک سر زمین پارٹی کے زیر اہتمام عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی تقریبات جاری اور اس سلسلے میں کورنگی چکرا گوٹھ ، نارتھ ناظم آباد اور شادمان ٹاون میں عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات سے خطاب کر تے ہوئے چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہاکہ یہ ہمارے نظریے کی سچائی اور ایمانداری ہے جس کی وجہ سے 2 لوگوں سے شروع ہونے والی پارٹی آج لاکھوں لوگوں کا قافلہ بن گیا ہے جس کا کراچی سمیت اندرون سندھ بلوچستان، پنجاب، خیبر پختون خواہ، گلگت بلتستان اور.کشمیر میں تنظیمی ڈھانچہ موجود ہے۔انہوں نے کہاکہ یہ سب کچھ سوچی سمجھی منصوبہ بندی یا کسی تقریر سے نہیں بلکہ اللہ تعالٰی کی مدد کے ساتھ ہورہا ہے ۔عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات میں خواتین ، بچے بزرگ اور نوجوانوں کی بہت بڑی تعداد موجود تھی اور جب مصطفی کمال اور انیس قائم خانی پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کرتے ہوئے پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں اور عوام کو جوش و خروش قابل دید تھا۔اس مو قع پر پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی، سیکریٹری جنرل رضاہارون،وائس چیئر مینز اشفاق منگی، افتخار رندھاوا اور رکن نیشنل کونسل میر عتیق تالپور ان کے ہمراہ موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے اقتدار اور آسائشوں کو چھوڑ کر اپنی جدوجہد کا آغاز کیا جو صرف اور صرف اپنی آخرت کے خوف کی وجہ سے ہے اور یہی ہمارے آنے کی وجہ ہے لیکن اب 2018تک عوام کو لاورث نہیں چھوڑ سکتے ، حکمرانوں کے احتساب ، عوام کے بنیادی مسائل کے حل اور بنیادی حقوق کے حصول کے لئے نکلے ہیں۔29جنوری کو عوام کے مینڈیٹ کے ساتھ حکمرانوں کے احتساب کا آغاز ہو گا۔اس مو قع پر پی ایس پی کے سیکریٹری جنرل رضاہارون نے کہاکہ حیدرآباد کے عوام نے جعلی حکمرانوں کے جعلی ووٹ بینک کو مسترد کر دیا ۔ انہوں نے کہاکہ ایک صاحب کہتے ہیں کہ مہاجروں کا ووٹ بینک تقسیم نہیں ہوا ہے اورہم بھی کہتے ہیں نہیں ہوا بلکہ صحیح جگہ آ گیا ہے انہوں نے کہاکہ اپنے حقوق کے حصول کیلئے ہمیں مصطفی کمال کا ساتھ دینا ہوگا ، اپنے گھروں سے باہر نہیں نکلیں گے تو کچھ نہیں سدھرے گا۔29جنوری کو تبت سینٹر کا اجتماع پی ایس پی کا نہیں کراچی سمیت پورے ملک کی عوام کے حقوق حاصل کرنے کی عوامی عدالت ہے۔

===================

پی ایس پی وائس چیئر مین وسیم آفتاب کے ماموں سید اختر حسین کے انتقال پر مصطفی کمال کا اظہار تعزیت

نمائندہ برائے الیکڑونک میڈیا سعد صدیقی کے دادا مقبول عالم صدیقی انتقال پر تعزیت کا اظہار

وسیم آفتاب اور سعد صدیقی سمیت مرحومین کے تمام سو گوار لواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار

کراچی ( )چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے پی ایس پی کے وائس چیئر مین وسیم آفتاب کے ماموں سید اختر حسین کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کاا ظہار کیا ہے۔ اپنے ایک تعزیتی بیان میں انہوں نے وسیم آفتاب سمیت مرحوم کے تمام سو گوار لواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت ، بلند درجات ،جنت الفردوس میں اعلی مقام اور سو گوار اہل خانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ۔
پی ایس پی چیئر مین سید مصطفی کمال نے پی ایس پی کے نمائندہ برائے الیکڑونک میڈیا سعد صدیقی کے دادا مقبول عالم صدیقی انتقال پر تعزیت کا اظہار کر تے ہوئے مرحوم کی مغفرت ، بلند درجات ،جنت الفردوس میں اعلی مقام اور سو گوار اہل خانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ۔

====================

مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کابلوچستان میں پر تپاک استقبال، لسبیلہ اور حب میں دفاتر کا افتتاح عوامی اجتماعات سے خطاب کیا۔

ملک میں اب لاشوں کی سیاست نہیں چلے گی اورقوم نے فیصلہ کر لیا ہے کہ امن اور محبت کے ساتھ مل جل کر رہنا ہے۔ مصطفی کمال

بلوچستان ( )چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہا کہ پاکستان بھر میں ہمیں کسی بھی انسان سے دشمنی نہیں کرنی اور ایک دوسرے کے خوشی اور غم بانٹنے ہیں،آج سے 10 ماہ قبل شروع ہونے والا قافلہ ملک کے کونے کونے میں پھیل گیا ہے اور آج بلوچستان کے عوام نے جس دلی محبت کا ثبوت دیا ہے وہ لائق تحسین ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگر اپنے بچوں کیلئے خوشیاں چاہئے تو دوسروں کی خوشی کیلئے کام کرنا پڑے گا اسی طرح اگر مہاجروں کو اپنے گھر میں خوشی چاہئے تو بلوچ، پنجابی پختون اور دیگر قومیتوں کا خیال رکھنا پڑے گا۔ان خیالات کااظہار انہوں نے بلوچستان کے علاقوں لسبیلہ اور حب میں دفاتر کے افتتاح کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پرسید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کا بلوچستان کی عوام نے پرتپاک استقبال کرتے ہوئے بلوچی پگھ( پگڑی) بھی پہنائی گئی۔مصطفی کمال نے اس موقع پر کہاکہ آپس میں لڑ کے مرنے سے اچھاہے کہ آپس میں جڑ کر رہا جائے، جس دن ہم سب ایک ہوگئے اس دن ہمارے مسائل خود حل ہو جائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ اللہ کا کرم اور احسان ہے کہ پی ایس پی کا پورے پاکستان کے ہر شہر میں تنظیمی ڈھانچہ موجود ہے، حیدرآباد کے پکا قلعہ میں 30 سالوں سے کوئی غیر مہاجر قدم نہیں رکھ سکتا تھا وہاں پی ایس پی نے سب کو گلے ملوایا اور قومی و ملی یکجہتی کا مظاہرہ کیا۔قوم نے اب لڑائی یا تفرقہ پھیلانے والوں کو مسترد کردیا ہے ،ملک میں اب لاشوں کی سیاست نہیں چلے گی اورقوم نے فیصلہ کر لیا ہے کہ امن اور محبت کے ساتھ مل جل کر رہنا ہے۔ انہوں نے کامیاب پرو گرام کے انعقاد پر پاک سرزمین پارٹی بلوچستان کے آرگنائزر عطاء اللہ کرد سمیت تمام عہدید اران و کارکنان کو مبارکباد پیش کی۔بعدا زاں چیئرمین پی ایس پی سید مصطفی کمال نے اورنگی ٹاؤن کا ہنگامی دورہ کیا جہاں پر موجود لوگوں سے ملاقات کی 29 جنوری کو تبت سینٹر کے جلسے میں شرکت کی دعوت دی اور پمفلٹ بھی تقسیم کئے۔ اس مو قع پراورنگی ٹاؤن کی عوام کی جانب سے جلسے میں بھرپور شرکت کی یقین دہانی کرائی گئی۔

========================

 

23-Jan-2017

جنوری کو عوام کے مینڈیٹ کے ساتھ حکمرانوں کے احتساب کا آغاز ہو گا، مصطفی کمال پی ایس پی چیئر مین
ہمارے نظریے کی سچائی اور ایمانداری ہے جس کی وجہ سے 2 لوگوں سے شروع ہونے والی پارٹی آج لاکھوں لوگوں کا قافلہ بن گیا ہے
29جنوری کو تبت سینٹر کا اجتماع پی ایس پی کا نہیں کراچی سمیت پورے ملک کی عوام کے حقوق حاصل کرنے کی عوامی عدالت ہے۔ ، رضا ہارون
کورنگی چکرا گوٹھ ، نارتھ ناظم آباد اور شادمان ٹاون میں عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات سے خطاب

کراچی ( ) 29 جنوری کو ہو نے والے جلسے کے حوالے سے پاک سر زمین پارٹی کے زیر اہتمام عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی تقریبات جاری اور اس سلسلے میں کورنگی چکرا گوٹھ ، نارتھ ناظم آباد اور شادمان ٹاون میں عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات سے خطاب کر تے ہوئے چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہاکہ یہ ہمارے نظریے کی سچائی اور ایمانداری ہے جس کی وجہ سے 2 لوگوں سے شروع ہونے والی پارٹی آج لاکھوں لوگوں کا قافلہ بن گیا ہے جس کا کراچی سمیت اندرون سندھ بلوچستان، پنجاب، خیبر پختون خواہ، گلگت بلتستان اور.کشمیر میں تنظیمی ڈھانچہ موجود ہے۔انہوں نے کہاکہ یہ سب کچھ سوچی سمجھی منصوبہ بندی یا کسی تقریر سے نہیں بلکہ اللہ تعالٰی کی مدد کے ساتھ ہورہا ہے ۔عوامی رابطہ مہم اور پرچم کشائی کی منعقدہ تقریبات میں خواتین ، بچے بزرگ اور نوجوانوں کی بہت بڑی تعداد موجود تھی اور جب مصطفی کمال اور انیس قائم خانی پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کرتے ہوئے پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں اور عوام کو جوش و خروش قابل دید تھا۔اس مو قع پر پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی، سیکریٹری جنرل رضاہارون،وائس چیئر مینز اشفاق منگی، افتخار رندھاوا اور رکن نیشنل کونسل میر عتیق تالپور ان کے ہمراہ موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے اقتدار اور آسائشوں کو چھوڑ کر اپنی جدوجہد کا آغاز کیا جو صرف اور صرف اپنی آخرت کے خوف کی وجہ سے ہے اور یہی ہمارے آنے کی وجہ ہے لیکن اب 2018تک عوام کو لاورث نہیں چھوڑ سکتے ، حکمرانوں کے احتساب ، عوام کے بنیادی مسائل کے حل اور بنیادی حقوق کے حصول کے لئے نکلے ہیں۔29جنوری کو عوام کے مینڈیٹ کے ساتھ حکمرانوں کے احتساب کا آغاز ہو گا۔اس مو قع پر پی ایس پی کے سیکریٹری جنرل رضاہارون نے کہاکہ حیدرآباد کے عوام نے جعلی حکمرانوں کے جعلی ووٹ بینک کو مسترد کر دیا ۔ انہوں نے کہاکہ ایک صاحب کہتے ہیں کہ مہاجروں کا ووٹ بینک تقسیم نہیں ہوا ہے اورہم بھی کہتے ہیں نہیں ہوا بلکہ صحیح جگہ آ گیا ہے انہوں نے کہاکہ اپنے حقوق کے حصول کیلئے ہمیں مصطفی کمال کا ساتھ دینا ہوگا ، اپنے گھروں سے باہر نہیں نکلیں گے تو کچھ نہیں سدھرے گا۔29جنوری کو تبت سینٹر کا اجتماع پی ایس پی کا نہیں کراچی سمیت پورے ملک کی عوام کے حقوق حاصل کرنے کی عوامی عدالت ہے۔

===================

پی ایس پی وائس چیئر مین وسیم آفتاب کے ماموں سید اختر حسین کے انتقال پر مصطفی کمال کا اظہار تعزیت
نمائندہ برائے الیکڑونک میڈیا سعد صدیقی کے دادا مقبول عالم صدیقی انتقال پر تعزیت کا اظہار
وسیم آفتاب اور سعد صدیقی سمیت مرحومین کے تمام سو گوار لواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار

کراچی ( )چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے پی ایس پی کے وائس چیئر مین وسیم آفتاب کے ماموں سید اختر حسین کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کاا ظہار کیا ہے۔ اپنے ایک تعزیتی بیان میں انہوں نے وسیم آفتاب سمیت مرحوم کے تمام سو گوار لواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت ، بلند درجات ،جنت الفردوس میں اعلی مقام اور سو گوار اہل خانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ۔
پی ایس پی چیئر مین سید مصطفی کمال نے پی ایس پی کے نمائندہ برائے الیکڑونک میڈیا سعد صدیقی کے دادا مقبول عالم صدیقی انتقال پر تعزیت کا اظہار کر تے ہوئے مرحوم کی مغفرت ، بلند درجات ،جنت الفردوس میں اعلی مقام اور سو گوار اہل خانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ۔

23-Jan-2017

  ٢٩ جنوری کو عوام ہمیں صرف4 گھنٹے دیں ہم عوام کے مسائل حل کر کے دکھائیں گے۔ مصطفی کمال
٢٠١٨ تک کا انتظار نہیں کر سکتے عوام کے لئے بنیادی سہولیات فی الفور چاہئے ۔چیئر مین پاک سر زمین پارٹی
٢٩جنوری کو عوام حکمرانوں کے احتساب کے لئے تبت سینٹر آئیں اور تاریخی تبدیلی کا حصہ بنتے ہوئے پاکستانی ہونے کا حق ادا کریں۔

کراچی( ) پاک سر زمین پارٹی کی جانب سے 29 جنوری کو منعقد جلسے کے لئے عوامی رابطہ مہم عروج پر جاری ۔ چیئر مین سید مصطفی کمال ، صدر انیس قائم خانی سمیت اراکین سینٹرل ایکزیکٹو کمیٹی اور نیشنل کونسل کی جانب سے شہر کے مختلف علاقوں کے دورے کئے جا رہے ہیں۔جن میں مختلف برادریوں ، تنظیموں، مارکیٹ یونینز اورعلماء اکرام سے ملاقاتیں کی گئیں اور پاک سر زمین پارٹی کے امن کے پیغام کو ان تک پہنچایا گیا ۔ عوام بالخصوص خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد نے مصطفی کمال، انیس قائم خانی سمیت دیگرپی ایس پی رہنماؤں کا شہر بھر میں اپنے علاقوں میں آمد پرپرجوش استقبال کرتے ہوئے پھولوں کے ہار پہنائے، پتیاں نچھاور کیں، رہنماؤں اور پاکستان کے حق میں نعرے لگائے۔ جن میں بالخصوص لیاری ، چکرا گوٹھ ، کورنگی، اورنگی ، رنچوڑلائن ، لیاقت آباد، گلستان جوہر، گلشن معمار،نارتھ کراچی، حیدری ، گزری ، لانڈھی ، سعیدآباد ، بلدیہ اور پاک کالونی وغیرہ کے علاقے شامل ہیں ۔ان موقعوں پررہنماؤں نے شہر بھر کے مختلف مقامات پر پرچم کشائی کی اور20سے زائد دفاتر کا افتتاح بھی کیا۔ مصطفی کمال نے عوام کو 29 جنوری کے جلسے کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ عوام ہمیں صرف4 گھنٹے دیں ہم عوام کے مسائل حل کر کے دکھائیں گے۔2018 تک کا انتظار نہیں کر سکتے عوام کے لئے بنیادی سہولیات فی الفور چاہئے ۔29 جنوری کو عوام حکمرانوں کے احتساب کے لئے تبت سینٹر آئیں اور تاریخی تبدیلی کا حصہ بنتے ہوئے پاکستانی ہونے کا حق ادا کریں۔

 

23-Jan-2017

پاک سر زمین پارٹی ورکرز فیڈریشن کے تحت واٹر بوڑ کراچی کے مرکزی دفتر میں پرچم کشائی کی تقریب کا انعقاد
مصطفی کمال اورانیس قائم خانی کی قیادت میں ورکرز فیڈریشن ملازمین کے حقوق کیلئے ان کی آواز بن چکی ہے۔سیف یار خان
29 جنوری کو حکمرانوں کے احتساب میں شامل ہوں اور تاریخی تبدیلی کا حصہ بنیں۔صدر پاکستان ورکرز فیڈریشن توقیر احمد

کراچی( )پاک سر زمین پارٹی ورکرز فیڈریشن کے تحت واٹر بوڑ کراچی کے مرکزی دفتر میں پرچم کشائی کی تقریب کا انعقاد کیا گیا ۔تقریب میں اراکین نیشن کونسل سیف یار خا ن، قمر نقوی، پاکستان ورکرز فیڈریشن کے صدر توقیر احمد ،فیڈریشن کے ذمہ داران و کارکنان سمیت واٹر بورڈ کے افسران اورملازمین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔اس موقع پر سیف یار خان نے تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چیئر مین مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی کی قیادت میں ورکرز فیڈریشن حقیقی معنوں میں ملازمین کے حقوق اور ان کے ساتھ ہونے والی نا انصافیوں پران کی آواز بن چکی ہے ،پی ایس پی ملازمین کے محکموں کے مسائل کے حل کے لئے اپنا بھر پور کردار اور ملازمین کے جائز مطالبات کی ہر سطح پہ ترجمانی کرے گی ،پی ایس پی نے اس بات کا تحیہ کیا ہے کہ پاکستان کو ہر شعبے میں مضبوط و مستحکم بنانے کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔اس موقع پر صدر توقیر احمد کا کہنا تھا کہ کارکنان پاکستان کے بہتر مستقبل کے لئے پاک سر زمین پارٹی کا ساتھ دیں اور مصطفی کمال کے ہاتھ مضبوط کریں ۔انہوں نے کہا کہ اپنے تمام مسائل کے حل کے لئے 29 جنوری کو حکمرانوں کے احتساب میں شامل ہوں اور تاریخی تبدیلی کا حصہ بنیں جس کے بعد پاک سر زمین پارٹی عوامی طاقت سے عوام کے حقوق کے حصول کی جدو جہد کرے گی اور حکمرانوں کو غفلت سے بیدار کر کے عوام کی فلاح کے کام کرنے پر مجبور کرے گی۔ اس موقع پر ملازمین 29جنوری کے جلسے کے دعوت نامے اور اشتہار بھی تقسیم کئے گئے ۔

 

23-Jan-2017

جامعہ کراچی کے وائس چانسلر ڈاکٹر قیصر اور اساتذہ سے پاک سر زمین پارٹی کے وفد کی ملاقات ۔
حکومت تعلیم کے شعبے اور اساتذہ کے مسائل کے حل پر خاص توجہ دے تاکہ وہ دیگر افکار سے
آزاد ہو کر مستقبل کے معماروں پر بھرپور توجہ دے سکیں۔ ڈاکٹر صغیر

کراچی( ) پاک سر زمین پارٹی کے سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر ، وائس چیئر مین وسیم آفتاب اور ممبر نیشنل کونسل آصف حسنین سمیت اسٹوڈنٹ فیڈریشن آف پاکستان کی سینٹرل کیبنیٹ کے صدر توصیف اعجاز وائس پریذیڈنٹ عادل ، سیکریٹری جنرل منیب التوحید نے جامعہ کراچی کا دورہ کیا۔ اس موقع پرانہوں نے وائس چانسلر جامعہ کراچی ڈاکٹر محمد قیصر اور مختلف شعبہ جات کے اساتذہ سے ملاقات کی اور ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا ۔اس موقع پر ڈاکٹر صغیر کا کہنا تھا کہ اساتذہ کا کردار ہمارے معاشرے میں انتہائی اہم ہے اور ملک کے موجودہ حالات میں حکومت وقت کو چاہئے کہ تعلیم کے شعبے اور اساتذہ کے مسائل کے حل پر خاص توجہ دے تاکہ وہ دیگر افکار سے آزاد ہو کر مستقبل کے معماروں پر بھرپور توجہ دے سکیں۔

22-Jan-2017

جامع بنوریہ عالمیہ کے مہتمم مفتی نعیم سے پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی کی ملاقات
مفتی نعیم نے اتحاد بین المسلمین اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے ساتھ ساتھ کراچی کے مخدوش حالات میں لوگوں کو آپس میں ملانے کیلئے گراں قدر خدمات انجام دیں ہیں۔ سید مصطفی کمال

کراچی( ) جامع بنوریہ عالمیہ کے مہتمم مفتی نعیم سے پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی کی ملاقات، کراچی کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، اس موقع پر وائس چیئرمین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوااور اراکین نیشنل کونسل بھی ان کے ہمراہ موجود تھے،اس موقع پر سید مصطفی کمال نے کہا کہ مفتی نعیم نے اتحاد بین المسلمین اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے ساتھ ساتھ کراچی کے مخدوش حالات میں لوگوں کو آپس میں ملانے کیلئے گراں قدر خدمات انجام دیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی بھی دلوں کو جوڑنے اور بھائی کو بھائی سے ملانے کی جدوجہد کر رہی ہے اور اس سلسلے میں ہمیں مفتی نعیم سمیت تمام علماء اکرام کی مدد اور دعائیں درکار ہیں،اس موقع پر مفتی نعیم نے کہا کہ مصطفی کمال نے نظامت کے دور میں ہمارے جامع کو پانی پہنچانے سمیت کئی اہم خدمات سرانجام دیں ہیں جس پر آج بھی ان کے شکر گزار ہیں اور جو کام انہوں نے نیک نیتی اور خشوع و خضوع کے ساتھ شروع کیا ہے اس میں ان کے ساتھ ہماری دعائیں شامل رہیں گی۔

22-Jan-2017

 

پاکستان کی عوام 29 جنوری کو حکمرانوں کے احتساب کے لئے تبت سینٹر آ رہی ہے۔سید مصطفی کمال
مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کے کراچی کے مختلف علاقوں اور مارکیٹوں کے دورے،گلستان جوہر اور گلشن معمار میں عوامی اجتماعات سے خطاب
ہمارے آنے کا مقصد سیٹوں کی سیاست کرنا ہرگز نہیں بلکہ عوام کی حالت زار کو بدلنا اور انہیں ان کے جائز حقوق دلوانا ہے۔
کسی بھی حکومت کو گرانے کیلئے نہیں نکلے بلکہ عوام کی بقا اور ان کے مستقبل کیلئے عملی قدم اٹھایا ہے
پاکستان کی عوام 29 جنوری کو حکمرانوں کے احتساب کے لئے تبت سینٹر آ رہی ہے

کراچی ( ) پاکستان کی عوام 29 جنوری کو حکمرانوں کے احتساب کے لئے تبت سینٹر آ رہی ہے۔ان خیالات کا اظہار سید مصطفی کمال نے انیس قائم خانی اور دیگر رہنماؤں کے ہمراہ گز شتہ شب کراچی کے مختلف علاقوں کے دورے کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر پی ایس پی رہنماؤں نے طارق روڈ اور بہادر آباد کی مارکیٹوں سمیت گلستان جوہر اور گلشن معمار میں عوامی اجتماعات سے خطاب اور جلسے کے حوالے سے عوام میں پمفلٹ بھی تقسیم کئے، اس موقع پر عوام کا جوش و خروش قابل دید تھا، پی ایس پی ایس کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا کہ ہمارے آنے کا مقصد سیٹوں کی سیاست کرنا ہرگز نہیں بلکہ عوام کی حالت زار کو بدلنا اور انہیں ان کے جائز حقوق دلوانا ہے بدقسمتی سے ہم نے اور عوام نے جنہیں اپنا سمجھا انہوں نے ہمیں دھوکہ دیا ، اپنے مفادات کو ترجیح دی اور اسی کیلئے کام کیا، عوام کے مسائل سے ان کا کوئی لینا دینا نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ تصویر کھنچوانے اورکسی بھی حکومت کو گرانے کیلئے نہیں نکلے بلکہ عوام کی بقا اور ان کے مستقبل کیلئے عملی قدم اٹھایا ہے، کراچی کے شہری کی آدھی تنخواہ پانی کے حصول کیلئے خرچ ہوتی ہے انہوں نے کہاکہ 29 جنوری کو تبت سینٹر کے جلسے میں شرکت کی دعوت دینے کیلئے آپ کے پاس آئے ہیں ہم اپنے لئے نہیں بلکہ عوام اورآئندہ آنے والی نسلوں کیلئے آئے ہیں اس لئے عوام ہمارا ساتھ دیں۔انہو ں نے کہا کہ ایم اے جناح روڈ پر عوامی عدالت میں عوام اتنی بڑی تعداد میں شرکت کریں گے کہ لوگ گنتی بھول جائیں گے،ہمیں2018 میں ووٹ لینے کیلئے لوگوں کو خواب نہیں دکھانے بلکہ آج سے عملی اقدامات کرنے ہیں ۔انہو ں نے کہا کہ حیدرآباد کی عوام نے جس بڑی تعداد میں جلسے میں شرکت کی وہ دنیا نے میڈیا کے ذریعے دیکھا، اب کراچی کے لوگ اتنی بڑی تعداد میں آئیں کہ جلسے کے دوسرے سرے کو کیمرے کی آنکھ تلاش نہ کر سکے، حکمران اگر ہماری بنیادی ضروریات پوری نہیں کرسکتے تو پھر انہیں حکمرانی کا کوئی حق نہیں وہ عوام کو مزید بیوقوف نہیں بنا سکیں گے اور حکمرانی نہیں کر سکیں گے ۔

======================

ٹوبہ ٹیک سنگھ میں ٹرین اور کارکے تصادم کے نتیجے میں6 افراد کے جاں بحق ہونے پرترجمان پاک سر زمین پارٹی کا دلی افسوس اور غم و غصے کا اظہار
حادثات کو روکنے کیلئے ریلوے کو جدید سہولیات سے آراستہ کرنے کا مطالبہ ، ترجمان پاک سر زمین پارٹی

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے ترجمان نے ٹوبہ ٹیک سنگھ میں ٹرین اور کارکے تصادم کے نتیجے میں6 افراد کے جاں بحق ہونے پر دلی افسوس اور غم و غصے کا اظہار کیا ہے۔اپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ ریلوے انتظامیہ کی غفلت کے با عث مسلسل حادثات رونما ہو رہے ہیں اور واقعات کو روکنے کے لئے کو ئی عملی اقدامات نہیں کئے جارہے جو کہ انتہا ئی افسوس اور تشویش کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ریلوے ایسے افسوس ناک حادثات کو روکنے کیلئے ادارے کو جدید سہولیات سے آراستہ کرے تاکہ قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع کو روکا جا سکے۔انہوں نے جاں بحق ہونے والے افراد کے سو گ وار لواحقین سے دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق افراد کی مغفرت اور دراجات کی بلندی کے لئے دعا کی۔

21-Jan-2017

جیل میں قیدیوں کو طبی سولت کی عدم دستیابی کے سبب اموات پر انتہائی تشویش کا اظہار۔رضا ہارون
میڈیکل سہولت کی فراہمی تمام قیدیوں کا بنیادی حق ہے اس بنیادی حق سے انکو محروم رکھنا بنیادی انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہے

کراچی (( )سیکریٹری جنرل پاک سرزمین پارٹی رضا ہارون نے کراچی کی جیلوں میں اسیر قیدیوں کی میڈیکل سہولت کی عدم دستیابی سے متعدد پے در پے اموات پرانتہائی تشویش کا اظہار کیا۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ میڈیکل سہولیات کی فراہمی تمام قیدیوں کا بنیادی حق ہے اس بنیادی حق سے انکو محروم رکھنا بنیادی انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہے۔رضا ہارون نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت سندھ فوری طور پہ جیل میں اسیر قیدیوں کی بہتر میڈیکل کی سہولت کوبروقت یقینی بنائے اوربیمار قیدیوں کی روزانہ کی بنیاد پر ڈاکٹر چیک کے ساتھ ساتھ ان کی دوائیاں کا بھی انتظام بہتر بنایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ پچھلے کے ماہ کے دوران متعدد قیدی میڈیکل سہولت کی عدم دستیابی کی وجہ موت کامنہ جاچکے ہیں جن میں اعجا ز احمد،ارشد قریشی ،محمد نعیم اختر ،ولید شیخ ، عامر شیخ شامل ہیں ۔

======================

سینٹرل ایگز یکٹو کمیٹی کے رکن ساجد رشید کے نانا اوربنون کے آر گنائرز احسان وزیر داداکے انتقال پروسیم آٖفتا ب کا اظہار تعزیت

پی ایس پی وائس چیئرمین وسیم آفتاب نے سینٹرل ایگز یکٹو کمیٹی کے رکن ساجد رشید کے نانا اوربنون کے آر گنائرز احسان وزیر داداکے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے.اپنے ایک بیان میں انہو ن نے مر حومین کے تمام سو گوار لواحقین سے دلی تعزیت و ہمدردی کا اظہار کر تے ہو ئے مرحومین کے بلند درجات اور لواحقین کے لے صبر کی دعا کی

===================

 

21-Jan-2017

جنوری تبت سینٹر جلسے کے حوالے سے پاک سرزمین پارٹی کی جانب سے شہر کراچی کے ہنگامی دورے جاری ہیں
سرزمین پارٹی واحد جماعت ہے جس کے رہنماؤں نے اپنی سیٹوں کو لات ماری ہے، سید مصطفی کمال پی ایس پی چیئر مین
29 جنوری کو ایم اے جناح روڑ پر عوامی عدالت لگے گی اپنے بچوں کے مستقبل اور بقا کیلئے اس عوامی عدالت میں میں بھر پور شرکت کریں

کراچی ( ) 29 جنوری تبت سینٹر جلسے کے حوالے سے پاک سرزمین پارٹی کی جانب سے شہر کراچی کے ہنگامی دورے جاری ہیں، اس سلسلے میں جمعہ کی شب چیئرمین پی ایس پی سید مصطفی کمال صدر انیس قائم خانی نے وائس چیئرمین افتخار رندھاوا، آصف میمن، میر عتیق تالپور اور عاصم اشتیاق کے ہمراہ شہر کراچی کے مختلف علاقوں کا تفصیلی دورہ کیا، بھٹی برادری کی جانب سے ایوب گوٹھ نیو کراچی، راجپوت اوڈ برادری کی جانب سے نارتھ ناظم آباد اور ناظم آباد کے علاقے جہانگیر آباد دفتر کا افتتاح اور پرچم کشائی کی تقریبات کے دوران پرہجوم عوامی اجتماعات سے خطاب بھی کیا، سید مصطفی کمال نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی واحد جماعت ہے جس کے رہنماؤں نے اپنی سیٹوں کو لات ماری ہے، اس ملک کی سیاست میں کوئی ایک یونین کونسل کی سیٹ نہیں چھوڑتا، سینیٹر بننے کیلئے کروڑوں روپے خرچ کرنے پڑتے ہیں مصطفی کمال 2018 تک سینیٹر تھا، ایسی جماعت کو چھوڑا جس کو چھوڑنا موت کو دعوت دینا ہے اللہ تعالی کی دی ہوئی ہدایت ہے جو مجھ سمیت تمام قیادت آج آپ کے درمیان موجود ہے، انہوں نے کہا کہ کراچی سے نکل کر کشمیر اور گلگت بلتستان اور پاکستان سے نکل کر دنیا بھر میں پی ایس پی کے دفاتر موجود ہیں، ہم روایتی سیاست دانوں کی طرح ووٹ لے کر جیبیں بھرنے کیلئے نہیں عوام کے مسائل حل کرنے کیلئے آئے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم قربانی کی کھالیں فطرہ زکٰوۃ اور کسی کی جان نہیں مانگ رہے، ہمارے آنے سے پہلے سب اچھا نہیں تھا، ایک شخص پوری محب وطن قوم کو بدتہذیب بنا رہاتھا اپنے کارکنان کو پکڑوا کر اپنے مفادات کی سیاست کر رہا تھا، ہم نے تو وہ کام کیا ہے جو حکومتیں کرتی ہیں بھٹکے ہوئے انسانوں کو صحیح اور غلط.کی پہچان سکھائی ہے قومیتوں کی آپس کی رنجشوں کو ختم کروایا یے اس کام پر تو پورے پاکستان کو ہمارا شکر گزار ہونا چاہیے، انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کے ہاتھ میں ہتھیار نہیں بلکہ قلم تھمانا ہے اور ان کا مستقبل روشن بنانا ہے تاکہ اپنے ماں باپ کی خدمت کریں اور ملک کی ترقی و خوشحالی میں اپنا کردار ادا کرسکیں، اس ملک کا مستقبل نوجوانوں کے ہاتھوں میں ہوگا اور یہ ملک دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں شامل ہوگا، ہمیں عوام نے موقع دیا تو کراچی کی طرح ملک کے کونے کونے میں ترقی ہوگی، انہوں نے کہا کہ ہمیں غدار کہنے والوں نے جس قائد کو اپنا باپ بنایابائیس اگست کے بعد اسی باپ کو تبدیل کردیا جو اپنا باپ بدل رہے ہیں اس سے منافقت کر رہے ہیں وہ عوام کی خدمت نہیں کرسکتے، انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ آج ہم آپ کے پاس ائے ہیں29 جنوری کو ایم اے جناح روڑ پر عوامی عدالت لگے گی آپ تمام لوگ تقریریں سننے کیلئے نہیں اپنے بچوں کے مستقبل اور بقا کیلئے اس عوامی عدالت میں میں بھر پور شرکت کریں

 

20-Jan-2017

کراچی میں مسلسل آپریشن کرنا مسائل کا حل نہیں ہے دوررس نتائج حاصل کرنے کیلئے معاشی و سیاسی پیکیج دیناپڑے گا،سید مصطفی کمال چیئر مین پی ایس پی
جلسے سے پہلے پورے شہر میں استقبالیہ کیمپ لگائے جائیں گے اور ایک بڑی ریلی نکالی جائے گی
29 جنوری کو پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا جلسہ ہوگا، سید مصطفی کمال
29جنوری کے حوالے سے پمفلٹ کی رونمائی کی گئی جس پر تحریرتھا ’’ کراچی وہ امانت ہے جو پاکستان کی ضمانت ہے ‘کراچی کا حال پاکستان کے مستقبل کی ضمانت ہے‘‘

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی میں مسلسل آپریشن کرنا مسائل کا حل نہیں ہے دوررس نتائج حاصل کرنے کیلئے معاشی و سیاسی پیکیج دیناپڑے گا،حکومت کو کراچی میں بھی بھٹکے ہوئے لوگوں کے لیے ریلیف پیکج دینا ہو گا، کراچی سے پاکستان کا مستقبل طے ہوگا،انہوں نے کہاکہ 30 سالوں سے اس شہر کئی آپریشن کیے گئے لیکن آج تک یہاں کے بچوں کو برائی سے نکالنے کیلئے کسی سیاسی مذہبی جماعت اور حکومت نے زخموں پر نہ مرحم رکھا ہے اور نہ زیادتیوں کا ازالہ کیا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارٹی کے مرکزی دفتر پاکستان ہاؤس ایک اہم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا میں پریس کانفرنس کرتے کیا، انہوں نے کہا کہ ہماری پارٹی میں آنے والوں کا سلسلہ رکا نہیں ہے اور آج بھی ایم کیو ایم مختلف پارٹیوں سے لوگوں نے ہمارے نظریہ سیاست کو قبول کیا ہے اور 210 سے زائد افراد نے پی ایس پی میں شمولیت اختیار کی ہے اور ہم نے مہاجروں کا مینڈیٹ تقسیم نہیں کیا جن کے پاس مینڈیٹ تھا ۔ انہوں نے کہاکہ ہم فرشتوں پر تبلیغ کرنے نہیں آئے عوام کو سدھارنا حکومت کا کام ہے کوئی اچھاکام کررہا ہے یا اچھابن رہا ہے تو کیا کرنا چاہیے جیلوں میں بند چودہ سو لوگوں کو مار دو گے کیا کسی کو جان سے مارنا اچھا عمل ہے کیا براء ختم ہوجائے گی ۔انہوں نے کہاکہ ہمارے ہاں سے کسی پر پتھر نہیں پھینکا گیا اور آج جو ہمارے پاس آنے والے کہیں استعمال ہو جائیں تو پھر کیا ہو گا ہمارے پاس لوگ ڈر کر نہیں بلکہ برائی کوچھوڑ کر اچھا کی طرف راغب ہو رہے ہیں بلوچستان میں اسلحہ لیکر چیک دینے جارہے ہیں تو کراچی والوں کے لیے کیوں نہیں ۔انہوں نے کہ کہ ہم پر مہاجروں کے ووٹ کو تقسیم کا الزام لگانے والے بتائیں کیا اس سے پہلے کیا مہاجروں کے حقوق دیئے جارہے تھے بچوں اور بچیوں کو ورغلانے کے علاوہ اور کیا سکھایا جارہا تھا۔انہوں نے کہاکہ کہ ہم یا ہمارا کوئی کارکن جرم کرے تو مجرم ہوگا آج عوام کے زخموں پر مرہم رکھنے اور پیکیج دینا ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ کنور نوید جمیل نے نوٹس بھیجا ہے جو ملا نہیں لیکن وہ یہ بتائیں اتنا پیسہ کہاں سے آیا انہوں نے کہاکہ پی ایس پی میں رہ کر اگر کوئی جرم کرے گا تو اس کا ذمہ دار میں ہوں خوداسکو قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حوالے کروں گا۔انہوں نے کہاکہ29 جنوری کا جلسہ پاکستان کی آئندہ آنے والی نسلوں کے مستقبل کے لئے منعقد کیا جا رہا ہے جوکہ29 جنوری کو پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا جلسہ ہوگا اور کراچی کے مستقبل کے لیے جلسے میں عوام بھر پور شرکت کا مظاہرہ کریں ۔اس موقع پر 29جنوری کے حوالے سے پمفلٹ کی رونمائی کی گئی جس پر تحریرتھا ’’ کراچی وہ امانت ہے جو پاکستان کی ضمانت ہے ‘کراچی کا حال پاکستان کے مستقبل کی ضمانت ہے‘‘یہ ہمارا جلسہ کا عنوان ہے ،کراچی کا حال ٹھیک کروں گے تو پاکستان کا مستقبل ٹھیک ہوگا کیونکہ پاکستان کا مستقبل کراچی سے وابستہ ہے۔انہوں نے کہاکہ ہم کراچی ہر علاقے میں جارہے ہیں ہر زبان اور ہر مسلک کے لوگ سے مل رہے ہیں تاکہ وہ ہمارے جلسے میں آئیں۔انہوں نے کہاکہ جلسے سے پہلے پورے شہر میں استقبالیہ کیمپ لگائے جائیں گے اور ایک بڑی ریلی نکالی جائے گی اور انتی بڑی ریلی کو دیکھا کر جو لوگ وینٹلٹر ہے ان کا وینٹلرہٹ جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ یہ بات صحیح ہے کہ ہمارے بہت سے اراکین اسمبلی کے استعفیٰ منظور نہیں ہورہے ہیں اس میں ہمارا کوئی قصور نہیں ہیں مجھے آج اسیپکر بناؤں تو میں ان کیاستعفیٰ منظور کر لوں گا ، دارصل کچھ لوگ لوبی کررہیں ان کے استعفی منطور نہ ہوں۔

19-Jan-2017

1200صاف شفاف مردم شماری کے نیتجہ میں ملک کے وسائل کی منصفانہ تقسیم سے ہی پاکستان مضبوط ہو سکتا ہے ، وسیم آفتاب وائس چیئر مین پی ایس پی
مردم شماری کا قومی فریضہ انجام دینے ہے تمام ا فراد تمام سیاسی وابستگی سے بالاتر ہو پاکستان اور پاکستانیت کو مضبوط کرنے کیلئے کام کریں گے
صاف شفاف ایماندارانہ منصفانہ مردم شماری جس کے نتیجے ملک میں بسنے والی تمام لسانی اکائیوں کا ملک پر اعتماد بڑہے گا اس سے ریاست مضبوط ہو گی نا کہ کمزور
کراچی کی حال صحیح ہو گا ملک کا مستقبل صحیح ہوگا 29جنوری کا جلسہ یہ پیغام ہوگا کہ کراچی کے مسائل کے حل کیلئے ان کے ساتھ کھڑے ہونگے، آصف حسنین،رکن نیشنل کونسل
وائس چیئرمین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوا اراکین نیشنل کونسل آصف حسنین، محمد دلاور، میر عتیق تالپورکی پر یس کلب میں پر یس کا نفر نس

کراچی ( )پاک سر زمین پارٹی کے وائس چیئر مین وسیم آفتاب نے کہا کہ مردم شماری کسی ملک میں خالصتا انتظامیہ امور کا مسائل مردم شماری کسی ملک میں اس لئے کی جاتی ہے اس ملک کی ٹوٹل آبادی کی کتنی ہے لیکن بد قسمتی ہمارے ملک میں مردم شماری کوانتظامیہ امور سے ہٹا کر ایک سیاسی ایشو بنا دیا گیا ہے جب بھی مردم شماری اس ملک ہو تی ہے شاید ایساتاثرددیا جانے کی کوشش کی جاتی ہے کہ اگر کوئی یہ اس کے صحیح نتائج آکر گیا تو ریاست کو خطرہ ہو جائے گا۔ جو لو گ بھی یا تاثر پیدا کررہے ہیں اوردراصل اس پاکستان کے ظلم کررہے ہیں ۔ ان خیالات اظہا ر انہوں نے کراچی پریس کلب میں وائس چیئرمین افتخار رندھاوا اراکین نیشنل کونسل آصف حسنین، محمد دلاوراور میر عتیق تالپور کے ہمراہ پر یس کا نفر س کرتے ہوئے کیا۔ ۔ انہوں نے کہاکہ پاک سرزمین پارٹی کے منشور ہے کا حصہ ہے کہ ایک غیر جانبدارانہ صاف شفاف مردم شماری کے نیتجہ کے ملک کے وسائل کی منصفانہ تقسیم نتیجہ میں ہی پاکستان مضبوط ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ صاف شفاف ایماندارانہ منصفانہ مردم شماری جس کے نتیجے میں ملک کہ ہر فرد کو ہر لسانی اکائی کو اسکا جائز حق ملے گا کسی بھی فرد یا کسی بھی لسانی اکائی کے ساتھ ناانصافی نہیں ہوگی اس عمل سے ملک میں بسنے والی تمام لسانی اکائیوں کا ملک پر اعتماد بڑہے گا اس سے ریاست مضبوط ہو گی نا کہ کمزور۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اندورنی بیرورنی سازشیوں کا شکار ہے اس میں سب سے بڑی سازش ملک کے لوگوں کا اپنے ملک سے اعتماد کمزور کرنا ہے لہذا مردم شماری کا عمل انتہائی صاف وشفاف ہوکسی مہاجر،سندھی،پنجابی،پٹھان،بلوچ سمیت تمام لسانی اکائیوں کو یہ احساس نہیں ہونا چائیے کہ مردم شماری کے ذریعے کسی کو بھی ذیادتی کا نشانہ بنایا جا ئے گا ا لہذا نادرا سمیت وہ تمام ادارے جو مردم شماری کے کام کو سرانجام دیں گے ان تمام اداروں کو تمام لوگوں کو مطمئن کرنا اور کسی کے ساتھ ناانصافی نا ہو اس بات کو یقینی بنانا ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ادارہ شماریات،نادرا سمیت دیگر ادارے جو مردم شماری کا کام سر انجام دیں گے انکو اپنے کام کو ہر حال میں غیر جانبدارنہ اور انصاف پر مبنی بنانا ہوگا وہ ایک انتہائی اہم قومی فریضہ سرانجام دے رہے ہیں جس کے منصفانہ اور غیر جانبدارانہ اعداد شمار کے نیتجہ میں اس ملک کے عام آدمی کا اس ملک سے راشتہ مضبوط ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ ماضی بھی کی جانے والی مردم شماری پر پاکستان کے لوگوں کو اعتراضات ہیں ان اعتراضات کو دورکرنے یہ ایک بہترین کا موقع ہے مردم شماری کا قومی فریضہ انجام دینے ہے تمام ا فراد تمام سیاسی وابستگی سے بالاتر ہو پاکستان اور پاکستانیت کو مضبوط کرنے کیلئے کام کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ مردم شماری صرف صو بائی، قومی اورسینیٹ کی سیٹیں بڑھنے کاکام نہیں بلکہ ایک اہم جز ،جس کے نتیجے میں نئی اسکول، نیورسیٹیاں،اسپتال بنانے اور ملک کے وسائل میں منصفانہ تقسیم کے ذریعے ہی ممکن ہے ۔انہوں نے کہاکہ وسائل کا استعمال اور بیس کروڑ عوام کو اس کا صحیح حق مردم شماری سے مشروط ہے ، اس ملک میں رہنے والی کسی بھی اکائی کو اس کے حق سے محروم نہ کیا جائے اور اس کے تحفظات دور کیے جائیں ادارہ شماریات کی رہنمائی کرنے والے تمام اداروں سے امید رکھتے ہیں کہ وہ اس کام کو بخیروخوبی انجام دینگے تاکہ کسی کے ساتھ بھی نا انصافی نہ ہو اورمعاشرہ عدل وانصاف پر قائم رہ سکے ۔اس موقع پر پاک سرزمین پارٹی نیشنل کونسل کے رکن آصف حسنین نے کہاکہ جو ٹولہ آج اختیارات کا رونا رو رہا ہے وہ ہی شہر کی اس بد ترین حالت کے ذمہ دار ہیں، عرصہ دراز سے اقتدار میں رہنے والوں نے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے اضافہ کیا ہے سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، اسٹریٹ کرائمز میں اضافہ ہورہا ہے اور اقتدار سے چمٹ کر اختیارات کا رونا رونے والے مگر مچھ کے انسو بہا رہے ہیں ۔خزانے میں موجود کروڑوں روپے ہونے کے باوجود مسائل کیوں حل نہ کئے گئے ۔ انہوں نے کہاکہ ہزاروں ملازمین ہونے کے باوجود مسائل حل نہ کرنے والوں کو چاہئے کہ وہ عہدوں سے مستعفی ہوکر اقتدار سے باہر آجائیں کیونکہ کراچی کے عوام لاوارث نہیں ہے پاک سر زمین پارٹی عوام کے ساتھ کھڑی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اختیارات کا رونا رونے والے وزیر اعلی کے پاس اپنے استعفوں کے ہمراہ جائیں اگر اختیارات نہیں ملتے تو استعفی دے کر عوام کے ساتھ کھڑے ہوجائیں اگر یہ نہیں کرسکتے تو عوام کے سامنے مگرمچھ کے آنسو بہانا چھوڑ دیں انہوں نے کہاکہ کراچی کی حال صحیح ہو گا ملک کا مستقبل صحیح ہوگا 29جنوری کا جلسہ یہ پیغام ہوگا کہ کراچی کے مسائل کے حل کیلئے ان کے ساتھ کھڑے ہونگے ۔

19-Jan-2017

1200سے زائد مستقل ملازمین کو دوبارہ عارضی حیثیت میں کرنے پر سید مصطفی کمال کا اظہارِ تشویش

کراچی ( ) چیئرمین پاک سزرمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کراچی پورٹ ٹرسٹ کے 1200سے زائد مستقل ملازمین کو دوبارہ عارضی حیثیت میں کرنے پر اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ کے پی ٹی کے 1200سے زائد ملازمین کو انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بنایا جارہا ہے جو کہ سراسر ناانصافی ہے، 5سال مستقبل بنیادوں پر کام کرنے والے ملازمین کو شوکاز نوٹس جاری کئے گئے ہیں جبکہ ان کے کیسز ہائی کورٹ میں پہلے ہی زیر سماعت ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ عدالت کے فیصلے سے قبل ملازمین کو جھوٹے شوکاز نوٹس جاری کرکے ذہنی اذیت اور کوفت میں مبتلا کیا جارہا ہے جو کہ انکے خاندانوں کا بھی معاشی قتل کرنے کے مترادف ہے۔انہوں نے چیئرمین کے پی ٹی اور متعلقہ حکام سے اپیل کی ہے کہ وہ چارٹر آف ڈیمانڈ میں شوکاز نوٹس ملنے والے مزدورں کی ڈیمانڈ بھی شامل کریں اور عدالت کے فیصلے سے قبل اپنے مزدور بھائیوں کو جنہوں نے ادارے کی خدمت کیلئے اپنی زندگیاں صرف کی ہیں ان کے ساتھ ہمدردانہ رویہ رکھتے ہوئے ان کا ساتھ دینا چاہیے اور جو افراد ادارے کے لوگوں کے ساتھ متعصبانہ رویہ رکھ رہے ہیں انہیں اپنے رویے پر نظر ثانی کرنا چاہئے۔

 

18-Jan-2017

انیس قائم خانی نے محمود آباد، لائنز ایریا ،بزرٹہ لائین، سوسائٹی، گلستان جوہر اور اسکیم 33 کا تفصیلی دورہ کرتے ہوئے یکے بعد دیگر6دفاتر کا افتتاح کیا۔
حکمرانوں کو کراچی سمیت پورے پاکستان کے ہر علاقے کی عوام کو ان کے جائز حقوق دینے کیلئے مجبور کردیں گے، انیس قائم خانی
29جنوری کو ہونے والے جلسے میں زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کریں، مصطفی کمال کے ہاتھ مضبوط کر کے ملک کی تعمیر میں اپنا حصہ ڈالیں۔

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے زیر اہتمام 29 جنوری تبت سینٹرکے مقام پر ہونے والے جلسے کے حوالے سے شہر قائد میں بھر پور عوامی رابطہ مہم جاری ہے، اس سلسلے میں صدر پی ایس پی انیس قائم خانی نے کراچی کے مختلف علاقوں محمود آباد، لائنز ایریا بزرٹہ لائین، سوسائٹی، گلستان جوہر اور اسکیم 33 کا تفصیلی دورہ کرتے ہوئے یکے بعد دیگر6دفاتر کا افتتاح کیا نیز بیک وقت پی ایس پی کے وائس چیر مین وسیم افتاب اور سی ای سی رکن سلیم تاجک نے بھی اورنگی ٹاؤن کی بنگلہ مارکیٹ سمیت مختلف علاقوں کا دور ہ کیااور 29جنوری کو ہونے والے جلسہ کی دعوت دی۔ اس موقع پران کے ہمراہ وائس چیئرمین افتخار رندھاوا، نیشنل کونسل کے ممبران آسیہ اسحاق،ڈاکٹر یاسر، آفاق جمال، میر عتیق تالپور اور پی او سی ممبران بھی موجودتھے، پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی نے ڈسٹرکٹ ورکرز اجلاس اور علاقائی لوگوں سے ملاقاتو ں میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مصطفی کمال کے نظرئیے پہ متفق ہوتے ہوئے عوام کا حال اور مستقبل بدلنے کی جدوجہد کا آغاز کیا ہے، انہوں نے کہا کہ ابھی ہمارے پاس اختیارات اور وسائل نہیں ہیں لیکن ہم عوامی طاقت سے حکمرانوں کو کراچی سمیت پورے پاکستان کے ہر علاقے کی عوام کو ان کے جائز حقوق دینے کیلئے مجبور کردیں گے، صاف پانی کی فراہمی، صحت ، تعلیم کی معیاری سہولیات، بلدیاتی مسائل اور سفری سہولیات کا حل ہمیں آج ہی چاہئے۔ حکمران ووٹ لینے کیلئے تو ضرور عوام کے پاس آتے ہیں لیکن منتخب ہونے کے بعد انہیں ڈھونڈنا پڑتا ہے۔ عوام ہمیں موقع دیں تو مصطفی کمال کراچی کی طرح پورے ملک کی خدمت کرکے دکھائیں گے، انہوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ 29جنوری کو ہونے والے جلسے میں زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کریں اور مصطفی کمال کے ہاتھ مضبوط کر کے ملک کی تعمیر میں اپنا حصہ ڈالیں۔

 

18-Jan-2017

کراچی شہر میں اسٹریٹ کرائم کی بڑھتی ہو ئی وارداتو ں پر سینئر وائس چیئر مین پاک سر زمین پارٹی انیس احمد خان ایڈوکیٹ کا اظہار تشویش
اسٹریٹ کرائم کی بڑھتی ہوئی واردتواں کا نو ٹس لیاجائے اور تاجروں، دوکاندروں اور شہر یوں کا جرائم پیشہ افراد سے تحفظ یقینی بنایا جائے

کراچی ( ) پاک سر زمین پار ٹی کے سینئر وائس چیئر مین انیس احمد خان ایڈوکیٹ نے کراچی میں اسٹریٹ کرائم کی بڑھتی ہو ئی وارداتو ں پر گہر ی تشوش کا اظہار کیا ہے، ایک بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ شہر کراچی کی مارکیٹوں کے تالے توڑنے اور دن دہاڑے دکانداروں اور شہریوں کو لوٹنے کی وارداتوں میں حالیہ اضافہ انتہائی پریشان کن ہے، انہوں نے کہا کہ ملک کے سب سے بڑے شہر اور معاشی حب میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں کا اچانک بڑھ جانا کراچی کے شہریوں کے لئے باعث تشویش ہے۔ حکومت سند ھ کو اسٹرئٹ کرائم کی وارداتوں کی روک تھام کے لے موثر اور عملی اقداما ت اٹھانے کی ضرورت ہے۔ .انہوں نے وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ سمیت وزیر داخلہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اسٹریٹ کرائم کی بڑھتی ہوئی واردتواں کا نو ٹس لیاجائے اور تاجروں، دوکاندروں اور شہر یوں کا جرائم پیشہ افراد سے تحفظ یقینی بنایا جائے اور جرائم پیشہ افراد کو گرفتار کر کے قانون کے مطابق سزا دی جائے۔

17-Jan-2017

2018 میں پاکستان کی سب سے بڑی سیاسی قوت بن کر ابھریں گے، انیس قائم خانی
پی ایس پی پاکستان کو حقیقی معنوں میں قائد اعظم کا پاکستان بنائے گی،
29 جنوری کو عوامی عدالت میں شرکت کیلئے اپنے گھروں سے نکلیں اور قومی و ملی یکجہتی کے مظاہرہ کریں، انیس قائم خانی کی اپیل
جنوری تبت سینٹر جلسے کے حوالے عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں کورنگی، لانڈھی، ملیر اور شاہ فیصل سے شرکا ء خطاب
پی ایس پی نیشنل کونسل کے ارکان اور ورکرز فیڈریشن کے صدر ویگر کے ہمراہ کراچی کے عباسی شہید اسپتال. کراچی انسیٹوٹ ہار ٹ ڈیز یز
کے ایڈ منسٹر اور ولیکا اسپتال کا دورہ کیا

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے صدر انیس قائم خانی نے گزشتہ روز کراچی کے مختلف علاقوں میں منعقدہ جنرل ورکرز اجلاس اور 29 جنوری تبت سینٹر جلسے کے حوالے عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں کورنگی، لانڈھی، ملیر اور شاہ فیصل کا تفصیلی دورہ کیا، اس موقع پر انیس قائم خانی نے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنی قوم کی ماؤں، بہنوں، بیٹیوں اور نوجوان بچوں کو حقائق سے آگاہ کرنے کیلئے آئے، وقت کے اس فرعون کے خلاف آواز بلند کی جس نے قوم کو اندھیرے میں رکھ کر اپنے ذاتی مفادات کو سیاست کا نام دیا عوام نے ہمارا ساتھ دیا اور دو لوگوں کی لگائی ہوئی آواز پر لاکھوں لوگ آج ہمارے قافلے میں شامل ہوچکے، کراچی سے کشمیر تک پی ایس پی کے دفاتر قائم ہوچکے ہیں اور باقاعدہ تنظیمی کام جاری ہے، 2018 میں پاکستان کی سب سے بڑی سیاسی قوت بن کر ابھریں گے، انہوں نے کہا کہ بدترین حالات میں عوام کو مزید تنہا نہیں چھوڑ سکتے تھے، 29 جنوری کو تبت سینٹر پر عوامی عدالت لگے گی گے اور عوام کو اپنے اور آئندہ آنے والی نسلوں کے مستقبل کی بقا کیلئے نکلنا ہوگا، 30 سال کی مسلسل جدوجہد کے بعد کیا حاصل ہوا؟ کتنی نئی بستیاں آباد ہوئیں؟ قبرستانوں کا آباد کیا گیا اور اپنے مفادات کی بھینٹ چڑھایا گیا،کراچی اور حیدرآباد سمیت سندھ کے لوگ لاوارث نہیں ہیں، اب ان. کے حقیقی وارث اپنے عوان. کے درمیان ہیں، عوام. نے اپنے اعتماد کا اظہار کیا اور ہمیں موقع ملا تو کراچی سمیت پورے ملک کو دنیا کے بہترین ممالک کی فہرست میں لاکھڑا کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، جس شہر کو مصطفی کمال نے اپنے دن و رات ایک کرکے بنایا تھا اسے بھی ایک سازش کے تحت تباہ کردیا، کیا یہ تشویش ناک بات نہیں ہے کہ آج کراچی دنیا کے ان خطرناک شہروں کی فہرست میں شامل.ہو گیا جہاں زندگی گزارنا نا ممکن ہے، وہ میئر اور ڈپٹی میئر فوٹو سیشن کروا کر کہاں غائب ہوجاتے ہیں جب عوام سڑکوں پر پریشان حال کھڑی نظر آتی ہے، انہوں نے کہا کہ ہم نے لوگوں کو ایک کرنے اور محبت کے پیغام کو عام. کرنے کی جو جدوجہد شروع کی اس کا پھل لوگوں نے کٹی پہاڑی اور کراچی کے دیگر علاقوں میں اپنی آنکھوں سے دیکھا، پی ایس پی پاکستان کو حقیقی معنوں میں قائد اعظم کا پاکستان بنائے گی جہاں زبان، رنگ و نسل اور مذہب کی بنیاد پر لوگ ایک دوسرے کے گلے نہ ماریں اور نظریات کی بنیاد پر دشمنیاں نا کی جائیں، انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ 29 جنوری کو عوامی عدالت میں شرکت کیلئے اپنے گھروں سے نکلیں اور قومی و ملی یکجہتی کے مظاہرہ کریں۔
اور سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کے 29جنوری کو ہونے والے جلسے کے حوالے سیکراچی کی عوام زبرست جوش خروش پایا جارہا ہے او اس سلسلے پی ایس پی نیشنل کونسل کے ارکان آصف حسینین ، سیف یار خان اور حفیظ الدین اور ورکرز فیڈریشن کے صدر تو قیر احمد ویگر کے ہمراہ کراچی کے عباسی شہید اسپتال. کراچی انسیٹوٹ ہار ٹ ڈیز یزکے ایڈ منسٹر اور ولیکا اسپتال کا دورہ کیا اور ایم ایس ندیم راجپوت اور نواز گو ٹھی سے بھی ملاقات کی.ملاقات میں پی ایس پ کے چیر مین سید مصطفی کمال کی جانب سے نیک خواشات کا اظہار کیا اور 29جنوری کو ہونے والے جلسے کی دعوت دی.اس موقع پر ورکرز فیڈریشن کے جنرل سیکر یٹر ی عدنان سردار دیگر زمہ داران بھی موجود تھے.

 

17-Jan-2017

جنوری کو کراچی کی ہر ماں،بہن،بیٹی تبت سینٹر اکر پاکستان کے استحکام کی جدوجہد میں میرا ساتھ دیں گی۔ مصطفی کمال
پاکستان کی تر قی اس وقت تک مکمل نہیں ہوگی جب تک اس میں خواتین کا کردار شامل نہیں ہوگا .مصطفی کمال
پی ایس پی پاکستان کی خواتین کو نا صرف قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے بلکہ ان پہ فخر کرتی ہے، مصطفی کمال
ہر دور میں قوموں کی تاریخ میں خواتین نے اس مقصد کے حصول کے لےُ160 تاریخ ساز کردار ادا کیا ہے.مصطفی کمال
پاک سر زمین پارٹی شمیولیت اختیار کر نے والی خواتین سے خطاب

کراچی ( )پاک سر زمین پارٹی کے چیرمین سید مصطفیٰ160 کمال نے کہاکہ پاکستان کی تر قی اس وقت تک مکمل نہیں ہوگی جب تک اس میں خواتین کا کردار شامل نہیں ہوگا۔پاکستان کی نصفہ آبادی خواتین پر مشتمل ہے جو بے پناہ صلاحیت سے مالا مال ہیں ہر شعبہ زندگی میں کارہانمایہ سرانجام دے رہی ہیں آج پاکستان کی خواتین فائٹر جیٹ جہاز اڑا نے سے لیکر بڑے فعال کاروبار کو کامیابی سے چلا رہی ہے ان خیالات اظہار پاک سر زمین پارٹی شمیولیت اختیار کر نے والی خواتین سے خطاب کرتے ہوئے کیا.انہو ن نے کہا کہ ہر دور میں قوموں کی تاریخ میں خواتین نے اس مقصد کے حصول کے لےُ تاریخ ساز کردار ادا کیا ہے پاکستان بنانے سے لیکر آج تک خواتین کا کردار مثالی ہے انہوں نے کہا کہ سیاست،صحافت،بزنس،تعلیم،سمیت ہر شعبے میں پاکستان کی خواتین دنیا کے سامنے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوارہی ہیں میں اور میری پارٹی پاکستان کی خواتین کو نا صرف قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے بلکہ ان پہ فخر کرتی ہے ہم اس وقت تک ترقی نہیں کرسکتے جب تک ہم خواتین کا احترام نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ میں پورے پاکستان کی خواتین کو دعوت دیتا ہوں کہ پاکستان کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرنے کیلئے آگے آئیں کیونک پاکستان ایک عظیم ملک اور ایک عظیم قوم اس وقت تک نہیں بن سکتا جب تک اس میں پاکستان کی خواتین کا کردار نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی کے پیغام کو ہر گھر تک پہنچانے میں خواتین کے کردار لائق تحسین ومبارک باد کا مستحق ہے میں امید رکھتا ہوں 29 جنوری کے جلسے کی کامیای کے لےُ160 ماضی سے ذیادہ محنت کریں گی۔ 29 جنوری کو کراچی کی ہر ماں،بہن،بیٹی تبت سینٹر اکر پاکستان کے استحکام کی جدوجہد میں میرا ساتھ دیں گی۔ انہوں نے کہا ہمارا نعرہ عزت،انصاف،اختیار ہے اور یہ ہر پاکستانی کا بنیادی حق ہے۔

 

16-Jan-2017

اختیارات کا رونا رونے والوں نے عوام کا مینڈیٹ خود گروی رکھا ، چیئرمین پی ایس پی
کون سا قانون ہے جو کچرا اٹھانے، صاف پانی پہنچانے اور صحت کی سہولیات فراہم کرنے سے روکتا ہے؟ سید مصطفی کمال
جو لوگ کل جی بھائی کرتے نہیں تھکتے تھے آج قائد استعفے مانگ رہے ہیں تو جھوٹی شان و شوکت بچانے کیلئے استعفے نہیں دے رہے، سید مصطفی کمال
دسمبر حیدرآباد کی عوام کی طرح 29 جنوری کو کراچی کے عوام لاکھوں کی تعداد میں تبت سینٹر پہنچ کر وطن پرستی کا ثبوت دیں گے، انیس قائم خانی

کراچی ( )چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہا کہ اختیارات کا رونا رونے والوں نے عوام کا مینڈیٹ خود گروی رکھا اور آج عوام کے سامنے وسائل نہ ہونے کا رونا رو رہے ہیں، وزارتوں کے مزے لوٹنے والے عوام کی خدمت نہیں کر سکتے، ان خیالات اظہار انہوں پی ایس پی کے زیر اہتمام اورنگی ٹاون 10 نمبر میں پارٹی آفس کا افتتاح اور پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے کیا، انہوں نے کہا کہ میں اور انیس قائم خانی نے لندن میں بیٹھ کر سچائی نہیں بیان کی بلکہ اپنی زندگیاں خطرے میں ڈال کر عوام کے درمیان بیٹھ کر انہیں سچ سے آگاہی دی ہے ہے انہوں نے کہا کہ میں 2018 تک اپنے بچوں کو بھوکا پیاسا اور بلکتا نہیں دیکھ سکتا انہوں نے کہا کہ29 جنوری تبت سینٹر پر عوامی عدالت میں تمام قومیتں شرکت کریں، مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کیلئے نہیں اپنی اور آیندہ آنے والی نسلوں کے تحفظ کیلئے نکلیں، وہ کون سا قانون ہے جو کچرا اٹھانے، صاف پانی پہنچانے اور صحت کی سہولیات فراہم کرنے سے روکتا ہے؟ ہماری جدوجہد کا نتیجہ یے کہ آج کٹی پہاڑی پر مہاجر و پختون بغل گیر ہیں، جب پختون مہاجروں کا اور مہاجر پختونوں کا خیال رکھیں گے اور ساری زبانیں بولنے والے ایک دوسرے سے مل جل کر رہنے لگے تو پاکستانیت نظر آنے لگے گی، قائد اعظم کا خواب شرمندہ تعبیر ہوجائے گا، انہوں نے کہا کہ اس شہر میں بستیاں کم اور قبرستان زیادہ آباد ہوئے ہیں بانیان پاکستان کی اولادیں 25 ہزار نوجوانوں کو مروانے کے بعد راء کے ایجنٹ کہلوائے گئے ہیں،اس شہر کو اس وقت بنایا جب پتا نہیں تھا کام کیسے ہوتا ہیاب تو 6 ماہ میں اس شہر کو دوبارہ کھڑا کر دیں گے اوراس شہر اور عوام کے دن ضرور پھریں گے، انہوں نے مزید کہا کہ قوم کو ایک شخص نے بد تہذیب کردیا، ہم پر اسٹیبلشمنٹ کا الزام لگانے والے اپنی منہ کی کھا کر بیٹھ گئے 22 اگست کی تقریر قدرت کی طرف سے انتقام تھا، جو لوگ کل جی بھائی کرتے نہیں تھکتے تھے آج قائد استعفے مانگ رہے ہیں تو جھوٹی شان و شوکت بچانے کیلئے استعفے نہیں دیئے جا رہے، قبل ازیں انیس قائم خانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ3 مارچ کو دو افراد نے صرف اپنے لوگوں کو سچ بتانے کیلئے اس سرزمین پر قدم رکھا تھا، 23 دسمبر حیدرآباد کی عوام کی طرح 29 جنوری کو کراچی کے عوام لاکھوں کی تعداد میں تبت سینٹر پہنچ کر وطن پرستی کا ثبوت دیں گے، 2018 کا الیکشن پاک سرزمین پارٹی کے حق میں ہوگا۔

16-Jan-2017

صوبائی و وفاقی محکمہ تعلیم موسم سرما و گرما کی تعطیلات پر ازسر نو نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے،

سرکاری اسکولوں کی حالت زار کو مد نظر رکھتے ہوئے قلیل مدت کی چھٹیوں کا اعلان کرنے کا مطالبہ

کراچی (           ) پاک سرزمین پارٹی کے ترجمان نے سردیوں کی چھٹیوں کے حوالے سے صوبائی اسمبلی میں پیش کی جانے والی قرارداد کی تائید کرتے ہوئے کہا ہے کہ محکمہ تعلیم روایتی انداز میں موسم سرما اورگرما کی تعطیلات کے ساتھ موسم کی بدلتی ہوئی صورتحال ازسر نو نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ سرکاری اسکولوں میں تعلیم حاصل کرنے والے طلباء و طالبات بنیادی سہولیات سے مکمل طور پر محروم ہیں جس کی وجہ سے انہیں کھلی چھت یا پھر گراؤنڈز میں بیٹھنا پڑتا ہے،۔ انہوں نے کہا کہ سر دی کے باعث زیر تعلیم بچے وائرل انفکیشن کا شکار ہورہے ہیں جس کی وجہ سے بچوں کی تعلیم متاثر ہونے کا خدشہ ہے،  انہوں نےحکومت سندھ اور تمام صوبائی حکومتوں اور وزیر تعلیم سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سرکاری اسکولوں کی حالت زار کو مد نظر رکھتے ہوئے حالیہ سردی کی شدید لہر کو دیکھتے ہوئے قلیل مدت کی چھٹیوں کا اعلان کریں تاکہ بچوں کو شدید سردی کی لہر اور اس سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے محفوظ رکھنے میں آسانی ہو اور والدین کی پریشانی میں بھی کمی ہوسکے.

15-Jan-2017

جامعہ کراچی کے ریٹائرڈ اساتذہ اور ملازمین کو 8 ماہ سے پینشن کی عدم ادائیگی پر افسوس اور تشویش کا اظہار۔ ترجمان پاک سر زمین پارٹی
ریٹائرمنٹ کے بعدملازمین کوجائز حقوق نہ دینا اور ان کی پینشن وقت پر ادا نہ کرنا قوم کے ان معماروں کے ساتھ زیادتی ہے

کراچی ( )پاک سر زمین پارٹی کے ترجمان نے جامعہ کراچی کے ریٹائرڈ اساتذہ اور ملازمین کو 8 ماہ سے پینشن کی عدم ادائیگی پر افسوس اور تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جن اساتذہ اور ملازمین نے اپنی ساری زندگی ملک و قوم کی خدمت کی اور مستقبل کی نسلوں کو بہتر بنانے کے لیے اپنا کردار ادا کیا انہیں ریٹائرمنٹ کے بعد ان کے جائز حقوق نہ دینا اور ان کی پینشن وقت پر ادا نہ کرنا قوم کے ان معماروں کے ساتھ زیادتی ہے. انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ تمام ریٹائرڈ ملازمین کی پینشن فی الفور ریلیز کی جائے اور آئندہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ تمام سابقہ بزرگ اساتذہ و ملازمین آئندہ اس مشکل سے دو چار نہ ہوں۔

 

15-Jan-2017

بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کا پاکستان کی تعمیر اور ترقی میں اہم کردار ہے، معیشت کی بہتری کے لئے قابل تحسین کردار ادا کیا ۔رضا ہارون
پاکستان کو اندرونی طور پر مضبوط اور مستحکم کرنا ہے،سید مصطفی کمال جیسی مخلص ،باصلاحیت اور باکردار قیادت کی ضرورت ہے ۔ سیکریٹری جنرل
کراچی میں 29 جنوری کو عظیم الشان جلسے کا انعقاد کر کے قومی و ملی یکجہتی کا اظہار کریں گے اور تمام تفرقوں کو ہمیشہ کے لیے ختم کر دیں گے۔

یو کے ( )پاک سر زمین پارٹی یو کے کی جانب سے مانچسٹر کے ایک مقامی ہوٹل میں یو کے میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کا اجلاس منعقد کیا گیا جس میں یوکے میں مقیم پاکستانیوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی. اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سیکریٹری جنرل پاک سرزمین پارٹی رضا ہارون نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کا پاکستان کی تعمیر اور ترقی میں اہم کردار ہے. انہوں نے ملک کو نہ صرف سنگین معاشی بحران کے وقت سہارا دیا بلکہ معیشت کی بہتری کے لئے قابل تحسین کردار ادا کیا لیکن اب تمام پاکستانیوں نے جو پاکستان سمیت دنیا کے کسی بھی خطے میں مقیم ہوں انہیں پاکستان کو اندرونی طور پر مضبوط اور مستحکم کرنا ہے جس کے لئے ایک مخلص ، باصلاحیت اور با کردار قیادت کی ضرورت ہے جو ملکی مفاد میں فیصلے لے اور اس وقت پوری پاکستانی قوم کو سید مصطفی کمال کی صورت میں قدرت کی طرف سے ایک موقع ملا ہے جس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ہم تمام پاکستانیوں نے مل کر مصطفٰی کمال کے ہاتھ مضبوط کر کے پاکستان کو اپنی آئندہ آنے والی نسلوں کے لئے بچانا ہے اور مستحکم کرنا ہے. اب ہمیں فیصلہ کرنا ہے کہ اگلی نسلوں کو کیسا پاکستان دینا ہے. انہوں نے کہا کہ پاکستان کی شہ رگ کراچی میں 29 جنوری کو عظیم الشان جلسے کا انعقاد کر کے قومی و ملی یکجہتی کا اظہار کریں گے اور تمام تفرقوں کو ہمیشہ کے لیے ختم کر دیں گے۔

 

14-Jan-2017

پی ایس پی کی عوامی رابطہ مہم اور کارنرمینٹگوں باقاعدہ آغاز، جس جدوجہد کا آغاز کیا اس کا ثمر آج حاصل ہوتا نظر آرہا ہے ،مصطفی کمال
تمام قومیتوں کا ایک پرچم تلے جمع ہونا ہماری جدوجہد کا نتیجہ ہے۔
پاک سر زمین پار ٹی کے زیر اہتمام کٹی پہاڑی اور قصبہ علی گڑھ میں پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب

کر اچی ( )پاک سرزمین پارٹی کے تحت ’’کراچی کاحال پاکستان کی مستقبل کی ضمانت‘‘ عنوان سے 29جنوری کوایم اے جناح روڈ تبت سینٹرپر ایک عظیم الشان جلسہ منعقد کیا جارہاہے جس کے سلسلے میں پی ایس پی کی عوامی رابطہ مہم اور کارنرمینٹگوں کا باقاعدہ آغاز کر دیا گیا اور اسلسلے میں پی ایس پی کے تحت کٹی پہاڑی اور قصبہ علی گڑھ میں پرچم کشائی کی تقریب کا انعقاد کیا گیا پر چم کشائی چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم نے کی۔ اس مو قع پر پی ایس پی کے ذمہ داران و کارکنان سمیت عوام کی بڑی تعداد موجود تھی جنہوں نے سید مصطفی کمال کی آمد پر پرتپاک استقبال کرتے ہوئے پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اس موقع پر عوام کا جوش خروش قابل دید تھا۔ پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے پی ایس پی چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ ہم نے جس جدوجہد کا آغاز کیا اس کا ثمر آج حاصل ہوتا نظر آرہا ہے، جو لوگ عوام میں نفرتیں پیدا کر کے اپنے مفاد حاصل کرتے تھے آج ان کی ہار دنیا دیکھ لے ، ہمارے آنے سے لوگوں میں امید کی کرن پیدا ہوئی ہے انہوں نے کہاکہ آج کٹی پہاڑی پر اردو اور پشتو بولنے والے ایک دوسرے کے ساتھ ہیں اور تمام قومیتوں کا ایک ہرچم تلے جمع ہونا ہماری جدوجہد کا نتیجہ ہے،انہو ں نے کہا کہ ہم لو گو ں کو تقسیم کر نے نہیں آئے ہیں بلکہ سب کوایک قوم بنا کر مضبوط کرنے آئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ عزت۔اختیار۔انصاف سب کیلئے پاک سرزمین پارٹی کامنشور ہے اورپاک سرزمین پارٹی پورے پاکستان کے ہرزبان بولنے والے کی نمائندہ جماعت ہے انہو ں نے کہا کہ بارش کے باوجود عوام کی اتنی بڑی تعداد پاک سر زمین پارٹی کی کا میابی کی ضمانت ہے۔

==================

کٹی پہاڑی جو لسانی فسادات اور دہشت کی علامت تھی، پاک سرزمین پارٹی نے اسے پاکستان کے استحکام کی علامت بنادیا ۔مصطفی کمال
کراچی میں بسنے والی تمام لسانی اکائیوں کو محبت اور وطن پرستی کے رشتے میں باندھ رہے ہیں
29 جنوری کے جلسے کی کامیابی پاکستان کی کامیابی ہے
مائیں،بہنیں،بزرگ ہمارے نوجوانوں اور بچوں کے ہمراہ اپنے وطن سے اپنی محبت کے اظہار کے لئے تبت سینٹر ٓائیں

کراچی( )چیرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کٹی پہاڑی پہ لوگوں سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کٹی پہاڑی جس کا ماضی میں نام لسانی فسادات انسانوں کی قیمتی جانوں کے نقصان اور دہشت کی علامت سمجھا جاتا تھا آج پاک سرزمین پارٹی نے اسی کٹی پہاڑی کو پاکستان کے استحکام کی علامت بنادیا ہے۔ کٹی پہاڑی پہ پاکستان کے پرچم کی سربلندی اور تمام قومیتوں کاپاکستان کے پرچم تلے جمع ہونا پر امن کراچی تو پر امن پاکستان کی نوید ہے۔ ہم کراچی میں بسنے والی تمام لسانی اکائیوں کو محبت اور وطن پرستی کے رشتے میں باندھ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ میں امید رکھتا ہوں کہ تمام محب وطن افراد اس عظیم مقصد میں میرا ساتھ دیں گے۔ 29 جنوری کے جلسے کا دن مہاجر،پنجابی،سندھی،پٹھان،بلوچ اور پاکستان کی تمام لسانی اکائیوں کو ایک پاکستان، ایک قوم، ایک ملک کے رشتے میں منسلک کرنے اور ہر تفرقے کو مٹانے کا دن ہے اس کار خیر میں ہر محب وطن پاکستانی کو اپنا حصہ ڈالنا ہوگا۔ 29 جنوری کے جلسے کی کامیابی پاکستان کی کامیابی ہے۔اس دن کراچی کے لوگ بالخصوص ہماری مائیں،بہنیں،بزرگ ہمارے نوجوانوں اور بچوں کے ہمراہ اپنے وطن سے اپنی محبت کے اظہار کے لئے تبت سینٹر ٓائیں اور پاکستان کے دشمنوں کے مذموم مقاصد کو ناکام بنائیں ۔

==================

بارش نے کراچی کے بلدیاتی اداروں کی ناقص کارکرگی کا بھانڈا پھوڑدیا، نکاسی آب کا انتظام اور کچرے کی صفائی نہ ہونے سے پانی جمع ہوگیا۔ رضا ہارون
اختیارات کا رونا رونے والے موجودہ شہری وسائل کو جس طرح لوٹ رہے ہیں ،انتہائی افسوس ناک ہے۔ سیکریٹری جنرل پاک سر زمین پارٹی

کراچی ( ) پاک سر زمین پارٹی کے سیکریٹری جنرل رضاہارون نے کہا ہے کہ موسم سرما کی ابتدائی بارش نے کراچی کے بلدیاتی اداروں کی ناقص کارکرگی کا بھانڈا پھوڑدیاہے شہر کی مرکزی شاہراہوں، ملحقہ علاقوں اور محلوں میں نکاسی آب کا صحیح انتظام نہ ہونے اور کچرے کی مناسب صفائی نہ ہونے کی وجہ سے پانی جمع ہوگیا اور سڑکیں تالاب کا منظر پیش کررہی ہیں، پاکستان ہاؤس سے جاری اپنے بیان میں ا نہو ں نے کہا کہ کچرا کیچڑ کی شکل اختیار کر گیا ہے اور تباہ حال سڑکوں نے میگا سٹی کے لوگوں کی زندگی اجیرن بنا دی ہے اور عوام ذہنی اذیت کا شکار ہیں، انہوں نے کہا کہ شہر کے نام نہاد دعوے داروں نے شہر کو لاوارث چھوڑ دیا ہے اور بلدیاتی اداروں کے سربراہ ٹھیکوں کی غیر قانونی بندر باٹ میں لگے ہوئے ہیں، اختیارات کا رونا رونے والے موجودہ شہری وسائل کو جس طرح لوٹ رہے ہیں ہیں وہ انتہائی افسوس ناک ہے، شہر کے لوگ اپنے مسائل کا حل چاہتے ہیں میئر کراچی کے نمائشی دوروں سے عوام اچھی طرح واقف ہیں۔انہوں نے حکومت سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ بلدیاتی نمائندوں کو پابند کریں کہ کو وہ شہر سے فوری طورپر کچرے کو صاف کریں، نکاسی آب کیلئے واٹر بورڈ اور بلدیہ عظمی کراچی کے اشتراک سے ہنگامی بنیادوں پر عملی اقدامات کیے جائیں تاکہ عوام کو کچھ ریلیف حاصل ہو۔

==================

موسم سرما کی ابتدائی بارش کے باعث شہر میں 200فیڈر ٹرپ ہونے پر گہری تشویش کا اظہار ۔ترجمان پاک سر زمین پارٹی
بارش کے باعث شہر کے کئی علاقوں کا تاریکی میں ڈوب جانا انتہائی افسوس ناک ہے

کراچی( ) پاک سر زمین پار ٹی کے ترجمان نے کراچی میں موسم سرما کی ابتدائی بارش کے باعث شہر میں 200فیڈر ٹرپ ہونے پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے، اپنے بیان میں انہوں نے اسے کے الیکڑک کی نااہلی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بارش کے باعث شہر کے کئی علاقوں کا تاریکی میں ڈوب جانا انتہائی افسوس ناک ہے، انہوں نے کہا ہے کہ بارش کے دوران بجلی کی بندش سے عوام کو کئی کئی گھنٹوں کی لو ڈشیڈنگ کا سامنا ہے، شہریوں کی معمولات زندگی متاثر ہورہی ہے، انہوں نے کے الیکڑک کی انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اپنی کارکردگی بہتر بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ حاصل کرتے ہوئے حکمت عملی تیار کی جائے تاکہ عوام کو بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے عذاب سے چھٹکارا مل سکے۔

==================

13-Jan-2017

پاک سرزمین پارٹی نے کراچی میں جلسے کے حوالے سے عوامی رابطہ مہم کا آغاز کردیا
شہر کراچی کو سید مصطفی کمال نے دنیا کے خوبصورت شہروں کی فہرست میں لاکھڑا کیا تھا ، انیس قائم خانی
کراچی کے تمام شہری بلاامتیاز رنگ ونسل ومذہب 29 جنوری کے جلسے میں شرکت کریں،صد پاک سرزمین پارٹی
مصطفی کمال اور انیس قائم خانی اپنے لیے نہیں آپ کے اور آپ کے بچوں کے مستقبل کیلئے نکلے ہیں، انیس قائم خانی

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی نے 29 جنوری 2016 کو ہونے والے جلسے کے حوالے سے عوام رابطہ مہم کا آغاز کردیا ہے249 اسی سلسلے میں صدر پاک سرزمین پارٹی کراچی کے مختلف مقامات پر منعقدہ ڈسٹرکٹ ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی عوام کے مسائل ان کے حل اور حقوق حاصل کرنے کی جدوجہد کر رہے ہیں، کراچی میں تبت سینٹر کے مقام پر عدالت لگانے جا رہے ہیں، اس شہر کو سید مصطفی کمال نے دنیا کے خوبصورت شہروں کی فہرست میں لاکھڑا کیا تھا لیکن ہمارے حکمرانوں نے اس شہر کو دنیا کے بدترین شہروں میں شامل کروا دیا، عوام نے موقع دیا تو پورے پاکستان کو دنیا میں ایک منفرد مقام دلانے کی بھرپور کوشش کریں گے، انہوں نے کہا کہ عوامی رابطہ مہم کا آغازلیاقت آباد سے کرنے کی وجہ یہاں کی تاریخی حیثیت ہے اور یہاں کے عوام نے ہمیشہ محب وطن تحریکوں کا ساتھ دیا ہے، فیڈرل بی ایریا سمیت کراچی کے تمام شہری بلاامتیاز رنگ ونسل ومذہب 29 جنوری کے جلسے میں شرکت کریں اور یہ تاریخ ہے کہ کراچی شہر سے جو تحریک شروع ہوتی ہے اس کا اثر پورے ملک پر ہوتا ہے، انہوں نے کہا کہ مصطفی کمال اور انیس قائم خانی اپنے لیے نہیں آپ کے اور آپ کے بچوں کے مستقبل کیلئے نکلے ہیں،صوبائی و وفاقی حکومت نے ہمارے مسائل حل نہ کیے تو ان کے دروازوں پر مظاہرہ کریں گے اور اپنے جائز حقوق ان سے حاصل کرنے کیلئے آئینی و قانونی راستے اختیار کریں گے، انیس قائم خانی نے لیاقت آباد اور عائشہ منزل پر ڈسٹرکٹ جنرل ورکرز اجلاس سے خطاب اور بعدازاں ناظم آباد گلبہار ٹاؤن اور ڈسٹرکٹ سینٹرل حیدری مارکیٹ میں پارٹی آفس کا افتتاح بھی کیا. اس موقع پر لیاقت آباد میں بسنے والی مختلف برادریوں بندھانی، بانٹوا میمن، سندھی، راجپوت اور بلوچ برادری نے پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا اور تبت سینٹر پر منعقدہ جلسے میں شرکت کی یقین دہانی کروائی۔

PSP to hold rally in Karachi on January 29

KARACHI (Dunya News) – Pak Sar Zameen (PSP) Party held a press conference in Pakistan House on Thursday, reported Dunya News.

PSP leader Mustafa Kamal said that the party will carry out a rally on MA Jinnah Road during January 29. He claimed to put a huge power show.

Mustafa Kamal reminded the promises and claims made by Muttahida Quami Movement (MQM) prior to the elections for mayor in Karachi. He put a demand in front of Karachi mayor Waseem Akhtar to fulfill all promises made before being elected. Moreover, he rejected his claims of not being given enough powers by Sindh government.

“We will knock the door of provincial and federal government for our right, he added.

PSP to hold rally at Tibet Centre on Jan 29

The Pak Sarzameen Party (PSP) will organise a public gathering in Karachi on January 29, announced its chief, Mustafa Kamal, at a press conference on Thursday.

Sharing details of the planned rally, Kamal said the venue would be Tibet Centre and that the gathering was part of the PSP’s mission ‘to save Pakistan’s people from their rulers’.

“The PSP is a party formed solely for the betterment of our masses. No one ever claimed ownership of Karachi and today its people continue to suffer,” said Kamal.

“We will make leave no stone unturned in our mission to ensure that people of Karachi and Pakistan get their due rights,” said the PSP chief.

However, added Kamal, the PSP’s mission could not be achieved without the support of the public and urged the people of Karachi to come out on January 29 for a better future.

PSP to hold public gathering on Jan 29

KARACHI: The Pak Sarzameen Party will hold a public gathering at Tibet Centre on MA Jinnah Road on January 29, announced party’s chairperson Mustafa Kamal.

Addressing a press conference, he said that the PSP’s future course of action will be discussed during the gathering. The party is going to become a year old in March, this year. Meanwhile, it has also established its structure in Karachi, Hyderabad and other urban centres of the province.

PSP struggling to secure people’s rights: Qaimkhani

He criticised leaders of his former party, Muttahida Qaumi Movement (MQM), who now have formed another faction, MQM-Pakistan.

“Rather than asking their mayor and elected representatives to serve the public, they are taking them to attend party events,” the PSP chief said, referring to the December 30 gathering of MQM-Pakistan in Nishtar Park.

He said that the MQM-Pakistan leaders and public representatives were ‘crying’ over having no powers.

RAW agents gave weapons to youth, says Kamal

KARACHI – Pak Sarzameen Party (PSP) Chairman Mustafa Kamal has said the prevailing situation in the city will determine future of the country.

 

Addressing a press conference at Pakistan House along with party President Anees Kaimkhani and others, Kamal said, “We will not allow anyone to be dishonest with Karachi.” He paid tribute to people of Hyderabad for accepting PSP and asked people to support his party. He said that PSP was not against any government and it did not want to topple the government. He said, “We only seek solution to problems, as Karachi’s elected local bodies have failed to deliver to the city.” He said, “When Karachiites come on the roads, they decide future of the country.” He said the January 29 gathering would prove Karachi people’s support to his party. He said the PSP would knock the doors of the ruling elite to get rights for the people.

Kamal said the January 29 gathering on MA Jinnah Road would prove that no ground was big enough to host the people of Karachi. He said this gathering would be like a public court. He said that motto of the gathering was “Karachi woh Amanat Hai jo Pakistan kay Mustaqbil ki Zamanat Hai”. He said that educated people were committing suicides because of unemployment. He said, “We did not form this party to hold press conferences; we are trying to secure future of the coming generations.” He said that RAW agents gave weapons to young people, but “we will give them education”. He said that vested interests ruined the city and the number one city in terms of education slipped to number 43 in the country. He criticised Karachi Mayor Wasim Akhtar and said he knew nothing about the authority and powers of the mayor.

Karachi: Mustafa Kamal announces rally on January 29

Web Desk — Leader of Pak Sarzameen Party (PSP) Mustafa Kamal announced a political rally in the metropolitan city on January 29. He claimed that the magnitude of the rally would be staggering, reported 24 News on Thursday.

Talking during a press conference in Karachi, Mustafa Kamal said that PSP would hold a political rally at Tibet Center on January 29. He said that people’s court will be set-up and urged the masses to come out for a show of power. Kamal also hinted at ‘knocking the door of the politicians’ after the rally.

PSP announces rally on January 29

Chairman Pak Sarzameen Party Mustafa Kamal on Thursday announced to hold public gathering in the metropolis on January 29. Addressing a press conference here, Kamal said his party’s rally will be organised at Tibet Centre and insisted that he was on mission to save people’s lives from the incumbent rulers. He regretted that no one takes ownership of the city, thus plunging citizens’ lives into crisis. He claimed that the PSP was an organized party, working for the betterment of masses.

The former Karachi mayor said he would let people get their basic rights. Targeting his former party he was associated with, Mustafa Kamal said the city was being run by RAW agents for past several years. He urged people to come out for their rights. Earlier, he also thanked Hyderabad citizens for attending PSP rally at Pakka Qilla ground.

12-Jan-2017

کراچی کا حال پاکستان کے مسقبل کی ضمانت ہے، کراچی کی امانت میں کسی کو خیانت نہیں کرنے دینگے ، سید مصطفی کمال
پورے پاکستان کو یہ پیغام دیا ہے کہ حق چھارہا ہے اور باطل مٹ رہاہے۔ چیئر مین پاک سر زمین پارٹی

کراچی ( )پاک سر زمین پارٹی کے سربراہ مصطفی کمال نے کہاکہ کراچی کا حال پاکستان کے مستقبل کی ضمانت ہے کراچی کی امانت میں کسی کو خیانت نہیں کرنے دینگے ،حیدر آبادکے لوگوں کے شکر گزار ہیں جنہوں نے ہمیں نہ صرف تہہ دل سے قبول کیا بلکہ پورے پاکستان کو یہ پیغام بھی دیا کہ حق چھا رہا ہے اور باطل مٹ رہاہے، ہم کسی کی حکومت کے خلاف نہیں نہ اسے گرانا چاہتے ہیں،بلکہ ہمیں اپنے مسائل کا حل چاہئے، نام نہاد مینڈیٹ رکھنے والی جماعت اپنے مئیر ، ایم این ایز، ایم پی ایز سے عوام کی خدمت نہیں کروا سکی، کراچی کی عوام نکل پڑی توخیبر پختونخواہ، جنوبی پنجاب، بلوچستان سمیت پورے ملک کی خوشحالی کے فیصلے کرے گی ،29 جنوری کو بتائیں گے کہ کراچی شہر کس کا ہے عوام کی تائید سے ان کے حقوق حاصل کرنے کیلے حکمرانوں کے دروازے کٹکھٹائیں گے اور انہیں بتائیں گے کہ اگراقتدار میں رہنا ہے تو عوام کو ان کا حق دیناہی پڑے گا۔ ان خیالات اظہار انہوں نے پی ایس پی کے مرکزی دفتر پاکستان ہاؤس میں صدر اینس قائم خانی،انیس ایڈوکیٹ ڈاکٹر صغیر احمد،وسیم آفتاب ،افتخار رندھاواسمیت دیگر سینٹرل ایکزیکٹو کمیٹی اور نیشنل کونسل کے اراکین کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ29 جنوری کوایم اے جناح روڈ پر جلسہ اس لئے کیا کہ کراچی کی عوام کو کسی گراونڈ میں محدود نہیں کیا جا سکتا کیونکہ صرف31دن میں پارٹی نے بغیر کسی تنظیمی ڈھانچے کے شہر کا سب سے بڑا گراؤنڈ عوام کی بڑی تعداد سے بھر دیا تھا اور اب جبکہ نہ صرف پورا تنظیمی ڈھانچہ بلکہ مختلف شعبہ جات بھی موجود ہیں تو جلسے کا ایک سرا تبت سینٹر جبکہ دوسرا سرا کہاں ہوگا یہ کہنا قبل از وقت ہے۔ انہوں نے کہاکہ جلسے کا عنوان” کراچی وہ امانت ہے جو پاکستان کے مستقبل کی ضمات ہے” ۔انہوں نے مزید کہا کہ کراچی کی امانت میں کسی کو خیانت نہیں کرنے دینگے پڑھے لکھے نوجوان ڈگریاں ہاتھوں میں لیے اوربزرگ پنشن نہ ملنے پر خود کشیوں پر مجبور ہیں پریس کانفرنس کرنے کے لئے پارٹی نہیں بنائی بلکہ آئندہ آنے والی نسلوں کے تحفظ اوران کے حقوق حاصل کرنے لئے جدوجہد کا آغاز کیاہے۔ انہوں نے کہاکہ راء کے ایجنٹوں نے نوجوان نسل کے ہاتھ میں ہتھار ، اورہتھکڑی دے دی ہم ان کے ہاتھ میں قلم، کاغذ ،کتاب وکمپوٹر دیں گے،جن لوگوں کے ہاتھ میں ہمارا مینڈنٹ گروی رکھا ہے وہ ہمیں ہمارا حقوق نہیں دلا سکتے ،انہوں نے پیسے لیکر شہر کو تباہ کردیا ہے تعلیمی لحاظ سے پاکستان کا نمبر ون شہر کراچی آج 43نمبر پر ہے۔ حکمرانوں کو عوام کا حق دینا ہو گا۔ کیا بلدیاتی انتخابات سے قبل اپنے اختیارات سے نہ آشانہ تھے؟آج عوام کے سامنے اختیارات نہ ہونیکا رونا رو رہے ہیں تقریروں کی سیاست کرنا ہمارا کام نہیں ہے عملی جد وجہد کرکے اپنے شہر کو دوبارہ بین لا اقومی شہروں کی فہرست میں لاکھڑا کریں گے۔انہوں نے کہاکہ ایم اے جناح روڈ پر عوام کی عدالت لگے گی عوام اپنے حقوق حاصل کرنے کیلئے ہمارا ہاتھ مضبوط کریں۔ یہ ملک کی تاریخ ہے 8ماہ میں کسی بھی سیاسی جماعت نے عوام کو اتنی بڑی تعداد میں جمع نہیں کیا ۔ انہوں نے کہاکہ عوام سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ 29جنوری کو بھر پور تعداد میں اپنے گھروں سے نکلے اور جلسے میں شریک ہو کر اسے کامیاب بنائے ۔

.

11-Jan-2017

29جنوری کے شاندار کامیابی کی میں پیشگی مبارکباد دیتا ہوں، چیئر مین پی ایس پی مصطفی کمال
قلیل عرصے میں،24اپریل 2016کو کامیاب جلسہ کر کے یہ ثابت کیا کہ شہر کا میندیٹ کس کے ساتھ ہیں، مصطفی کمال
٢٩جنوری کے جلسے میں کراچی سے بھر پور تعداد میں شہری شرکت کرکے واضح پیغام دیں گے کہ کراچی والے کس کے ساتھ ہیں انیس قائم خانی، صدر پی ایس پی
پی ایس پی کے مرکزی سیکریٹریٹ پاکستان ہاؤس میں کراچی کے تمام ڈسٹرکٹ و ٹاؤنز کمیٹیوں کے انچارج و اراکین کے منعقدہ ایک اہم جلاس کے سے خطاب

کراچی ( )پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ23مارچ کو بننے والی پارٹی نے شہر کے سب سے بڑے گراونڈ باغ جناح میں صرف ایک مہینے کے قلیل عرصے میں 24اپریل2016 کو کامیاب جلسہ کر کے یہ ثابت کیا شہر کا میندیٹ کس کے ساتھ ہے ان کا کہنا تھا میں اللہ تعالی کی نصرت کو شامل حال رکھتے ہوئے اس بات کا یقین کر تا ہوں کہ 29جنوری کے شاندار کامیابی کی میں پیشگی مبارکباد دیتا ہوں۔ ان خیالات اظہار انہوں نے منگل کے روز پی ایس پی کے مرکزی سیکریٹریٹ پاکستان ہاؤس میں کراچی کے تمام ڈسٹرکٹ و ٹاؤنز کمیٹیوں کے انچارج و اراکین کے منعقدہ ایک اہم جلاس کے سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ اپنے مسائل کے حل کے لئے 2018کے الیکشن کا انتظا رنہیں کرسکتے مجھے آج روز گار چاہیے،مجھے آج بیماری کا علاج چاہیے اورمجھے آج اچھی تعلیم چاہیے اور مجھے آج بجلی بھی سستی چاہیے ہے تو عوام پاک سرزمین پارٹی کا ساتھ دیں تو ہم ملک کی تقدیر بدل سکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آج حیدر آباد اور میر پور خاص میں الیکشن کروا دئیے جائے تو پی ایس پی کلین سوئپ کرے گی۔اس موقع پر پی ایس پی کے صدر اینس قائم خانی نے کہاکہ29جنوری کے جلسے میں کراچی سے بھر پور تعداد میں شہری شرکت کرکے واضح پیغام دیں گے کہ کراچی والے کس کے ساتھ ہیں اور یہ بحث ہی ہمیشہ کے لئے ختم ہو جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے لئے جلسہ کرنا کوئی مسئلہ نہیں ہم دودن میں بھی جلسے کر سکتے ہیں اور 29جنوری کا دن پاکستان میں نئی راہوں کا تعین کرے گا اورہمارے آئندہ وانے والی نسلوں کیلئے روشن مستقبل کی نوید ثابت ہوگا۔

 

11-Jan-2017

گورنر سندھ و سابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس (ر) سعید الزماں صدیقی کے انتقال پر پی ایس پی کے چیئر مین مصطفی کمال کا اظہار افسوس

کراچی (. . .) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے گورنر سندھ و سابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس (ر) سعید الزماں صدیقی کے انتقال پر رنج و غم کا اظہار کیا ہے، پاکستان ہاؤس سے جاری بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ گورنر سندھ سعید الزماں صدیقی نے انصاف کی فراہمی اور آزاد عدلیہ کیلئے اہم کردار ادا کیا اور عدالتوں پر عوام کا اعتماد بحال کرنے کی جدوجہد میں مصروف عمل رہے، بطور چیف جسٹس آف پاکستان ان کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں، سید مصطفی کمال نے ان کے اہل خانہ سے دلی تعزیت و ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مغفرت کیلئے فاتحہ خوانی اور درجات کی بلندی کیلئے دعا کی.

.

06-Jan-2017

ٹرین اور رکشے میں تصادم کے نتیجے میں8 افراد کے جاں بحق ہونے پی ایس پی ترجمان کااظہار تعزیت
حادثات کو روکنے کیلئے ریلوے کو جدید سہولیات سے آراستہ کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے، پی ایس پی ترجمان

کراچی (. . .)پاک سرزمین پارٹی کے ترجمان نے لودھراں میں ٹرین اور رکشے میں تصادم کے نتیجے میں8 افراد کے جاں بحق اور متعددافراد کے زخمی ہونے پر دلی افسوس اور غم و غصہ کا اظہار کیا ہے۔ پاکستان ہاؤس سے جاری اپنے مشترکہ بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان ریلوے ایسے افسوس ناک حادثات کو روکنے کیلئے ادارے کو جدید سہولیات سے آراستہ کریتاکہ قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع کو روکا جا سکے۔انہوں نے جاں بحق ہونیوالے افراد کے سو گووار لواحقین سے دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والوں کی مغفرت اور ان کے دراجات کی بلندی اور زخمی ہونے والے افراد کے جلد و مکمل صحتیابی کے لئے دعا اور بعدازاں فاتحہ خوانی بھی کی گئی.

پولیس اہلکاروں کی جانب سے سماء نیوز اسٹیشن سکھرکے ہیڈ امداد علی پھلپھوٹو کو مبینہ اغواء پر پی ایس پی کے ترجمان کا اظہارمذمت
جمہوری دور میں آزادی رائے سے روکنا ائین کے خلاف ورزی اور صحافت پر حملہ اور زرد صحافت کو فروغ دینے کے مترادف ہے، ترجمان پی ایس پی
امداد علی پھلپھوٹوکی بازیابی یقینی بنائی جائے، ترجمان پی ایس پی کا وزیر اعلی سندھ، گورنر سندھ سے مطالبہ

پاک سرزمین پارٹی کے ترجمان نے سکھرسماء نیو ز اسٹیشن کے ہیڈ امداد علی پھلپھو ٹوکے پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں مبینہ اغواء پر شدید الفاظ میں مذمت کی اور واقعہ کو آزادی صحافت پرقدغن لگانے کے مترادف قرار دیا ہے۔ ایک مزمتی بیان میں انہوں نے کہاکہ پولیس اہلکاروں کی جانب سے گھر میں زبردستی گھس کر اہل خانے سے بدتمیزی اورچادر او رچاردیواری کے تقدس کو پامال کر تے ہوئے امداد علی پھلپھوٹو کو اغواء کرکے اپنے ساتھ لے گئے جو ایک انتہائی غیر انسانی، غیر آئینی غیر قانونی، غیر اخلاقی عمل ہے۔ انہوں نے کہاکہ جمہوری دور میں آزادی رائے سے روکنا ائین کے خلاف ورزی اور صحافت پر حملہ اور زرد صحافت کو فروغ دینے کے مترادف ہے۔انہوں نے وزیر اعلی سندھ اور گورنر سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ فی الفور امداد علی پھلپھوٹوکی بازیابی کویقینی بنایا جائے۔

====================

پاک سرزمین ورکز فیڈریشن کمیٹی نے عباسی اسپتال کی سات رکنی کمیٹی کا علان

پاک سرزمین ورکز فیڈریشن کمیٹی نے عباسی اسپتال کی سات رکنی کمیٹی کا علان کر دیا گیا ہے۔یہ اعلان نے عباسی شہید اسپتال کے ذمہ داران سے گفتگو کرتے ہوئے ورکرزفیڈریشن کے نائب صدر واصف حسین، اراکین فرقان صدیقی اورحبیب خان نے کیا۔

پا ک سر زمین کے تحت ٢٩جنوری ٢٠١٧ بروز اتوار کو ہونے والے جلسے کے حوالے سے عوامی رابطہ مہم شروع
٢٩ جنوری ہونے والے جلسے میں عوام سے زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کریں، ڈاکٹر صغیر احمدکی اپیل
فرسودہ سیاسی نظام میں روایتی سیاسی جماعتوں کو عوام مسترد کر چکے، پی ایس پی اور اس کی قیادت ہی پاکستانی عوام
کی حقیقی ترجمان ہے ،جس سے عوام اور آنے والی نسلوں کی امیدیں وابسطہ ہیں،ڈاکٹر صغیر احمد سینئر وائس چیئر مین
وطن پرستی کے جذبے سے سرشار ہو کر پی ایس پی میں کام کریں اور پارٹی قیادت کے پیغام کو عوام تک پہنچائیں, وسیم آفتاب وائس چیئر مین
پی ایس پی کے تحت چاندنی پارکنگ گراؤنڈ نیوٹاؤن اور آرام باغ عید گاہ پارک برنس روڈجنرل وررکز اجلاس منعقد

کراچی ( )پا ک سر زمین پارٹی کے تحت ٢٩جنوری ٢٠١٧بروز اتوار کو ہونے والے جلسے کے حوالے سے عوامی رابطہ مہم شروع کر دی گئی ہے اورجلسے کے حوالے سے عوام میں زبردست جوش خروش پایا جارہاہے۔ اس سلسلے میں پی ایس پی کے تحت چاندنی پارکنگ گراؤنڈ نیوٹاؤن اور آرام باغ عید گاہ پارک بر نس روڈپرجنرل وررکز اجلاس منعقد کئے گئے جس میں پی ایس پی کے سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر احمد، وائس چیئر مین وسیم آفتاب ، سیکریٹری انفارمیشن افتخار عالم اور نیشنل کونسل کے اراکین ،دلاور خان، سیف یار خان، آصف حسنین ، ڈاکٹر یاسرر،عاصم اشتیاق اور میر عتیق تالپور بھی موجود تھے۔ اس موقع پر جنرل ورکرز اجلاس میں خواتین، بزرگ،بچوں اور نوجوانوں سمیت مختلف طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت ۔ پی ایس پی سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر احمدنے شرکاء سے خطاب کر تے ہوئے کہاکہ پاکستان کے فرسودہ سیاسی نظام میں روایتی سیاسی جماعتوں کو عوام مسترد کر چکے ہیں اور پی ایس پی اور اس کی قیادت ہی پاکستانی عوام کی حقیقی ترجمان ہے جس سے عوام اور آنے والی نسلوں کی امیدیں وابسطہ ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہم امن کا پیغام لیکر ملک بھر کی عوام کے پاس جا رہے ہیں،ہم اتحاد، یکجہتی، بھائی چارہ او رامن ومحبت کے جذبے کوپروان چڑھانے کیلئے آئے ہیں، ہمیں لاشوں اور اسلحے کی سیاست نہیں کرنی ،ہمیں اگراپنے شہر کو تباہ ہونے سے بچانا ہے تو اپنے بچوں کے ہاتھوں میں ہتھیاروں کے بجائے کتابیں اورقلم دینا ہوگا تاکہ وہ ملک کی ترقی میں اپنا مثبت کردار ادا کر سکیں ۔ انہوں نے کہاکہ 29جنوری ہونے والے جلسے میں عوام سے اپیل کی وہ زیادہ سے زیادہ تعداد میں شرکت کریں اور مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کے ہاتھوں کو مضبوط کریں او راپنے آنے والی نسل کے مستقبل کو محفوظ بنائیں۔ پی ایس پی کے وائس چیئر مین وسیم آفتاب نے کہا کہ وطن پرستی کے جذبے سے سرشار ہو کر پی ایس پی میں کام کریں اور پارٹی قیادت کے پیغام کو عوام تک پہنچائیں۔ انہوں نے کہاکہ ٢٩جنوری کے ہونے والے جلسۂ عام میں عوام کثیر تعداد میں شرکت کرکے اپنے ہونے کا احساس دلائے۔اس موقع دیگر مقررین نے بھی اپنے خیالات اظہار کیا۔

04-Jan-2017

جمہوریت اور آزادی: عزت، احترام اور انصاف

پاکستان کو آزاد ہوئے ستر برس ہونے کوہیں، لیکن کیا عوام آزاد ہیں ؟ کیا یہاں جمہوری نظام ہے؟ کیا بنیادی انسانی حقوق ہر شہری کو حاصل ہیں؟ اگر ان تین سوالات کا جواب ہاں میں ہے تو پھر سب ٹھیک ہے، لیکن اگر ایسا نہیں تو پھر سوال تو ہو گا، آواز بھی اٹھے گی، تنقید بھی ہو گی، احتجاج بھی ہو گا، اختلافات بھی رہیں گے۔ ایک شہری کی بنیادی ضروریات، پینے کا صاف پانی، صفائی ستھرائی کا انتظام، صحت کا نظام، معیاری تعلیم، سڑکیں، تفریحی پارکس، سیوریج و نکاسئ آب کا مناسب انتظام، امن و امان کا مسئلہ، روزگار، آلودگی سے پاک ماحول، سستا اور فوری انصاف، عوام کی اپنے منتخب نمائندوں تک بآسانی رسائی۔۔۔ حقائق ہمیں کچھ اور بتاتے ہیں، دیہی علاقوں کی بات تو ایک طرف یہاں تو شہری علاقوں میں تعلیم کا کوئی مناسب انتظام حکومت کی جانب سے نہیں، صحت کے مراکز تباہ حال ، پارکس کچرے کنڈی بن چکے، پانی عدم دستیاب اور صاف پانی کی خواہش تو بھول ہی جائیں تو بہتر ہے، سیوریج کا ناقص نظام، ٹوٹی پھوٹی سڑکیں، جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر،جن سے وبائی امراض پھیل رہے ہیں، انصاف ہے بھی اگر تو کم ازکم غریب کی رسائی اس تک ناممکن اور سستا اور فوری تو بالکل نہیں، ٹرانسپورٹ کا نظام درہم برہم، وغیرہ وغیرہ۔

 

ایک غریب خاندان جس کی ماہانہ آمدنی بیس ہزار روپے تک ہو ا،سے ہر ماہ فیصلہ کرنا ہوتا ہے کہ آیا وہ اپنے بچوں کو دودھ پلائے یا پینے کا صاف پانی، دونوں کی قیمت ایک۔۔۔وہ فیصلہ کرتا ہے اور بچے کو دودھ نہیں پلاتا، کیونکہ کیا فائدہ گندہ پانی پی کراس نے بیمار ہونا ہے اور پھر ایک اور خرچہ سر پر اس کے علاج معالجہ کا!لہٰذا رسک لیتا ہے۔ حالیہ اعداد و شمار کے مطابق پاکستان کے 43.7 فیصد پانچ سال تک کی عمر کے بچے غذا کی کمی اور پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے اسٹنٹنگ اور ویسٹنگ کا شکار ہیں، یعنی جسامت اور وزن ان کی عمر اور قد کی مناسبت سے انتہائی کم ہے۔ایسے بچوں کی بڑی تعداد کا تعلق بلوچستان اورسندھ سے ہے۔ اسی طرح ڈھائی کروڑ بچے سکول نہیں جاتے اور جو جاتے ہیں ان کی ایک بڑی تعداد پرائمری تک تعلیم حاصل کر کے سکول چھوڑ دینے پر مجبور، باقی رہ جانے والوں کی ایک بڑی تعداد مڈل پاس کرنے کے بعد سکول کو خیرباد کہہ دیتی ہے۔ ہماری حکومتیں تعلیم اور صحت کے معاملے میں آنے والی نسل کو فیل کر رہی ہیں۔ اسی طرح نومولود بچوں کی اموات اور کمسنی میں وفات پا جانے والے بچوں کی تعداد بھی لاکھوں میں ہے۔ جہاں ملک کا آئین تعلیم اور صحت کی گارنٹی دیتا ہو اور حکومت وقت کی یہ ذمہ داری لگاتا ہو کہ ایک ایک شہری کی جان و مال، عزت و آبرو اور ان کے بچوں کی نگہداشت کی ذمہ داری ریاست کی ہے، وہاں اتنی بڑی تعداد میں ہماری نسلوں کی بربادی کا سامان ہو رہا ہے۔ آئین کے آرٹیکل 38 (a) (b) (c) (d) (e)میں ریاست کی بنیادی ذمہ داری ایک عام شہری کی سماجی اور معاشی ترقی اورخوشحالی کا خیال رکھنا اور عملاً ان کے لئے اقدامات اٹھاناشامل ہے۔

جمہوریت کی تعریف کیا ہے؟ ذرا غریب والدین سے معلوم کریں۔ پانچ برس میں ایک دن جمہوریت کا اور باقی کے چار سال تین سو چونسٹھ دن حکمرانوں، مراعات یافتہ سیاستدانوں اور بیورو کریسی کے نام۔ منتخب حکمرانوں کے پاس عوام کے لئے وقت نہیں، عوام کے مسائل حل کرنے میں دلچسپی نہیں، بڑے بڑے پراجیکٹ لگائے جا رہے ہیں، لیکن ایک عام شہری کو بہتر زندگی گزارنے اور معیاری سروس مہیا کرنے کا کوئی انتظام نہیں۔ جمہوریت میں نظام کی کامیابی، میرٹ، قابلیت اور اہلیت کی بنیاد پر فیصلوں میں پوشیدہ ہے۔جو سیاسی جماعت اپنے اندر قیادت ایک عام آدمی کو نہیں دلا سکتی، وہ معاشرے میں کیا بہتری لائے گی؟اکثر جماعتوں میں وراثتی قیادت کا نظام رائج ہے اور ان پارٹیوں کے قابل اور اہل ترین فرد کو بھی یہ بات اچھی طرح معلوم ہے کہ ان کا حق ایک درمیانی سطح کی ذمہ داری تک ہی محدود ہے اور اس سے آگے جانے کے لئے خاندانی تعلقات اور پہچان ضروری شرط ہے۔ سینیارٹی اور اہلیت کو بنیادی اہمیت ہونی چاہئے، مگر ایسا رواج ہی نہیں۔ الغرض معاشرے میں حاکم اور غلام کے تصور پر نظام قائم کیا گیا ہے۔ہمیں آزاد ہوئے ستر برس ہونے کو ہیں، لیکن ہمارا تصورِسیاست غلامی کی بنیاد پر قائم ہے۔ ایک عہد گزر گیا اور دو نسلیں اس نظام میں بنیادی تبدیلی لانے میں ناکام رہیں ہیں۔ کیا نسلی سیاست، لسانی سیاست، برادری کی سیاست، خاندانی سیاست، قومیتی سیاست، نام نہاد مذہبی سیاست، فرقہ وارانہ بنیادوں پر کی جانے والی سیاست، صوبائی تعصب کی سیاست ۔۔۔ ہمیں ہمارے حقوق دلا سکی ہیں؟

جمہوریت کی عملی شکل دیکھنے کے لئے ضروری ہے کہ ملک میں رائج بلدیاتی نظام کا جائزہ لیا جائے کہ حکمران جمہوریت کی نرسری، یعنی مقامی حکومتوں کو اختیارات منتقل کیوں نہیں کرتے، جبکہ آئین کا آرٹیکل A140 واضح طور پر صوبائی حکومتوں کو پابند کرتا ہے کہ وہ منتخب مقامی حکومتوں کا قیام عمل میں لائیں گے اور انہیں مکمل بااختیار بناتے ہوئے سیاسی، مالی اور انتظامی اختیارات دیں۔ عام شہری کا احساس شراکت کہاں سے آئے گا اور وہ کیوں مایوس ہوکر فرسٹریشن کا شکارنہیں ہو گا۔اختیارات اور وسائل کی عدم مرکزیت ہی جمہوریت کاتصور ہے۔

اب تک کا مشاہدہ یہ بتاتا ہے کہ جو جماعتیں عوامی مقبولیت کے سہارے اقتدار میں آئیں، ان سب نے عوام کے حقوق کا سودا کیا، ذاتی مفاد حاصل کئے، ملک کے اندر کم اور ملک کے باہر زیادہ وقت گزارا، یہ عوام کے سامنے تو ایک دوسرے کے شدید مخالف، لیکن بند کمرے میں ایک دوسرے کے رازدار اور ساتھ نبھانے والے۔ سیاسی جماعتوں نے اپنے مینڈیٹ کا سستا سودا کیا، بنیادی مطالبات یا ووٹ حاصل کرنے اور عوام کے جذبات ابھارنے کے لئے استعمال کیا۔ یہاں کون کس کا احتساب کرے گا، سب ایک دوسرے کو سہارا دے کر ایک دوسرے کی بدعنوانی چھپا کر اقتدار میں رہنا چاہتے ہیں۔ مایوس اور نامراد رہ جاتا ہے تو بے چارہ ووٹر، جب اسے کچھ نہیں ملتا۔۔۔ لیکن اس مایوسی کوبھی شاید لوگوں نے اپنا مقدر سمجھ کرقبول کر لیا ہے اور اپنی قسمت بدلنے کی امید ختم ہوتی جا رہی ہے۔ ورلڈ بینک کی پاکستان پر نومبر کی رپورٹ آنکھیں کھولنے کے لئے کافی ہے، ان کے مطابق کراچی اب رہنے کے قابل شہر نہیں رہا اور مسائل کی ایک طویل فہرست شائع کی گئی ہے۔ غیرذمہ داری کی انتہا ہے کہ ایک سات سالہ بچہ گجر نالے میں گر کر ڈوب جاتا ہے اور اڑتالیس گھنٹے گزر جانے کے بعد صوبائی اور شہری حکومت نہ تو کوئی تیزی دکھاتی ہے اور نہ ہی اس معصوم کی لاش ہی نکالنے کا مناسب انتظام کر پاتی ہے اور جواب وہی پرانا کہ مشینری نہیں، اختیارات نہیں، وسائل نہیں، وغیرہ وغیرہ۔۔۔ جب ہے ہی کچھ نہیں تو انتخابات کس بات پر لڑے تھے، کیوں عوام کی امید باندھی کہ ان کے مسائل حل ہو جائیں گے، کیوں اس وقت یہ نہیں بتایا کہ ہم ایک بے اختیار منتخب نمائندے ہوں گے اور برائے نام عہدیدار کہلائیں گے ۔۔۔کم از کم احتجاجاً استعفا تو دے ہی سکتے ہیں، اس مفلوج اور اپاہج بلدیاتی نظام کے خلاف آواز تو اٹھائی جا سکتی ہے۔عوام کو بے وقوف بنانا ایک بات، لیکن اتنا بھی نہیں کہ جس نظام میں آپ کے پاس قانوناً اختیار ہی نہیں، وہاں کیا ہر سا ل آپ صوبائی حکومت سے اختیارات اور وسائل کی بھیک ہی مانگیں گے یا عملی طور پر ملک کی تمام صوبائی اسمبلیوں میں بیٹھے ممبران قانون سازی کر کے اختیار دلوانے میں اپنا کردار ادا کریں گے۔

پاکستان ایک خوبصورت، قدرتی و انسانی وسائل اورقیمتی معدنیات سے مالامال ملک ہے، اس کی جغرافیائی حیثیت بھی دفاعی اور معاشی اعتبار سے ایک اہم خطے کی ہے۔اگر ہم اپنی آنے والی نسلوں کو تباہی و بربادی اور غلامی سے نجات دلوانا چاہتے ہیں، اگر ہم گزرے برسوں کے تجربات کو سامنے رکھیں اور آنے والے دنوں کو پُرامید ہو کر دیکھیں تو پھر غلطی دہرانے سے کام نہیں چلے گا۔۔۔ تین تین چار چار بار باری لے کر دھوکہ دینے والوں سے کام نہیں چلے گا۔ ایک سے زائد بار حکومت کرنے والی پارٹیوں اور پرانی قیادتوں پر بھروسہ کرنے سے کام نہیں چلے گا۔ حد تو یہ ہے کہ برسوں سے سیاست کرنے والی جماعتوں، خصوصاً اقتدر میں رہنے والی جماعتوں کے عوامی نعرے تک نہیں بدلے، وہی پچاس سال پرانے نعرے۔۔۔مگر کچھ حاصل وصول نہیں۔۔۔اس سے بھی اب کام نہیں چلے گا، بار بار قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے ممبر بننے والوں کے اپنے حلقے بنیادی ضرورتوں سے محروم تو انہیں ایک بار پھر منتخب کرنے سے کام نہیں چلے گا۔نظام کو بدلنا ہے، اپنی قسمت کو بدلنا ہے، اپنی آنے والی نسلوں کے مستقبل کو آج لکھنا ہے، اپنے شہروں اور دیہاتوں کو ترقی دینی ہے، اپنی زندگی اور زیست کو بہتر بنانا ہے، اپنے بچوں کی تعلیم اور صحت کو محفوظ بنانا ہے ۔۔۔ تو پھر اپنا حصہ ایک نئی جدوجہد میں ڈالیں اور آغاز کریں ایک نئے دور کا، جہاں ہم پاکستان کے آئین اور قانون کے تحت ایک ایک شہری کو اس کے بنیادی حقوق مہیا کر سکیں، امن و امان کو بہتر بنا سکیں، معاشی استحکام لا سکیں، تجارت کو فروغ دے سکیں، زراعت کو مستحکم کریں، خوراک کو محفوظ کریں، غذا تک ہر ضرورت مند کی رسائی ہو، پینے کا صاف پانی ہو۔ بلدیاتی مسائل حل کرنا علاقائی سطح پر مضبوط اور بااختیار مقامی حکومتوں کے ذریعے یو سی لیول تک فنڈز کی بلا روک ٹوک فراہمی سے ہی ممکن بنایا جاسکتا ہے۔ فوری اور سستے انصاف تک ہر شہری کی رسائی ہو، ایک مضبوط اور متحد قوم کو پروان چڑھایا جائے تاکہ تعمیر وطن ہو اور ملک میں خوشحالی آئے۔ یہ سب ممکن ہے اگر ایک ایک عام آدمی ہمت کرے اور اپنے حق کے لئے کھڑا ہو۔۔۔ ہمیں اٹھنا ہو گا اپنی عزت، احترام اور انصاف کی خاطر۔ ایسے ہی چلتا رہا تو زیادہ دن نہیں چلے گا۔ صرف الیکشن کے روز ووٹ ڈالنے سے کام نہیں چلے گا 150 سخت اور کڑا عوامی احتساب روزانہ کی بنیاد پر اپنے نمائندوں کا اور عملی طور پر پاکستان، پاکستانیت اور وطن پرستی کو مثال بنا کر ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہو گا۔ کام مشکل ضرورہے، ناممکن نہیں۔عوام جب تک اپنے مینڈیٹ کے ٹھیکیداروں کا احتساب خود اپنے ووٹ کے صحیح استعمال سے نہیں کریں گے، تبدیلی نہیں آئے گی۔ وعدے اور نعرے بہت ہوئے۔۔۔ ’’اپنے آنے والے کل کو بدلنے کے لئے اپنے آج کو بدلیں‘‘۔

 

04-Jan-2017

استاد فتح علی خان کے انتقال پر سید مصطفی کمال کااظہار تعزیت
استاد فتح علی خان کے انتقال سے کلاسیکی او موسیقی کی دنیا پیدا ہونے والی خلاء کو کبھی پُر نہیں کیا جاسکے گا،مصطفی کمال پی ایس پی چیئرمین
مرحوم استاد فتح علی خان کے اہل خانہ اور ان کے چاہنے والے مداح سے دلی تعزیت و ہمدردی اظہار

پا ک سر زمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے استاد فتح علی خان کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کااظہار کیا ہے۔ ایک تعزیتی بیان میں سید مصطفی کمال نے مرحوم استاد فتح علی خان کے اہل خانہ اور ان کے چاہنے والے مداح سے دلی تعزیت و ہمدردی اظہار کر تے ہوئے کہاکہ استاد فتح علی خان کے انتقال سے کلاسیکی او موسیقی کی دنیا پیدا ہونے والی خلاء کو کبھی پُر نہیں کیا جاسکے گا اور ان کلاسکی ، موسیقی میں مرحوم کی خدمات کا کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔ انہوں نے دعا کی اللہ تعالی مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے اور اہل خانہ سمیت ان کے مداح کو صبر جمیل عطا کریں۔امین

 

03-Jan-2017

پاک سرزمین ورکرز فیڈریشن نمائندہ وفد میں کے ایم سی اولڈ بلڈنگ میں منونسپل کمشنر کراچی بدر جمیل سے ملاقات
مزدوروں کے مسائل سے آگاہ کیا اورکراچی کے دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال
شہر کی خدمت کیلئے جو بھی ہمارا کردار ہو گا اس میں ہم آپ کے ساتھ بھر پور تعاون کریں گے،پی ایس پی ورکرز فیڈریشن نمائندہ وفد
پی ایس پی کے نمائندہ وفد کی آمد پرشکریہ ادا کی اوراپنی جانب سے بھر پور تعاون کی یقینی دہانی کرائی, منونسپل کمشنر کراچی بدر جمیل

پاک سرزمین پارٹی ورکرز فیڈریشن نمائندہ وفد میں کے ایم سی اولڈ بلڈنگ میں مینونسپل کمشنر کراچی بدر جمیل ملاقات کی۔ ملاقات تقربیاً نصف گھنٹے جاری رہی ہیں جس میں مزدوروں کے مسائل سے آگاہ کیا اورکراچی کے دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔پی ایس پی نمائندہ وفد نے شہر کی خدمت کیلئے جو بھی ہمارا کردار ہو گا اس میں ہم آپ کے ساتھ بھر پور تعاون کریں گے ۔اس مو قع پرنائب صدر سعید احمد،سینئرجوائنٹ سیکریٹری زیشان حبیب،انفارمیشن سیکریٹری جمیل سوداگر اور کے ایم سی صدر سیف میر اور کمیٹی کے اراکین بھی موجود تھے۔ منونسپل کمشنر کراچی بدر جمیل نے پی ایس پی کے نمائندہ وفد کی آمد پرشکریہ ادا کی اوراپنی جانب سے بھر پور تعاون کی یقینی دہانی کرائی ۔

02-Jan-2017

۲۹سابق صدر KATI راشید احمد صدیقی کے بہنوئی محمد ضیا الدین کے انتقال پر پی ایس پی کے چیئر میں سید مصطفی کمال کا اظہار تعزیت
مرحوم کے تمام سو گوار اہل خانہ سے دلی تعزیت ہمدردی کا اظہار

پاک سر زمین پارٹی کے چیئر میں سید مصطفی کمال نے سابق صدر KATI راشید احمد صدیقی کے بہنوئی محمد ضیاالدین کے انتقال پر گہرے دکھ افسوس اظہار کیا ہے۔ا یک تعزیتی بیان میں مرحوم کے تمام سو گوار اہل خانہ سے دلی تعزیت ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں صبر کی تلقین۔ انہوں نے دعا کی اللہ تعالی مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے او سو گوار اہل خانہ کو صبر جمیل عطا کریں امین

02-Jan-2017

۲۹جنوری کو ہونے والا جلسہ پاکستا ن میں ایک نئی تاریخ رقم کریں گاپاکستانی میں بسنے والے تمام اکائیوں کو ایک کرنا سبب بنانے گا ، چیئر مین سید مصطفی کمال
جلسے کے لئے ہمارے نظریاتی پیغام کو گھر گھر اور گلی گلی پہنچانا ہے
ہمیں نفرتیں پیدا نہیں کرنی بلکہ نفرت کرنے والوں کی بات سننی ہے اور انکو گلے لگانا ہے
پاکستان ہاوس میں منعقدہ کراچی کے تمام ڈسٹرکٹ عہدید اران سے خطاب

کراچی ( )پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ 29جنوری کو ہونے والا جلسہ پاکستا ن میں ایک نئی تاریخ رقم کریں گاپاکستانی میں بسنے والے تمام اکائیوں کو ایک کرنا سبب بنانے گا ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں نفرتیں پیدا نہیں کرنی بلکہ نفرت کرنے والوں کی بات سننی ہے اور انکو گلے لگانا ہے اور ہمیں ساری قومیتوں کو اپنا پیغام پہنچانا ہیں اور انہیں اپنے ساتھ لے کر چلانا ہے .ان خیا لات اظہار انہو ں نے پاکستان ہاوس میں منعقدہ کراچی کے تمام ڈسٹرکٹ عہدید اران سے خطاب کر تے ہو ئے کیا۔ اس مو قع پرسی ای سی کرن سلیم تاجک بھی موجود تھے۔انہو ں کہا کہ پوری قوم کی فلاح کیلئے کوشش کریں گے تو اللہ مدد کرے گا، انہوں نے کہا کہ ہمیں صرف بڑے جلسے نہیں کرنے بلکہ معاشرے کو صحیح راہ پر چلانا بھی ہے اور اس کے لے ہمیں سخت محنت ولگن کے اپنی پارٹی کے پیغام کو لوگوں تک پہنچا نا ہے.انہو ں نے حیدرآباد کے کامیاب جلسے پر مبارکباد دیتے ہو ئے کہا کہ29 جنوری کے جلسے کے لئے ہمارے نظریاتی پیغام کو گھر گھر اور گلی گلی پہنچانا ہے اور سب کو 29جنوری کے جلسے میں بھر پور تعداد میں شرکت کرنے کی دعوت دیں ۔ انہو ں نے کہا کہ باغ جناح میں ہماری 31 دن کی پارٹی نے جلسہ کیا، نشتر پارک اس کے سامنے کچھ بھی نہیں اور نام نہاد شہری قیادت نے اپنے چیئرمین، نائب چیئرمین اور کونسلروں سے ایک چھوٹی سی جگہ کو بمشکل بھراہے انہو ں نے تلقین کر تے ہو ئے کہا کہ ذمہ داروں اور کارکنان نے اپنا رویہ اتنا اچھا بنانا ہے کہ لوگ آپ کو دیکھ پی ایس پی کے طرف راغب ہوں۔