NEWS

کراچی ، 30اپریل2017

شہر کے مینڈیٹ کی دعوے دار حکمران جماعت نے ذاتی مفادات کی خاطر عوام کے مینڈیٹ کا سودا کیامصطفی کمال
پی ایس پی کراچی کیلئے آواز لگانے والوں کی حمایت کرتے ہیں،مصطفی کمال
مصطفی کمال نے بلا رنگ و نسل اور فرقہ واریت سے بالا تر ہوکر خدمات انجام دیں، مفتی نعیم
ہم اس ملین مارچ میں سید مصطفی کمال اور ان کی جماعت کی حمایت کرتے ہیں اور کراچی کے تمام علماء سید مصطفی کمال کے ساتھ ہیں، مفتی نعیم
جامع بنوریہ کے متہم مفتی نعیم سے صدر انیس قائم خانی اور وائس چیئرمین وسیم آفتاب کے ہمراہ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو

کراچی ()چیرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی کے مسائل کے حل کیلئے ہم نے جو 16 مطالبات کو تمام علماء کرام، وکلاء، تاجروں اور سول سوسائٹی کے پاس لیکر جائیں گے اور انہیں شرکت کی دعوت دیں گے، میں سب کو دعوت دیتا ہوں شہر کے مسائل کا حل کیلئے ہمارا ساتھ دیں، پاک سرزمین پارٹی کے تاریخی اور منفرد احتجاج کی وجہ سے پاکستان کے چھوٹی اور بڑی سیاسی و مذہبی جماعتیں کراچی کے مسائل پر دھرنا بھی دے رہی ہیں اور جلسے کر رہی ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامع بنوریہ کے متہم مفتی نعیم سے صدر انیس قائم خانی اور وائس چیئرمین وسیم آفتاب کے ہمراہ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، سید مصطفی کمال نے کہا کہ سب سے پہلے مفتی نعیم کو ملین مارچ میں شرکت کی دعوت دینے کیلئے آئے ہیں اور ہم سب مفتی نعیم کے شکر گزار ہیں انہوں نے ہمیشہ ہمارے سر پر شفقت کا ہاتھ رکھا، انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی نے 1 سال سے زاید کی جدوجہد میں کسی کو ایک پتھر تک نہیں مارا، کراچی، پاکستان کے لوگوں کی بھلائی کیلئے ہر فورم پر آواز لگائیں گے، ہمارے آنے سے قبل اردو بولنے والوں کی ایک جماعت تھی جو کہ گزشتہ ادوار میں حکومت میں شامل رہی ہے لیکن آج ہمارے شہر کے لوگوں کے مسائل جوں کے توں ہیں، پینے کے صاف پانی، بجلی، گیس، معیاری تعلیم و ٹرانسپورٹ اور نوجوانوں کیلئے روزگار میسر نہیں، انہوں نے کہا کہ شہر کے مینڈیٹ کی دعوے دار حکمران جماعت نے ذاتی مفادات کی خاطر عوام کے مینڈیٹ کا سودا کیا اس شہر کے لوگوں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا گیا پیپلز پارٹی کو تمام چیزوں پر قبضہ کر کیلئے چھوٹ دی گئی اور وہی جماعت اسی پیپلزپارٹی سے اختیارات مانگ رہی ہے، انہوں نے کہا کہ ہمارے 8 مطالبات تو مخالف جماعت کے میئر کیلے ہم نے رکھے ہیں، مصطفی کمال اور پی ایس پی کراچی کیلئے آواز لگانے والوں کی حمایت کرتے ہیں، ظلم و جبر کے خلاف آواز نہ لگانے پر جواب اللہ کو دینا ہوگا آیندہ آنے والا وقت کراچی سمیت ملک کے غریب عوام کی فلاح اور بقا کا ہے، قبل ازیں مفتی نعیم نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ جامعہ بنوریہ کیلئے سید مصطفی کمال نے نظامت کے دور میں گراں قدر خدمات انجام دیں ہیں اب جامعہ بنوریہ میں پانی کا مسئلہ نہیں ہوتا، ہزاروں نمازی وضو کرتے نماَر پڑھتے ہیں مصطفی کمال نے بلا رنگ و نسل اور فرقہ واریت سے بالا تر ہوکر خدمات انجام دیں کراچی کو فریق واریت اور قومیتوں کی جنگ میں دھکیلا گیا لیکن مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے اس شہر کے لوگوں میں سے نفرتوں کو نکالا اور بھائی کو بھائی سے ملایا انہوں نے کہا کہ کراچی کے عام عوام کو مسائل سے نجات دلوانے کی جدوجہد کا آغاز کیا ہے اور ہم اس ملین مارچ میں سید مصطفی کمال اور ان کی جماعت کی حمایت کرتے ہیں اور کراچی کے تمام علماء سید مصطفی کمال کے ساتھ ہیں

کراچی ، 1 مئی 2017

پی ایس پی آج کورنگی کراچی میں عوامی طاقت کا مظاہرہ کرے گی۔ رضا ہارون
عوامی اجتماع منعقد کیا جا رہا ہے جس سے چیئرمین مصطفی کمال خطاب کریں گے
١٤مئی کو ملین مارچ کامیاب بنائیں اور مصطفی کمال کا ساتھ دیں
کراچی سمیت پورا سندھ عوامی مسائل کا گڑھ بنا چکا ہے
سندھ حکومت بے حسی کا مظاہرہ کر رہی ہے اور مسائل کے حل میں سنجیدہ نہیں
اندرون سندھ سے آئے طلباء کے وفد سے ملاقات

پاک سرزمین پارٹی کے سیکریٹری جنرل رضا ہارون نے کراچی سمیت سندھ بھر میں عوامی مسائل کی سنگین صورتحال پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سندھ کی نااہلی اور غیرسنجیدہ رویہ کی شدید مذمت کی ہے۔ وہ گزشتہ روز پاکستان ہاؤس میں اندرون سندھ سے آئے ہوئے طلباء کے وفد سے ملاقات کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ پی ایس پی اور اس کی مرکزی قیادت کا فلسفہ عام آدمی کے مسائل کے حل کیلئے آواز بلند کرنا اور حکومت کو مجبور کرنا کہ وہ اپنا آئینی اور قانونی کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی نے 18 روز دن رات کڑی تپتی دھوپ میں کراچی پریس کلب کے سامنے تاریخی دھرنا دے کر ثابت کر دیا کہ ہم عوامی اشوز کیلئے آواز اٹھانے اور ان کے حل میں سنجیدہ ہیں۔ آج پی ایس پی کے کامیاب دھرنے کی بدولت دیگر جماعتیں بھی کراچی کے اشوز پر آواز بلند کرنے پر مجبورہیں جو کہ خوش آئند بات ہے۔ وفد کے اراکین نے اندرون سندھ ترقیاتی کاموں اور بلدیاتی امور میں شدید عوامی پریشانی کا تذکرہ کیا اور بتایا کہ وہاں بھی عوام موجودہ حکومت کی کارکردگی سے مایوس ہیں اور پی ایس پی کی قیادت کی جانب دیکھ رہے ہیں۔ رضا ہارون نے وفد میں شامل طلبہ کو یقین دلایا کہ پی ایس پی پورے پاکستان کے عوامی مسائل پرحکومت کی توجہ مبذول کروانے کی جدوجہد کر رہی ہے۔
اس موقع پر انہوں نے وفد کے اراکین کو بتایا کہ پرامن احتجاج کا پہلا مرحلہ ختم ہونے کے بعد چئیرمین مصطفی کمال نے دوسرے مرحلے میں ’’ملین مارچ‘‘ کا اعلان کیا ہے جو 14 مئی بروز اتوار شارع فیصل سے شروع ہو گا اور اس سلسلہ میں عوامی رابطہ مہم کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ پی ایس پی کا پہلا علاقائی عوامی اجتماع لیاقت آاباد میں کیا گیا جس میں بڑی تعداد میں علاقہ کے لوگوں نے شرکت کر کے پی ایس پی اور چئیرمین کو اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔ آج اسی عوامی مہم کا دوسرا بڑا اجتماع کورنگی نمبر ڈھائی پر رات 8 بجے منعقد کیا جائے گا جس سے چئیرمین مصطفی کمال خطاب کریں گے۔ رضا ہارون نے عوام سے اپیل کی کہ وہ بڑی تعداد میں اس اجتماع میں شرکت کریں اور اپنا احتجاج ریکارڈ کروائیں۔ مسئلہ بنیادی انسانی حقوق کا ہے۔

 

کراچی ، 30اپریل2017

١٤مئی کو ہونے والی ملین مارچ عوام کے بنیادی حقوق حاصل کرنے میں اہم سنگ میل ثابت ہوگا، انیس قائم خانی ،صدر پی ایس پی
پاک سرزمین پارٹی استحکام پاکستان اور خوشحال عوام کے لےُ وجود میں آئی

پاک سرزمین پارٹی کے صدر انیس قائم خانی نے کہا کہ 14 مئی کو ہونے والی ملین مارچ عوام کے بنیادی حقوق حاصل کرنے میں اہم سنگ میل ثابت ہوگا اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے کراچی کے عوامی آج تک جنہیں حقوقِ دلوانے والا سمجھ رہے تھے انہوں نے دھوکہ دیا، پاک سرزمین پارٹی استحکام پاکستان اور خوشحال عوام کے لےُ وجود میں آئی ہے اور ہم کراچی شہر کے عوام کو کسی صورت تنہا بے بس و لاچار نہیں چھوڑیں گے.انہوں نے کہا کہ ہم اس شہر کے عوام کے بنیاد حقوقِ حاصل اور مسائل کو انکے گھر کے سروازے پر حل کروانے کی جدوجہد کررہے ہیں کراچی کے تمام افراد پاک سرزمین پارٹی کی آواز ہر لبیک کہتے ہوئے ہمارے کاروان میں شامل ہوکر حقوق کے حصول اور ان کے تحفظ کی جدوجہد کو کامیابی سے ہمکنار کروانے میں ہمارے قدم سے قدم ملا کر چلیں گے انہوں نے کہا کہ ہماری احتجاجی مہم کا دوسرا مرحلہ شروع ہوگیا ہے اب کارکنان گھر گھر جائیں اور لوگوں کو پاک سر زمین پارٹی کا پیغام پہنچائیں اور 14مئی کو ہونے وال ملین مارچ میں آنے کی دعوت دیں. کراچی کے تمام افراد بلا امتیاز رنگ ونسل زبان مذہب اپنے بنیادی حقوق اور اپنی آنے والی نسلوں کے روشن مستقبل کیلئے اس ملین مارچ میں بھر پور تعداد میں شرکت 249 کراچی کو حقیقی معنی میں عروس البعلاد بنا نے میں اپنا کردار ادا کریں کراچی کی ترقی کراچی میں رہنے والے ہر فرد کی ترقی کو یقینی بنانے کی جدوجہد میں اپنا کردار ادا کریں

============

ڈسٹرکٹ سینٹرل کے مختلف علاقوں میں 20 دن سے پانی کی قلت پرڈاکٹر صغیر احمد کا اظہار تشویش
جوشہرملک کوسب سے زیادہ ریونیو دیتا ہے وہ پانی جیسی بنیادی ضرورت سے محروم ہے

کراچی() پاک سرز مین پارٹی کے سینئر وائس چیئرمین ڈاکٹر صغیر احمد نے ڈسٹرکٹ سینٹرل کے مختلف علاقوں میں 20 دن سے پانی کی قلت پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ جوشہرملک کوسب سے زیادہ ریونیو دیتا ہے وہ پانی جیسی بنیادی ضرورت سے محروم ہے انہوں نے کہا کہ شہر قائد کے مختلف علاقوں میں پانی نایاب ہوگیا اور کئی علاقوں میں تو مہینوں سے پانی کی فراہمی معطل ہے اورشہری مجبوراً مہنگے داموں واٹرٹینکر ڈلانے پر مجبور ہیں جس کے بعد شہر بھر میں ٹینکر مافیا کی چاندی ہوگئی ہے اور شدید گم و غصے پایا جارہا ہیانہوں نے کہا کہ عوام کے بنیادی حقوق کے لیے ہم نے سولہ نکاتی مطالبہ کیا ہے جس کے لئے ہم نے تاریخی 18دنوں کا دھرناہ دیاہے اس کی پہلا مطالبہ پانی کے حوالے سے ہی ہے اور ہمار ا یہ مطالبہ ہے کہ فی الفور K4 فیز ٹو کا اعلان کیا جاےُ اور 1200 ملین گیلن پانی کا کوٹہ کراچی کے لےُ منظور کیا جاےُ k4 فیز ون کے ساتھk4 فیز 2 پر کام شروع کیا جائے۔انہوں نے حکومت سندھ اور شہری حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ڈسٹرکٹ سینٹرل کے مختلف علاقوں میں پانی کی قلت کا نوٹس لے اور پانی کی فراہمی کو پورے کراچی میں یقینی بناےُ انہوں نے کہا کہ عنقریب عوام سندھ حکومت اور بلدیاتی نمائندوں کا احتساب کریں گے اور انکا کراچی شہر میں حکومت کرنے کا نااممکن بنادیں گے

============

میر پور خاص میں کار اور موٹرسائیکل کے تصاد م کے نتیجے میں میٹرک کے طالب علم نعمان میمن کی شہادت

اور نور عباس کے زخمی ہونے پرافسوس کا اظہار ۔ انیس ایڈوکیٹ

وزیر اعلی سندھ ، امتحانی مراکز کو شہر سے باہر 10کلو میٹر دور قائم کرنے کا نوٹس لیں، سینئر وائس چیئر مین پاک سر زمین پارٹی

() پاک سرزمین پارٹی کے سینئر وائس چیئرمین انیس ایڈوکیٹ نے میر پور خاص میں کار اور موٹرسائیکل کے تصاد م کے نتیجے میں میٹرک کے ایک طالب علم نعمان میمن کی شہادت اور ایک طالب علم نور عباس کے زخمی ہونے پر افسوس کا اظہار کر تے ہوئے وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ سے مطالبہ کیا کہ وہ امتحانی مراکز کو شہر سے باہر 10کلو میٹر دور قائم کرنے اور والدین کے مسلسل جاری احتجاج کے باوجود بھی متعلقہ افسران کی جانب سے کوئی ایکشن نہ لینے کا نوٹس لیں اور زخمی طالب علم کو بہترین طبی سہولیات کی فراہمی یقینی بنائیں . انہوں نے جاں بحق ہونے والے طالب علم نعمان میمن کے اہل خانہ سے دلی تعزیت و ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے بلند درجات ، لواحقین کے لئے صبر جمیل اورزخمی ہونے والے طالب علم نور عباس کی جلد و مکمل صحت یابی کیلئے دعا کی

کراچی ، 28اپریل2017

١٤مئی ہونے والے ملین مارچ کا دن دس لاکھ اس شہر میں نکلیں گے، ڈاکٹر صغیر احمد
١٤مئی کو عوام جو فیصلہ دیں گے اور پرامن اور جمہوری طریقے سے احتجاج کریں گے، رضا ہارون
١٤مئی کو مصطفی کمال کے ملین مارچ کیلئے عوام کو نکلنا ہوگا اپنے لیے جدوجہد کرنا ہوگی،وسیم آفتاب
مصطفی کمال کی شکل میں ایک آخری موقع ہمیں قدرت نے دیا ہے، آؤ اس نوجوان کا ساتھ دو، آصف حسنین
لیاقت آباد سیاسی طور پر تاریخی جگہ ہے، یہاں سے شروع ہونے والی تحریک پاکستان بھر میں جائے گی ، صوفیہ شاہ

پاک سرزمین پارٹی کے سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر احمد نے کہاکہ14مئی ہونے والے ملین مارچ کا دن دس لاکھ اس شہر میں نکلیں گے تو پورے پاکستان کی بقا کی جنگ لڑیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ڈسٹرکٹ سینٹرل کے عوام نے اس پنڈال کو بھر کر ہمارے ملین مارچ کیلئے قبل از وقت فیصلہ دیدیاْ اورآج لیاقت آباد لے عوام نے نوشتہ دیوار لکھ دیا ہے، ان خیالات اظہار انہوں نے 14مئی حوالے سے عوامی رابطہ مہم کے سلسلے مین کارنر میٹنگ کے شرکا سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ الکرم اسکوائر کی بجلی کاٹی گی تو عوامی نمایندے کہاں غائب ہوگئے تھے ،پینے کے صاف پانی، بجلی، گیس،ٹرانسپورٹ اور بلدیاتی حقوق حاصل کرنے کیلئے نکلنا ہوگا انہوں نے کہاکہ قدرت نے ہمیں اپنے لیے آواز اٹھانے کیلے ایک نوجوان رہنما مصطفی کمال عطا کیا ہے اس شہر میں خون کی ہولی کھیلی گئی، لیاقت آباد کے عوام نے اپنے بیٹوں کو قربان کیا ہے اب وہ وقت آن پہنچا ہے کہ نام نہاد سیاسی لیڈران ناکام ریلیاں نکال کر منہ چھپا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اس شہر کے نوجوانوں کو اپنے ایڈمٹ کارڈ لینے کیلئے مظاہرہ کرنا پڑ رہا ہے، سیکریٹری جنرل رضا ہارون نے کہاکہ14 مئی کو عوام جو فیصلہ دیں گے اور پرامن اور جمہوری طریقے سے احتجاج کریں گے الیکشن کیلئے جس طرح عوام جھوٹے سیاست دانوں کو ووٹ دینے کیلئے نکلتے ہیں، ان میں سے دس لاکھ لوگ ہمارے ساتھ نکلیں ہم دس لاکھ لوگوں کے ووٹ سے حکمرانوں سے عوام کے حقوق حاصل کریں گے ملین مارچ میں کراچی ہی نہیں سندھ کے عوام، نفرتوں کو بھلا کو ہمارے کاروان میں شام ہوجائیں قیادت صحیح اور غلط کی آگاہی دیتی ہے ہمیں اس موقع سے فائدہ اٹھانا چاہیے انہوں نے کہاکہ کراچی کیلئے جدوجہد کرنے پر لیاقت آباد کے عوام کو سلام پیش کرتا ہوں اورقائد اعظم نے جب پاکستان کیلے جدوجہد کی تو قربانیوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ ہے اس ملک کے عوام کی بدنصیبی ہے کہ ہمیں غاصب، قاتل کرپٹ حکمران ملے انہوں نے کہاکہ ہندوستان میں حقوق نہ ملنے پر ایک الگ وطن کیلئے جدوجہد کا آغاز کیا گیا تھاپاکستان قدرتی وسائل اور بہترین قابل انسانی قوت سے مالا مال ہے لیکن ہماری بدقسمتی ہے کہ ہمیں وہ رہنما نہیں ملے جو اس ملک سے مخلص ہوتے وزیر اعلی بتائیں کس مہذب ملک میں ایسا نظام ہے جہاں ووٹ دینے والا حکمران بنانے والا پینے کا صاف پانی مانگنے کیلئے احتجاج کرتا ہوسیوریج، کچرا، ٹرانسپورٹ جیسے بنیادی وسائل کیلے کئی کئی دن احتجاج کرنا پڑے ہم نے آپ کو وزیر اعظم اور وزیر اعلی بنایا ہے آپ ہم عوام کو جوابدہ ہیں انہوں نے کہاکہ پاکستان کی کوئی سیاسی جماعت ایسی نہیں جو ان کے خلاف آواز بلند کرسکے18 روز مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے تپتی دھوپ اور گرم راتیں فٹ پاتھ ہر عوام کیلے حقوق مانگنے کیلے گزاری ہم نے ووٹ نہیں مانگے اور نہ مانگ رہے ہیں، ہمارا مطالبہ عوام کے وسائل ان تک پہنچانا ہے انہوں نے کہاکہ جمہوریت اور عوام کی بدنصیبی ہے کہ ہم جذباتی ہوکر کسی خاندان کو ووٹ دے دیتے ہیں کبھی قومیت، مسلک اور کبھی کسی نعرے پر عوام کو بے وقوف بنایا جاتا ہے یہ ہمارے ملک کے جمہوریت کی تعریف ہے انہوں نے کہاکہ مراد علی شاہ پورے سندھ کے وزیر اعلی ہیں صرف لاڑکانہ کے نہیں اگر آپ کے سمجھ میں ہمارے بات آتی تو ہمارے 16 مطالبات ہر عملدرآمد ہوجاتا اورعوام کو ہلکا لینا چھوڑ دو، یہ لاوارث نہیں ہیں، گاؤں گوٹھ کی رعایا مت سمجھو چیئر مین وسیم آفتاب نے کہاکہ قائد اعظم کے پاکستان کی حفاظت کرنی ہے او اس کا بیٹرا سید مصطفی کمال نے اٹھایا ہے انہوں نے کہاکہ مصطفی کمال کے احتجاجی دھرنے کے بعد کراچی کے لوگ جگا چکا ہے اور کراچی کے لوگ بیدار ہو گئے ہیں کیونکہ پاکستان کی کوئی شہ رگ ہے وہ کراچی ہے ، کراچی منی پاکستانی ہے جس میں ہر مذہب ، مسالک، ہر زبان بولنے والے اباد ہیں ، انہوں نے کہاکہ کراچی کے چلنے سے پاکستان کا دل دھڑکتا ہے اور کراچی بیدار ہو تے ہیں پاکستان بیدار ہے ۔انہوں نے کہاکہ مہاجر نام پر ووٹ لینے والوں نے شہر کو کچرا، گندے پانی کے جوہڑوں اور بد حال سڑکوں میں تبدیل کردیا اور مہاجر قوم کو را کا ایجنٹ اور نوجوانوں کو کانا لنگڑا اور پہاڑی بنا دیا انہوں نے کہاکہ محب وطن لوگوں کو بدنام کر دیا گیا، اسی قوم سے عبدالقدیر خان جیسے عظیم بیٹوں نے پاکستان کی نام روشن کیا اور 14 مئی کو مصطفی کمال کے ملین مارچ کیلئے عوام کو نکلنا ہوگا اپنے لیے جدوجہد کرنا ہوگینیشنل کونسل کے رکن صوفیہ شاہ نے کہاکہ لیاقت آباد سیاسی طور پر تاریخی جگہ ہے، یہاں سے شروع ہونے والی تحریک پاکستان بھر میں جائے گی انہوں نے کہاکہ پاکستان میں کئی ادوار میں لوگ آتے رہے لیکن نمائشی نعروں اور زبانی جمع خرچ پر اکتفا کیا گیا اورصوبائی و وفاقی حکومت نے عوام کو ان کے حقوق سے محروم کر کے ملین مارچ کیلئے مجبور کیاکراچی کے ڈیژن کے صدر آصف حسنین نے کہاکہ بانیان پاکستان کی اولادوں نے فرعونوں کے خلاف چلنے والی تحریک میں ہر اول دستہ کا کردار ادا کرنا ہے انہوں نے کہاکہ کراچی کو ایک بار پھر خون میں نہلانے کے خوب دیکھنے والوں اج یہاں پر دیکھوں اس کراچی میں مصطفی کمال تمہارے سامنے کھڑا ہے اور شہر کا پٹھان، پنجابی، سندھی م بلوچی اردو دیگر زبانیں بولنے والوں کا اب خون کی سیاست بند کر روں اب خون کی سیاست نہیں چلے گی۔ انہوں نے مصطفی کمال نے اس کراچی کو امن گہوارہ بنایا ہے ۔انہوں نے کہاکہ نام نہاد مہاجر لیڈر قوم کو لڑوانے کی کوشش کر رہے ہیں عامر خان کی مہاجر نوجوانوں کو خون میں نہلانے والی تصویر کو لوگ اچھی طرح جانتے ہیں فاروق ستار نے پیپلز پارٹی کو مضبوط کیا، زرداری کو سہارا دیا اور آج قوم کو اختیارات کے نہ ہونے کا بہانا بنا کر بے وقوف بنا رہے ہیں اور کراچی کے عوام فاروق ستار اینڈ کمپنی کا مسترد کر چکے ہیں اورقوم کو اندھیروں میں دھکیلنے والے خیر خواہ نہیں ہوسکتے انہوں نے کہاکہ آج کراچی کا بیٹا مصطفی کمال اس شہر کے لوگوں کر آپس میں جوڑنے میں کامیاب ہوگیا ہے اس شہر میں امن و امان کا بول بالا ہے، قوم پرستی اور فرقہ واریت کا خاتمہ ہو چلا ہے اورمصطفی کمال کی شکل میں ایک آخری موقع ہمیں قدرت نے دیا ہے، آؤ اس نوجوان کا ساتھ دو اور 14مئی کو ہونے والے ملین مارچ میں بھر پور تعداد میں شرکت کریں

 

پاک سر زمین پارٹی کے 14مئی کو ہونے والے ملین مارچ کے حوالے سے پی ایس پی کارنر مٹینگ اور عوامی رابطہ مہم کا با قاعدہ آغاز

کراچی ()پاک سر زمین پارٹی کے 14مئی کو ہونے والے ملین مارچ کے حوالے سے پی ایس پی کارنر مٹینگ اور عوامی رابطہ مہم کا با قاعدہ آغاز کر دیا ہے اور ا س سلسلے میں پی ایس پی کے تحت عوامی رابطہ مہم کے لئے ڈسٹرکٹ سینٹرل لیاقت آباد الکرام اسکوائر کارنر میٹنگ کا منعقد کی گئی جس میں پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی، سیکریٹری جنرل رضا ہارون، سینئروائس چیئر مین ڈاکٹر صغیراحمد، وائس چیئر مین وسیم آفتاب، سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی، نیشنل کونسل کے اراکین بھی موجود تھے۔ اس مو قع پرماؤں، بہنوں، بچے ، بزرگ اور نوجوانوں کی بہت بڑی تعداد میں موجو د تھے اور پنڈال میں رش کی وجہ سے الکرم اسکوائر کے رہائشی فلیٹس کی کھڑکیوں میں ہو کر مصطفی کمال کا خطاب سنا او ر خوش آمدید کہا، پنڈال میں چاروں طرف پاکستان کے قومی جھنڈوں سے سجا دیا گیا تھا جس کی وجہ پنڈال خوبصورت منظر پیش کررہاہے ۔پنڈال میں جب مصطفی کمال کی آمد ہوئی تو شرکاء نے پرتپاک استقبال کیا ہے۔

کراچی ، 28اپریل2017

بھارتی سیکیورٹی اداروں کے ہاتھوں آسیہ اندارابی کی گرفتاری پر سید مصطفی کمال کا اظہار مزمت
بھارت اپنے ظلم وجبر سے کشمیر کی آزادی کی تحریک کو ختم نہیں کرسکتا,مصطفی کمال

کراچی () چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال کی بھارتی سیکیورٹی اداروں کے ہاتھوں آسیہ اندارابی کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیر کی آزادی کی جدوجہد کو دبانے میں ناکام ہوچکا ہے او اپنے ظلم وجبر سے کشمیر کی آزادی کی تحریک کو ختم نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہاکہ پوری پاکستانی قوم کشمیر کے بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے اورپاک سرزمین پارٹی ہر فورم پرکشمیر بھائیوں کے لیے آواز بلند کرتی رہے گی۔
========۔==

عوامی نمائندوں کی جانب سے اپنے عوام کے ساتھ ناروا سلوک انتہائی افسوس ناک ہے، ڈاکٹر صغیر احمد
سرکاری ملازمین کی کوارٹر سے جبری بے دخل کیا جانا ان کے ساتھ سراسر نا انصافی ہے، سینئر وائس چیئرمین پی ایس پی
سیلنگ رینٹ سمیت تمام اضافی چارجز کو فی الفور واپس لیا جائے، مظاہرین کا مطالبہ

کراچی….تین ہٹی پر متاثیرین سرکاری کواٹرز ایکشن کمیٹی نے انصاف نہ ملنے اور کوارٹر سے جبری بے دخلی پر عوامی نمائندوں اور ایک سیاسی جماعت کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے، اس موقع پر پاک سرزمین پارٹی کے سینئر وائس چیئرمین ڈاکٹر صغیر احمد، وائس چیئرمین وسیم آفتاب اور آصف حسنین بھی ان کے ہمراہ موجود تھے، ڈاکٹر صغیر نے اسے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوامی نمائندوں کی جانب سے اپنے عوام کے ساتھ ناروا سلوک انتہائی افسوس ناک ہے ایسے کسی بھی عمل پر پاک سرزمین پارٹی اپنے عوام کے ساتھ کھڑی ہے اور ان کے ساتھ ہونے والے زیادتیوں پر ہر فورم پر آواز بلند کرے گی، متاثرین کا اس موقع پر مزید کہنا تھا کہ سیلنگ رینٹ سمیت تمام اضافی چارجز کو فی الفور واپس لیا جائے اور جو ملازمین کوارٹر میں رہائش پذیر ہیں انہیں مالکانہ حقوق واپس کئیے جائیں، بعدازاں وفاق وزیر ہاؤسنگ اکرم خان درانی کی جانب سے اسلام آباد سے ایک وفد نے پاک سرزمین پارٹی کے رہنماؤں سے ملاقات کی اور کوارٹر کے متاثرین کو مالکانہ حقوق دلوانے کیلئے اقدامات کرنے کی یقین دہانی کرائی جس پر پاک سرزمین پارٹی کے رہنماؤں نے وفاقی وزیر ہاؤسنگ اکرام خان درانی کی جانب سے متاثرین کے مسائل کے حل کیلئے بھیجی جانے والی ٹیم کا شکریہ ادا کیا اور ان کی جانب سے کی جانے والی کوششوں پر اطمنان کا اظہار کیا.

کراچی ، 27اپریل2017

وزیر اعلی سندھ کراچی کے لئے وفاقی سے پانی مانگنے کے بجائے سندھ کے کوٹہ سے فی الفور 1200کیوسک 

 کرا چی کو دیں، رضاہارون
موجودہ حکمران اپنی نااہلیوں کو چھپانے کیلئے کراچی کے رہنے والوں کے ساتھ زیادتی کررہے ہیں،رضاہارون
کراچی کو ملنے والا موجودہ پانی سندھ کے تمام پانی کا 1.5فیصد ہے جبکہ کراچی کی آبادی سندھ کی نصف آبادی سے بھی زیادہ ہے
سندھ کے رہنے والے سندھی بھائیوں کو کراچی کو پانی دینے میں کوئی اعتراض نہیں ہے
چیف منسٹر کا حالیہ بیان جاگیردار آنہ، وڈیرانہ سوچ کی عکاسی کرتا ہے ، رضاہارون، سیکریٹری جنرل

کراچی () پاک سرزمین پارٹی کے سیکریٹری جنرل رضا ہارون نے چیف منسٹر کے حالیہ بیان کو مسترد کرتے ہوئے حکومت سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کراچی کے لئے 1200کیوسک 650mgd) (پانی وفاق سے مانگنے کے بجائے سندھ کے کوٹہ سے دیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ کووفاق سے روزانہ (36370 mgd)ملتا ہے اور سندھ سے کراچی کو ملنے والا پانی صرف 550mgdہے، جبکہ کراچی کی آبادی سندھ کی نصف آبادی سے زیادہ ہے ، کراچی میں پاکستان کی تمام رنگ و نسل اور زبان بولنے والے پاکستانی بھائی رہتے ہیں لہذا حکومت سندھ پانی کے جائز مطالبے کو ایشو نہ بنائے ۔ چیف منسٹر کا حالیہ بیان جاگیردار انہ، وڈیرانہ سوچ کی عکاسی کرتا ہے . انہوں نے کہا کہ سندھ کے رہنے والے سندھی بھائیوں کو کراچی کو پانی دینے میں کوئی اعتراض نہیں ہے لیکن موجودہ حکمران اپنی نااہلیوں کو چھپانے کیلئے کراچی کے رہنے والوں کے ساتھ زیادتی کررہے ہیں ہم موجودہ حکومت سے مطالبہ کر تے ہیں کہ وہ فی الفور کراچی کو اس کے پانی کا جائز کوٹہ مہیا کرے۔ ہمارا سولہ نکاتی مطالبہ جس کے لئے ہم نے تاریخی 18دنوں کا دھرناہ دیاہے اس کا پہلا مطالبہ پانی کے حوالے سے ہی ہے اور ہمار ا یہ مطالبہ ہے کہ فی الفور K4 فیز ٹو 250ملین گیلن پانی کی ایک نئی لائن کا کام k4 فیز ون کے ساتھ شروع کیا جائے ۔

 

کراچی ، 26اپریل2017

کشمیرکے مسئلے کو عالمی سطح پراجا گرکرنا وقت کی اہم ضرروت ہے، مصطفی کمال
بھارت پاکستان کے پانی پر قبضہ کرکے سندھ طاس معاہدہ کی مسلسل خلاف ورزی کررہا ہے، مصطفی کمال
تحریک آزادی کشمیر کی آواز بلند کرنے پر تمام کشمیری پاک سرزمین پارٹی اور مصطفی کمال کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔سردار عتیق احمد سابق آزاد کشمیر وزیر اعظم

کراچی ( )پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سیدمصطفی کمال نے کہاکہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی بڑھتی ہوئی جارحیت اور آزاد کشمیر میں آبادیوں پرحملے انتہائی تشویشناک ہیں اور پی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ کشمیرکا مسئلہ کشمیر ی عوام کی امنگوں کے مطابق حل کیا جائے پاک سرزمین پارٹی دنیا بھر میں ہر فورم پر کشمیریوں پر ہونے مظالم کو اجا گر کرے گی۔ان خیالات اظہار انہو ں نے سابق آزاد کشمیرکے وزیر اعظم اور آل پاکستان مسلم کانفرنس کے سربراہ عتیق احمد کی پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی سیکریٹریٹ پاکستان ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کیا۔ اس مو قع پر پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی، سیکریٹری جنرل رضا ہاورن، سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر احمد، سینٹرل کبنٹ کے دیگر رہنماء بھی موجود تھے۔ سید مصطفی کمال نے مزید کہاکہ پاک سرزمین پارٹی آزاد و جموں کشمیر کے عوام کے ساتھ ہے۔ کشمیر یوں کے مسائل کو عالمی سطح پراجا گرکرنا وقت کی اہم ضرروت سمجھتی ہے لیکن بد قسمتی سے موجودہ حکومت اس سلسلے میں ٹھوس اقدامات کرنے سے قاصرہے جبکہ بھارت کی آبی و سرحدی جارحیت روز بروز بڑھتی ہی جارہی ہے۔ا نہوں نے کہاکہبھارت پاکستان کے پانی پر قبضہ کرکے سندھ طاس معاہدہ کی مسلسل خلاف ورزی کررہا ہے پاکستان کے پانی کوروک کر بھارٹ نئے نئے ڈیم بنانا رہاہے اورہماری حکومت اس مسئلے کو اجاگر کرنے کے بجائے اس پر خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ اس موقع پرسرسردار عتیق احمد خان نے کشمیری عوام کے لےئے مصطفی کمال اور ان کی جماعت کے موقف پر شکریہ ادا کر تے ہوئے کہاکہ پاک سرزمین پارٹی برطانیہ میں ایک مقبول اور بڑی پارٹی بن کر ابھری رہی ہے اور برطانیہ میں مقیم پاکستانی اور کشمیری اس میں جو ق در جوق شامل ہورہے ہیں ہم امید کر تے ہیں کہ برطانیہ میں مقیم کشمیری آزادی کیلئے جو جدوجہد کررہے ہیں پاک سرزمین پارٹی کشمیریوں کے اس جدوجہد میں ان کی معاون و مد گار ثابت ہو گی۔

کراچی ، 25اپریل2017

١٤ مئی کو حکمرانوں کے محلوں کی طرف مارچ کرکے عوام کے بنیادی حقو ق حاصل کریں گے۔ رضا ہارون

حکمران اس وقت اس غلط فہمی میں نہ رہیں کہ یہ قوم سوتی رہے گی اور ناانصافیوں پر آواز نہیں 
بلند کرے گی۔ سیکریٹری جنرل پاک سر زمین پارٹی

16 عوام کو اب اپنے حقوق اور اپنی آنے والی نسلوں کی بقاء کے لیے آواز حق بلند کرنا ہو گی، 16
نکات پر کسی قسم. کا کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔

 

( )سیکٹری جنرل پی ایس پی رضا ہارون نے کہاکہ پاک سر زمین پارٹی واحد پارٹی ہے جس نے عوام کے بنیاد ی حقوق کے خاطراحتجاج کیا اور 14مئی کو حکمرانوں کے محلوں کی طرف مارچ کرکے عوام کے بنیادی حقو ق حاصل کریں گے۔ پاکستان ہاؤس سے جاری اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ حکمران اس وقت اس غلط فہمی میں نہ رہیں کہ یہ قوم سوتی رہے گی اور ناانصافیوں پر آواز نہیں بلند کرے گی کیونکہ اب یہ قوم بیدار ہو چکی ہے ، عوام کے پاس پاک سر زمین پارٹی کی صورت میں ایک پلیٹ فارم بھی موجود ہے جو عوام کی نمائندہ جماعت ہے. انہوں نے کہا کہ ڈھائی کروڑکی آبادی والے شہر میں دس لاکھ لوگ ہمارے ساتھ چلیں گے تو تمام مسائل حل کروا کر دکھائیں گے، . انہوں نے مزید کہا کہ ہماری احتجاجی مہم کا دوسرا مرحلہ شروع ہوگیا ہے۔ اب کارکنان گھر گھر جائیں گے ، لوگوں کو پاک سر زمین پارٹی کا پیغام پہنچاکر14مئی کو ہونے والی ملین مارچ میں آنے کی دعوت دیں گے کہ عوام کو اب اپنے حقوق اور اپنی آنے والی نسلوں کی بقاء کے لیے آواز حق بلند کرنا ہو گی، انہوں نے کہاکہ پاک سر زمین پارٹی عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے 16 نکات پر کسی قسم. کا کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔

کراچی ، 24اپریل2017

١٤مئی کو حکمرانوں کے محلوں کی جانب ملین مارچ کرنے کا اعلان کرتاہوں، مصطفی کمال
دیگر سیاسی جماعتیں ہمیں دیکھ کر آج سڑکوں پر عوام کے حقوق کی بات کررہے ہیں، مصطفی کمال 
پاک سرزمین پارٹی نے مایوسی کے بتوں کو توڑا ہے اور عوام میں امید کی کرن پیدا کی ہے، سید مصطفی کمال 
غریب جماعت ہیں، ملین مارچ کیلئے ٹرانسپورٹ نہیں دے سکتے، ٹرانسپورٹرز و عوام اپنی گاڑیوں میں عوام کو لے کر مارچ کیلئے آئیں، سید مصطفی کمال 
ہم پاکستان بنانے والوں کی اولادیں ہیں پاکستان زندہ باد کہیں گے اور حکمرانوں کو مردہ باد کہیں گے، سید مصطفی کمال 

 
کراچی( )پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ 14مئی کو حکمرانوں کی محلوں کی طرف مارچ کریں گے،مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی لیے مراعات حاصل کرنے کیلے نہیں اپنے عوام کی آواز بن کر پر امن مارچ کریں گے اپنے عوام کے حذف کیے ہوئے حقوق حاصل کر کے رہیں گے،2.5 کروڑ کراچی کے لوگوں میں سے 10 لاکھ لوگ اس شہر کی سڑکوں پر نکلیں گے تو حکمرانوں کے محلوں تک ان کے قدموں کی آواز گونجے گی، تمام قومیتیں، مسالک، تاجر، وکلا، پولیس سرونٹ، ٹرانسپورٹرز سب ایک ساتھ نکلیں گے، حکمرانوں عوام کے ہاتھوں کو اپنے گریبان تک پہنچنے سے پہلے ان کے حقوق دے دو 18 دنوں میں ثابت ہوا کہ تم تمام حالات کے باوجود حکمران مردہ باد کہ کر اٹھ رہے ہوں ہم پاکستان بنانے والوں کی اولادیں ہیں پاکستان زندہ باد کہیں گے 16 مطالبات زندہ ہیں ان پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا، حکومت سے ڈیل کر کے نہیں اٹھ رہے، 14 مئی کے دن ٹرانسپورٹ نہیں دے سکتے، ٹرانسپورٹرز، عوام اپنی گاڑیوں میں عوام کو لے کر آئیں ہم غریب پارٹی ہیں لیکن جدوجہد اپنے عوام کیلے کر رہے ہے 16مطالبات زندہ ہیں، حکومت سے ڈیل کر نہیں اٹھ رہے،14 مئی کے دن ٹرانسپورٹ نہیں دے سکتے، ٹرانسپورٹرز، عوام اپنی گاڑیوں میں عوام کو لے کر آئیں ہم غریب پارٹی ہیں جدوجہد اپنے عوام کیلے ہی کر رہے ہیں آج پریس کلب سے ریلی کی شکل میں پاکستان ہاؤس جائیں گے اب ہم عوام کے پاس جا کر انہیں ملین مارچ میں شرکت کیلئے دعوت دیں گے ان خیالات اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر لگائے گئے ا حتجاجی کیمپ کے اٹھارویں روز ذمہداران و کارکنان سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ عوام نے ہمیں وقت کے فرعون سے لڑنے کی طاقت دی پاک سرزمین پارٹی کے کارکنان نے دکھا دیا کہ ہم شرپسند نہیں محب وطن ہیں ہم نے کوئی گاڑی نہیں جلائی، کوئی سڑک بلاک نہیں کی اور نہ عوام کو تنگ کیا غریب عوام کے حقوق دلوانے کیلئے ہمارا یہ جہاد جاری رہے گاانہوں نے کہا کہ انہو ں نے کہاکہ ہم کسی کو دیکھ کر نہیں دوسری جماعتیں ہم کو دیکھ کر آج سڑکوں پر ہیں،3 مارچ، 24 اپریل، پکا قلعہ اور 29 جنوری کی تقریر نکال کر دیکھیں، مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کیا بات کرتے رہے ہیں انہوں نے کہاکہ عوام یہ سوچ کر بیٹھ گئے تھے کہ ہمیں اپنے بنیادی وسائل نہیں ملیں گے لیکن پاک سرزمین پارٹی نے مایوسی کے بتوں کو توڑا ہے اور عوام میں امید کی کرن جاگ گئی ہے،18 دنوں میں عوام نے احتجاج آگے بڑھانے کیلئے ہم ہر زور دیا کہ وزیر اعلی اور گورنر ہاؤس پر دھرنا دیں انہون نے کہاکہ ایک ایسی جماعت ہے جو موسم کی شدت برداشت کر رہی ہے اور عوام کے حقوق کی بات کر رہی ہے اپنے مفادات کی ایک بات نہیں کی، صرف عوام کے مسائل کے لیے حکومت کو آواز لگائی ہے انہوں نے کہاکہ لوگوں نے ہم پر نظر رکھی کے شاید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی گھر جاتے ہوں گے لیکن انہوں نے ہمیں اسی فٹ پاتھ پر پایاانہون نے کہاکہ کراچی کے لوگوں تم یاد رکھو کہ ہم سابقہ جماعت کو تمہاری خاطر خیر باد کہا تھاجن کمروں میں بیٹھے تھے وہاں تمہارے حقوق کی بات نہیں ہو رہی تھی ہمیں پارٹی سے نکالا نہیں گیا تھا ہم نے خود اپنے ضمیر کی آواز پر فیصلہ کیا انہوں نے کہاکہ آج کراچی کے وکلاء، تاجروں، سول سوسائٹی اور عوام نے اس احتجاجی کیمپ میں آکر ہمارے احتجاج کی حمایت کی انہون نے کہاکہ کراچی میں گزشتہ تین دہائیوں سے لوگوں نے ایک جماعت کو ووٹ دیے جانوں کا نظرانہ پیش کیا اور نام نہاد وارثوں نے اپنے عوام کے حقوقِ کیلئے کوئی احتجاج نہیں کیا لندن میں بیٹھے شخص کی شناختی کارڈ، پاسپورٹ کیلئے احتجاج کیا گیا انہوں نے کہاکہآج عوام کو پتا چل گیا ہے کہ ان کے مسائل کے حل کیا بات کون کر رہا ہے ہم صرف الطاف حسین کی ایم کیو ایم کو جانتے ہیں شہر کی تمام سیاسی جماعتوں کو پاک سرزمین پارٹی نے عوام کے حقوق کیلئے سڑکوں پر نکلنے ہر مجبور کیاانہوں نے کہاکہ حکومتی ارکان آئے اور ہمارے کچھ مطالبات کو کاغذ ہر تسلیم کیاہمارا جواب تھا کہ اگر کام شروع کیا گیا تو ہم خود اٹھ جائیں گے یہاں بیٹھے رہنے سے ہمارے باتوں پر کان نہیں دھرے جائیں گے انہون نے کہاکہ کارکنان ہمارے آواز ہر چل پڑی گے اور شہر کا نظام درہم برہم کریں گے لیکن ہم نے ایسا نہیں کیا اگر عوام کو لیکر ریڈ زون کراس کروں تو ہمارا احتجاج میڈیا ہر ہوگا، گرفتاریاں، شیلنگ شروع ہوجائے گی اور ہمارے مطالبات پیچھے رہ جائیں گے انہوں نے کہاکہ ہم ایمانداری سے اپنے لوگوں کے حقوق کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں 16 مطالبات میں سے کوئی مطالبہ ایسا نہیں جس سے مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کو فائدہ ہو ہمارا بدترین دشمن اس شہر کے میئر کیلے ہم اختیارات مانگ رہے ہیں، سید مصطفی کمال نے پریس کلب آئے ہوئے تمام بزرگوں، خواتین، وکلاء، تاجروں اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں کی امد کا شکریہ ادا کرتا ہوں، انہوں نے کہاکہ پریس کلب کے ارکان اور میڈیا کے لوگوں کا بہت شکریہ جنہوں نے ہمارے احتجاج کی کوریج کی ہمیں پریس کلب میں سہولیات دیں انہوں نے کہاکہ پریس کلب آئے ہوئے تمام بزرگوں، خواتین، وکلاء، تاجروں اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں کی امد کا شکریہ پریس کلب کے ارکان اور میڈیا کے لوگوں کا بہت شکریہ جنہوں نے ہمارے احتجاج کی کوریج کی ہمیں پریس کلب میں سہولیات دیں.

کراچی ، 24اپریل2017

کراچی کے لوگوں سید مصطفی کمال کے ہاتھ مضبوط کرو اور اس کا ساتھ دو، انیس قائم خانی
پی ایس پی کے قائدین نے اس ملک کی تاریخ کا منفرد احتجاج کر دکھایا ہے اور اس احتجاجی تحریک کو پورے پاکستان میں بڑھایا جائے گا ڈاکٹر صغیر احمد
پاکستان کی سیاست میں پہلی بار ہوا کہ ذاتی مفادات کیلئے نہیں عوامی حقوق کیلئے احتجاج کیا گیا، انیس ایڈوکیٹ
آسمان سے فرشتے نہیں اتریں گے، اپنے حقوق کیلئے خود جدوجہد کرنا ہوگی افتخار رندھاوا
سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے کراچی کے حقوق کیلئے آواز لگائی، اشفاق منگی
فاروق ستار صاحب کو اب کہیں جگہ نہیں ملے گی، کراچی کے دلوں سے آواز آرہی ہے کہ قدم بڑھاؤ مصطفی ہم تمہارے ساتھ ہیں، آصف حسنین

کراچی ()پاک سرزمین پارٹی کے صدر انیس قائم خانی نے کہا ہے کہ جو لوگ مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کو جانتے ہیں وہ یہ جانتے ہیں کہ ہم اپنے عوام کو مایوس نہیں کریں گے،کراچی کے لوگوں سید مصطفی کمال کے ہاتھ مضبوط کرو اور اس کا ساتھ دو ان خیالات اظہار انہوں نے کراچی پر یس کلب کے باہر لگائے گئے ا حتجاجی کیمپ کے سامنے جمع ہونے والے کارکنوں سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔سینئروائس چیئرمین ڈاکٹر صغیر احمد کہاکہ پاک سرزمین پارٹی کے قائدین نے اس ملک کی تاریخ کا منفرد احتجاج کر دکھایا ہے اور اس احتجاجی تحریک کو پورے پاکستان میں بڑھایا جائے گا، حکومتی نمائندوں نے لولی پوپ دینے کی کوشش کی لیکن انہیں معلوم نہیں تھا کہ ہم ایم کیو ایم نہیں ہیں آج حکمرانوں کو پاک سرزمین پارٹی کی وجہ سے صفائی مہم اور سڑکوں کی مرمت یاد آتی ہے اوروفاق سے اختیارات مانگے جا رہے ہیں لیکن جو اختیارات ہیں انہیں نچلی سطح پر منتقل نہیں کیا۔انہوں نے کہاکہ چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی نے اس شہر کے مسائل کیلئے خود احتجاج کیاانہوں نے کہاکہ عوامی کے بنیادی حقوق حذف کرنے والوں کیخلاف پاک سرزمین پارٹی کے قائدین نے مشکل راستہ اختیار کیا اپنے آرام اور سکون کو خیر باد کہہ کر تپتی دھوپ اور رات کو سکون اپنے لوگوں کیلئے فٹ پاتھ پر گزاریں اورعوام کو دھرنے میں شرکت کیلئے اب تک نہیں بلوایا گیا تھا انہون نے کہاکہ کراچی سمیت اندرون سندھ، پنجاب، بلوچستان اور خیبر پختون خواہ سے عوام نے احتجاجی میں آکر اظہار یکجہتی کیا۔ سینئر وائس چیرمین انیس ایڈووکیٹ نے کہاکہ اس شہر میں حکمرانوں کو عوام کے مسائل کے حل کیلئے وائرس میں مبتلا کردیا ہے پیپلزپارٹی اور ایم کیو ایم آج عوام کے مسائل کے حل کیلئے ریلی نکال رہے ہیں انہوں نے کہاکہ کرپٹ مافیا کو عوام کے حقوق کی بات کرنے کا حق نہیں ہے فاروق ستار چھوٹا چیتن کی سیاست دم توڑ رہی ہے اورنواز شریف کی پنجاب اور زرداری کی سیاست سندھ میں دم توڑ رہی ہے یہ کیسی جمہوریت ہے جہاں انسان کو زندگی گزارنے کی سہولیات مہیا نہ کی جائیں انہوں نے کہاکہ پورے ملک میں لوٹ مار ہے، اس ملک کو کھوکھلا کیا جا رہا ہے فوری طور پر درندوں اور رشوت خوروں کو لگام نہیں دی گئی تو یہ ملک کو کھا جائیں گے انہون نے کہاکہ پاکستان کی سیاست میں پہلی بار ہوا کہ زاتی مفادات کیلئے نہیں عوامی حقوق کیلئے احتجاج کیا گیا اور میں پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین و صدر نے جس جرات اور بہادری کا مظاہرہ کیا اس پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں وائس چیئرمین افتخار رندھاوا نے کہاکہ18 دن سے کراچی کے مسائل کیلئے کراچی کے بیٹے مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کا ساتھ دینا ہوگا انہون نے کہاکہ آسمان سے فرشتے نہیں اتریں گے، اپنے حقوق کیلئے خودجدوجہد کرنا ہوگی ہم اشرف المخلوقات ہیں خود سے نکلنا ہوگا کوشش کرنا ہوگی،وائس چیرمین اشفاق منگی نے کہاکہ سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے کراچی کے حقوق کیلئے آواز لگائی اورعوام کیلے بجلی، پانی، گیس اور روزگار کیلئے مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے خود احتجاج کیاانہون نے کہاکہ کراچی کے عوام کی خدمت ایک نوجوان مصطفی کمال نے کی تھی جب مصطفی کمال نے عوام کے ساتھ ہونے والی زیادتی کو دیکھا تو اپنے عوام کیلے واپس آئے انہون نے کہاکہ ایم کیو ایم اور آصف زرداری کا باپ بیٹے کا تعلق ہے کراچی کو بیچنے میں ایم کیو ایم اور اندرون سندھ کو پیپلز پارٹی نے بیچا اور وزیر اعلی اور گورنر عوام کے ملازم ہیں. یہ ان کے باپ کی جاگیر نہیں ہے جو مرضی چاہے کریں،صدر کراچی ڈویژن آصف حسنین نے کہاکہ ارباب اقتدار نے سمجھا تھا کہ سندھ اور کراچی کے لوگ اپنے حقوق کیلئے بولنا بھول چکے ہیں ظلم و زیادتیوں کا باب اب ختم ہونے چلا ہے،انہوں نے کہاکہ فاروق ستار صاحب کو اب کہیں جگہ نہیں ملے گی، کراچی کے دلوں سے آواز آرہی ہے کہ قدم بڑھاؤ مصطفی ہم تمہارے ساتھ ہیں انہوں نے کہاکہ بھٹو صاحب کو کراچی کے عوام نے مسترد کیا تو ان کی حکومت بھی نہیں رہی اگر کراچی کے عوام ڈٹے رہے تو اسلام آباد کے ایوانوں میں لرزہ تاری ہوجائے گا انہوں نے کراچی کے عوام کو شاباش ہے جنہوں نے مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی آواز ہر لبیک کہا کراچی کے عوام کا فیصلہ ہے کہ وہ سچائی کے ساتھ رہیں گے

کراچی ، 23اپریل2017

 پاک سر زمین پارٹی نے پریس کلب کے باہر کارکنان کا اجلاس طلب کر لیا.حکمران غفلت کی نیند سوتے رہے تو عوام کے مسائل ملین مارچ کے ذریعے حل کروائیں گے. مصطفٰی کمال 

پاک سر زمین پارٹی عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے اپنے 16 نکات پر کسی قسم. کا کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی.چیئرمین پاک سرزمین پارٹی 

کراچی(  ) پاک سرزمین پارٹی پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ ہمارے احتجاج کا پہلا مرحلہ مکمل ہو چکا ہے کل بروز اتوار کارکنان کا عظیم الشان اجلاس منعقد کیا جائے گا جس میں کارکنان کو حالات سے مکمل طور پر آگاہ کر کے ان سے آگے کا لائحہ عمل لیا جائے گا،انہوں نے کہا کہ حکمران غفلت کی نیند سوئے ہوئے ہیں اور صرف کرپشن میں مصروف ہیں عوام کے مسائل سے ان. کا کچھ لینا دینا نہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر لگائے ہوئے احتجاجی کیمپ کے اٹھارویں روز میڈیا کے نمائندوں اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا، سید مصطفی کمال نے کارکنان کی جانب سے بڑی تعداد میں احتجاجی مہم میں شرکت پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ عوام کا مسئلہ پینے کا صاف پانی، معیاری تعلیم، اسپتالوں میں دوائیں، شہر کی صفائی، سڑکوں کی تعمیر اور سستی بجلی جیسی بنیادی ضروریات زندگی کا حصول ہے جن کے لئے حکومت بالکل غیر سنجیدہ ہے، کوئی عملی کام نہیں کر رہی اور نہ. ہی ان حالات میں بھی اپنا قبلہ درست کرنا چاہتی ہے. انہوں نے کہا کہ کراچی شہر کے مسائل اب ملین مارچ کے ذریعے حل کروائیں گے، حکمران اس وقت اس غلط فہمی میں ہیں کہ یہ قوم ہمیشہ کی طرح جاگ نہیں سکتی لیکن وہ عوامی طاقت کو نظرانداز کرنے کی غلطی کر رہے ہیں کیونکہ اب عوام کے پاس پاک سر زمین پارٹی کی صورت میں ایک پلیٹ فارم موجود ہے جو عوام کی نمائندہ جماعت ہے. انہوں نے احتجاجی مہم کا پہلے مرحلے کے ختم ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اب کارکنان گھر گھر جائیں اور لوگوں کو پاک سر زمین پارٹی کا پیغام پہنچا کر دعوت دیں اور اپنے حقوق کے لیے آواز بلند کرنے پر آمادہ کریں، پاک سر زمین پارٹی عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے اپنے 16 نکات پر کسی قسم. کا کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی.

کراچی ، 22اپریل2017

پانامہ کچھ بھی نہیں ہزاروں ارب روپے خرچ کر کے 1 ماڈل اسکول یا اسپتال موجود نہیں ، مصطفی کمال
،عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوا تو جابر حکمرانوں سے زیادہ عبرت ناک حشر ہو گا مصطفی کمال
حیدرآباد کے لئے پیکج اور کے الیکٹرک کی غنڈہ گردی کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے، مصطفی کمال کا مطالبہ

کراچی ()پاک سر زمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ پانامہ کچھ بھی نہیں ہزاروں ارب روپے خرچ کر کے 1 ماڈل اسکول یا اسپتال موجود نہیں ،عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوا تو جابر حکمرانوں سے زیادہ عبرت ناک حشر ہو گا،23 اپریل کو کارکنان کا اجلاس طلب کیا ہے اورکارکنان کے سامنے حالات رکھیں گے اور آگے کا لائحہ عمل دیں گے پاک سرزمین پارٹی کی قیادت 16 روز سے دن رات عوام کی خاطر سڑکوں پر موجود رہے. اورعوام سے سوال کرتا ہوں کہ کیا ہمیں وزیراعظم بنانا ہے یا ووٹوں کی گنتی غلط ہو گء ہے دوبارہ گننے ہیں ہم صرف عوام کے مسائل کا پر. امن طریقے سے حل چاہتے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر لگائے ہوئے احتجاجی کیمپ کے سولا ویں روز میڈیا کے نمائندوں اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہاکہ مطالبہ کیا کہ وہ حیدرآباد کے لئے پیکج اور کے الیکٹرک کی غنڈہ گردی کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے ہے انہوں نے کہاکہ میئر کے لئے اختیارات کا مانگ رہے ہیں ہم نے اپنے صبر کا امتحان دے دیا کہ ہم پر امن طریقے اپنے مسائل کا حل چاہتے ہیں اور دنیا اس کی گواہ ہے انہون نے کہاکہ مجھے اندیشہ ہے کہ لوگ اب اپنے بچے خاموشی سے دفن نہیں کریں گے عوام کی جانب سے مسلسل آگے بڑھنے کا کہا جاتا رہا لیکن ہم نے سمجھایا کہ صبر کریں اورپچھلے 17 روز میں علمائے دین اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے ہمارے مطالبات کی حمایت کی انہون نے کہاکہ مسائل عوام کے ہیں جب سڑکوں پہ آئیں تو ہمارے کارکنان کو ٹریفک جام کی وجہ سے گالی دینے کے بجائے ساتھ کھڑے ہوں تمام پولیس اور رینجرز والوں کو بھی دعوت دیتا ہوں کیونکہ یہ احتجاج ان کے بچوں کے لیے بھی ہے انہوں نے حکمرانوں کو تنبیہ کرتا ہوں کہ وقت کے بڑے بڑے فرعونوں سے زیادہ طاقتور نہیں ہم یہاں سے مسائل کے حل کے بغیر نہیں جانے والے حکومتی وفد کی جانب سے 9 نکات پر اتفاق کیا گیا تھا انہوں نے کہاک عمران خان کو یاد دلانا چاہتا ہوں کہ یہ وہی پیپلز پارٹی ہے جس نے سندھ کو تباہ کر رکھا ہے عوام کو سندھ میں پینے کا پانی بھی نہیں مل رہا جن کے ساتھ عمران خان آج مشترکہ مفاد کی خاطر قریب ہوئے انہوں نے ہزاروں ارب کی کرپشن کی ہے انہوں نے کہاکہ عمران خان یاد کریں اس شہر میں 10 لاکھ لوگوں نے انہیں ووٹ دیا آج بھی ایم این ایز اور ایم پی ایز ہیں عمران خان کو کراچی کے لئے اٹھنے والی آواز کا ساتھ دینا چاہیے تھا اورسینکڑوں بچے جو خاموشی سے کرپشن کی وجہ سے دفنا دیئے جاتے ہیں صرف وزیراعظم کو ہٹانے کیلئے ان کے قاتلوں سے ملنا جائز ہے؟ یہ کوئی سیاسی احتجاج نہیں ہم اپنے دشمنوں کے لیے اختیارات مانگ رہے ہیں

پاک سر زمین پارٹی کے احتجاج کو 15 روز مکمل ہوگئے لیکن حکمرانوں کی خاموشی تاحال بر قرار ہے

ایم کیوایم پاکستان کی سندھ تنظیمی کمیٹی کے رکن عسکری جعفری، جوائنٹ زونل انچارج خیرپور رحیم دین جکھرانی دیگر کی پی ایس پی میں شمولیت
پی ایس پی کے عوام کے بنیاد ی مسائل پر آواز بلند کی ہے جو پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ہے، شمولیت اختیار کرنے والے افراد

کراچی () پاک سر زمین پارٹی کے احتجاج کو 15 روز مکمل ہوگئے لیکن حکمرانوں کی خاموشی تاحال بر قرار ہے اور سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کے احتجاجی کیمپ میں کراچی سمیت ملک بھر سے سیاسی جماعتوں کے قائدین جن میں۔ال پاکستان میمن فیڈریشن، جئے سندھ قومی محاذ،سندھ ایجوکیشن ڈویژن،سمیت وفود اور سول سوسائٹی و فنکاروں سمیت عوام کی آمد کا سلسلہ جاری ہے، جو پاک سرزمین پارٹی کے ساتھ اظہار یکجہتی کررہے ہیں اور اپنی جانب سے مکمل تعاون کی یقین دہائی کرائی۔ اس موقع پرعوام جن میں خواتین سمیت پی ایس پی کے کارکنان بڑی بھی موجود ہے۔
اس مو قع پر ایم کیوایم پاکستان کی سندھ تنظیمی کمیٹی کے رکن عسکری جعفری، جوائنٹ زونل انچارج خیرپور رحیم دین جکھرانی،زونل رکن اسد شاہ، مضافاتی آرگنائز کمیٹی کے رکن اعجاز مرزا دیگر ہمراہ پاک سرزمین پارٹی مین شمولیت کا اعلان کر دیاہے ۔ شمولیت اختیار کرنے والوں افراد نے کہاکہ پی ایس پی کے عوام کے بنیاد ی مسائل پر آواز بلند کی ہے جو پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ہے جو اپنی مفادات کے لئے نہیں بلکہ عوام کے خاطر دیا گیاہے جو قا بل ستائش ہے

کراچی ، 21اپریل2017

کراچی ()پاک سرزمین پارٹی کے.صدر انیس قائم خانی. نے کہا کہ ملک کی عوام اپنی بنیادی ضرورتوں سے محروم ہیں قوم کے بچے پانی و خوراک کی عدم دستیابی سے موت کا شکار ہیں اس موقعہ پہ پاک سر زمین پارٹی یہ سمجتی کہ ملک کے لوگوں کاسب اہم مسلہ پانامہ نہیں بلکہ اس کے بنیادی مسائل کا حل ہے جس پر آج تک کسی حکمراں نے توجہ نہیں دی انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاست کا محور عوامی مسائل اور انکا حل کبھی نہیں رہا . 70 سالوں میں آج تک پاکستان کے لوگ اپنے بنیادی آئینی و قانونی حقوق سے محروم ہیں انکو پانی .تعلیم.صحت.روزگار.میسر نہیں اور آج بھی موجودہ حکمراں عوام کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ نہیں .ملک کے ادارے جن کابنیادی کام کرپشن کی روک تھام تھا آج عدالت عظمیٰ نے انکی ناقص کارکردگی پر اپنی مہر ثابت کردی ہے مگر آج بھی نیب سمیت تمام وفاقی اور صوبائی ادارے کر پشن کی روک تھام کی بجاےْ اسکو تحافظ فراہم کررہے ہیں انہوں نے کہا ہم پچھلے 15 دن سے کراچی پریس کلب پر عوامی مسائل کے حل کے لےْ دھرنا دیےْ ہوےْ ہیں اور ہماری پر امن جدوجہد عوام کو ملک کے کرپٹ حکمرانو کے خلاف بیدار کر رہی ہے اور انکو پر امن جدوجہد کے لےْ تیار کر رہی ہے جس کے نتیجے میں عنقریب عوام انکا احتساب کریں گے .انہوں نے کہا کہ ہم عوام کو انکے بنیادی مسائل حل کےْ بغیر چین سے نہیں بیٹھیں گے اور نا ہی حکمرانوں کو بھٹنیں دیں گے

.

کراچی ، 21اپریل2017

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ پاک سرزمین پارٹی نے سیاست کو سیاست برائے مخالفت سے بدل کر عوامی خدمت بنا دیا ہے ہم اپنی بدترین مخالف جماعت کے میئر کے لیے اختیار مانگ رہے ہیں اور تمام جماعتوں کے عوام کے مسائل کیلئے کیے جانے والے احتجاج کو سراہتے ہیں ، اس احتجاج میں ہمارا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں ہے اگر ہماری پچھلی جماعت عوامی فلاح و بہبود کے لئے کام کر رہی ہوتی تو کبھی نہیں چھوڑتے ان خیالات کا اظہار انہوں کراچی پریس کلب کے باہر پندرویں روز احتجاجی کیمپ سے کراچی کے مختلف علاقوں سے آئے ہوئی خواتین و حضرات اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیاانہوں نے کہا کہ عوام کا حق ہے جسے بہتر سمجھیں ووٹ دیں عوام اگر ہمیں ووٹ نہ بھی دیں تو ہمیں فکر نہیں کیونکہ سیاست ہماری روٹی روزی نہیں پاک سرزمین پارٹی پارٹی نے سوئے ہوئے لوگوں کو جگا دیا ہے انہوں نے کہا کہ ہم یہاں فٹ پاتھ پر مچھروں میں بھی آرام سے سو رہے ہیں لیکن حکمرانوں کی محلوں میں بھی نیندیں حرام ہیں اگر دس لاکھ لوگ لے کر سڑکوں پر نکل پڑے تو حقوق لے کر ہی واپس ہوں گے ہمیں میئر کے لئے اختیار چاہیے تاکہ عوام ان سے اپنے مسائل حل کروائیں انہوں نے کہا کہ میں خود احتجاج میں آگے چلوں گا تمام پولیس والے بھی ہمارے ساتھ ہونگے کیونکہ ان کے بچوں کے مستقبل کا بھی سوال ہے انہوں نے کہا کہ کراچی کیٹرانسپورٹرز سے کہتا ہوں ہمارے بتائے ہوئے مقام تک فری ٹرانسپورٹ مہیا کریں ہم کسی کو ووٹ، کھالیں، زکو? اور فطر? مانگنے کے لئے نہیں بلا رہے انہوں نے کہا کہ ہم ایم کیو ایم کی ریلی اورجماعت اسلامی کے احتجاج کی تائید کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد ان 15 روز میں ہم سے جڑ ے، ہماری آواز 15 روز میں پاکستان کے ہر گھر میں پہنچ چکی ہے.

کراچی() پاک سرزمین پارٹی پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ پانامہ کیس کا فیصلہ کچھ بھی ہوتا اس سے عوام کے مسائل حل نہیں ہوتے، حکمران تاریخ کے جابر حکمرانوں سے عبرت حاصل کریں پاکستان میں عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو جائے اور ان کرپٹ حکمرانوں کا انجام بھی ویسا ہی ہو، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر لگائے ہوئے احتجاجی کیمپ کے پندرھویں روز میڈیا کے نمائندوں اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا، سید مصطفی کمال نے کارکنان کی جانب سے بڑی تعداد میں احتجاجی مہم میں شرکت پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ عوام کا مسئلہ پینے کا صاف پانی، معیاری تعلیم، اسپتالوں میں دوائیں، شہر کی صفائی، سڑکوں کی تعمیر اور سستی بجلی جیسی بنیادی ضروریات زندگی کا حصول ہے پانامہ کے فیصلے سے عام عام پر کوئی فرق نہیں پڑ رہا عوام کو ان کے بنیادی حقوق چاہیے . انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس حکمرانوں کے لئے آزادی کا پروانہ نہیں بلکہ لمحہ فکریہ ہے کہ وہ اپنا قبلہ درست کریں اور عوام کے مسائل کے حل کے لیے سنجیدگی سے کام کریں. انہوں نے کہا کہ ڈھائی کروڑ آبادی والے شہر میں دس لاکھ لوگ ہمارے ساتھ چلیں نکلے تو تمام مسائل حل کروا کر دکھائیں گے، حکمران اس وقت اس غلط فہمی میں ہیں کہ یہ قوم ہمیشہ کی طرح جاگ نہیں سکتی لیکن وہ عوامی طاقت کو نظرانداز کرنے کی غلطی کر رہے ہیں کیونکہ اب عوام کے پاس پاک سر زمین پارٹی کی صورت میں ایک پلیٹ فارم موجود ہے جو عوام کی نمائندہ جماعت ہے. انہوں نے مزید کہا کہ ہماری احتجاجی مہم کا پہلا مرحلہ ختم ہو چکا اب کارکنان گھر گھر جائیں اور لوگوں کو پاک سر زمین پارٹی کا پیغام پہنچا کر دعوت دیں اور اپنے حقوق کے لیے آواز بلند کرنے پر آمادہ کریں، پاک سر زمین پارٹی عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے اپنے 16 نکات پر کسی قسم. کا کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی.

کراچی ، 20اپریل2017

10 لاکھ لوگ ہمیں ووٹ دینے کیلئے نہیں اپنے مسائل کے حل کیلئے جمع ہوں، سید مصطفی کمال
پانامہ فیصلے سے کراچی کے کچرے کی صفائی، صاف پانی کی فراہمی اور شہری ادارے صوبائی حکومت سے آزاری نہیں حاصل کر پائیں گے مصطفی کمال
ملک کی صورتحال کوئی بھی احتجاجی مسائل کے حل تک جاری رہے گا اورایک ایک انسان کو زندگی کی سہولیات فراہم کروا کر دم لیں گے
پریس کلب کے باہر پی ایس پی کے تحت شہریوں کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے لگائے گئے احتجاجی کیمپ کے چودویں روز میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو

کراچی ()پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ پانامہ فیصلے سے کراچی کے کچرے کی صفائی، صاف پانی کی فراہمی اور شہری ادارے صوبائی حکومت سے آزاری نہیں حاصل کر پائیں گے، کراچی کے عوام کے بنیادی مسائل حل نہیں ہو جائیں گے،ملک کی صورتحال کوئی بھی احتجاجی مسائل کے حل تک جاری رہے گا اورایک ایک انسان کو زندگی کی سہولیات فراہم کروا کر دم لیں گے،10 لاکھ لوگ ہماری بتائی ہوئی جگہ پر جمع ہوکر ہمیں ووٹ دینے کیلئے نہیں اپنے مسائل کے حل کیلئے جمع ہونگے اور جب ہم جمع ہو کر چلنا شروع کریں گے تو حکمرانوں کو حقوق دینا پڑیں گے ورنہ تمہارے محلوں کا عوام گھیراؤ کریں گے، عوام کی آنکھوں میں امید کی کرن ہمارے آنے سے پیدا ہو چلی ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب کے باہر پی ایس پی کے تحت شہریوں کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے لگائے گئے احتجاجی کیمپ کے چودویں روز میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیاانہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی کی سینٹرل کیبنیٹ کے اجلاس میں پانامہ کیس اور ملک کی صورتحال کے پر تبادلہ خیال کیا گیاانہون نے کہاکہ ساتھیوں ہر گھر تک جاؤ اور عوام کو اپنے حقوق کیلئے نکلنے کیلئے تیار کرو ہم اگلے مرحلے میں داخل ہونے جارہی ہے اور ماؤں بہنوں بزرگوں تیاری کرو ہم بھی تمہارے درمیان ہوں گے اور تمہیں تیار کرنا ہے اورحکومت سندھ کو ہر حال میں ہمارے بات ماننی ہی ہوگی انہوں نے کہاکہ ہم نے امن پسندی اور صبر کر کے اپنی کوششیں کر لی ہیں ہم اپنے گھر نہیں جاتے یہاں ہی صبح و شام بیٹھے ہیں اورحکومت گرانے کی کوشش نہیں کی، صرف حقوق مانگے ہیں انہون نے کہاکہ مصطفی کمال کے پاس پیسے نہیں ہیں، 10 لاکھ لوگوں کو جمع کیلئے ٹرانسپورٹ نہیں دے سکتا لوگوں تم خود سے تیاری کرو، الیکشن میں ووٹ مت دینا لیکن ابھی خدارا اپنے لیے نکلو،مائیں اپنے شیر خوار بچوں کو بھی ساتھ لائیں، ہم جلاؤ گھیراؤ نہیں پر امن جدوجہد کرنے نکل رہے ہیں اور پیپلزپارٹی کو ایم کیو ایم والی عادت پڑی ہوئی ہے انہون نے کہاکہ ایک کال پر بات ماننے والے ہم نہیں ہیں، پیپلز پارٹی عملی اقدامات کرے انہوں نے کہاکہ بے حس حکمران لوگ اپنے عوام کو ہی سہولیات مہیا کرنے میں دلچسپی نہیں رکھتے اور ہم نے اپنے 16 مطالبات میں اپنے عوام کے مسائل کی نشاندہی کر کے اپنی ذمہداری پوری کر دی انہوں نے کہاکہ250 ملین گیلن پانی کی نئی لائین اور شہر کیلئے انفراسٹرکچر مانگ رہے ہیں انہوں نے کہاکہ کراچی کے تمام قومیتوں، مسالک، تاجر برادری، وکلاء، ٹرانسپورٹرز، سول سوسائٹی اور فنکاروں سمیت تمام سیاسی جماعتوں نے ہمارے ساتھ اظہار یکجہتی کیا انہوں نے کہاکہ حکومت مسائل اور اس کے حل کی نشاندہی کے با وجود ٹس سے مس نہیں ہوئی اورحکمران کرنل قذافی سے زیادہ طاقتور نہیں انہوں نے کہاکہ ہمارے مخالف مئیر کراچی کے اختیارات کیلئے آج ہم بات کررہے ہیں اور ان کی جماعت خاموش ہے، تپتی دھوپ اور راتوں کا آرام چھوڑ کر ہم اپنے لوگو کیلئے بیٹھے ہیں، لوگ کہتے ہیں یہاں سے اٹھیں اور حکمرانوں کے محلوں کا گھیراؤ کریں لیکن ہم نے ایسا نہیں کیا، حکومت سندھ اگر چند منصوبے شروع کر کے دکھاتی تو ہم ان کے کام کو سراہتے لیکن انہوں نے ایسا کوئی اقدام نہیں اٹھایا، ہم نے امن پسندی اور صبر کر کے اپنی کوششیں کر لی ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ حکومت گرانے کی کوشش نہیں کی ماؤں بہنوں بزرگوں تیاری کرو ہم بھی تمہارے درمیان ہوں گے اور تمہیں تیار کرنا ہے مصطفی کمال کے پاس پیسے نہیں ہیں، 10 لاکھ لوگوں کو جمع کیلئے ٹرانسپورٹ نہیں دے سکتا لوگوں تم خود سے تیاری کرو، الیکشن میں ووٹ مت دینا لیکن ابھی خدارا اپنے لیے نکلو پیپلزپارٹی کو ایم کیو ایم والی عادت پڑی ہوئی ہے ایک کال پر بات ماننے والے ہم نہیں ہیں، پیپلز پارٹی عملی اقدامات کرے اور عوام کے مینڈیٹ کو انہی کو ڈلیور کرے

کراچی ، 20اپریل2017

مصطفی کمال کو سلیوٹ کرتی ہوں کہ وہ اپنی مخالف جماعت کے مئیر کیلئے بھی اختیارات مانگ رہے ہیں، ناہید خان

کراچی (                    ) پاک سرزمین پارٹی کے احتجاجی کیمپ میں کراچی سمیت ملک بھر سے سیاسی جماعتوں کے قائدین جن میں جمعیت علماء پاکستان،پنجابی پختون اتحاد، کشمیر برادری کے رہنماء سردار غالب، پاکستان قومی یکجہتی کونسل، پاکستان نیشنل ٹول فیکڑی رئٹائرڈ ملازمین کی ایکشن کمیٹی اور پاکستان پیپلزپارٹی ورکرز سمیت وفود اور سول سوسائٹی و فنکاروں سمیت عوام کی آمد کا سلسلہ جاری ہے، جو پاک سرزمین پارٹی کے ساتھ اظہار یکجہتی کررہے ہیں،  پاکستان پیپلزپارٹی ورکرز کے چیئرمین صفدر عباسی اور صدر ناہید خان پی ایس پی کے احتجاجی کیمپ کا دورہ پی ایس پی کے چیئر مین سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی سے ملاقات کی اور اپنی جانب سے مکمل تعاون کی یقین دہائی کرائی ۔ اس مو قع پر میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے ناہید خان نے کہاکہ 16 نکات عوام کی امنگوں کی ترجمانی ہے ہیں اورپاک سرزمین پارٹی کے 16 نکات کی تائید کرتے ہیں سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے پاکستانیوں کے حقوق کی جدوجہد کا آغاز کیا اس پر انہیں خراج تحسین پیش کرتی ہوں۔انہوں نے کہاکہ سب سے زیادہ ریونیو کمانے والے شہر کو تہس نہس کر دیا گیا ہے اوراشرافیہ ملک کو اپنے مفاد کیلئے استعمال کر رہے ہیں، ناہید خان انہون نے کہاکہ ہم ہر اس شخص کے ساتھ چلنے کیلئے تیار ہیں جو پاکستان کے مفادات کی بات کرے، انہوں نے کہاکہ حکومت شرم کرے ایک جماعت صاف پانی کیلے گزشتہ 2 ہفتوں سے احتجاج کر رہی ہے اور کس کے کان پر جوں تک نہیں رینگ رہی، انہون نے کہاکہ سندھ حکومت اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل نہیں کر رہی، سندھ حکومت یا تو رینجرز کو اختیارات دے یا وفاقی حکومت کے آگے سرینڈر کرے، انہون نے کہاکہ مصطفی کمال کو سلیوٹ کرتی ہوں کہ وہ اپنی مخالف جماعت کے مئیر کیلئے بھی اختیارات مانگ رہے ہیں،

کراچی ، 19اپریل2017

Kamal demands CM Sindh immediately restore Rangers’ powers

KARACHI: Pak Sarzameen Party (PSP) chief Mustafa Kamal on Tuesday demanded the government of Sindh to immediately restore the policy powers of the Pakistan Rangers in Karachi.

Addressing media from a protest camp outside the Karachi Press Club, Kamal decried the delaying tactics of the Sindh government in extending the policing powers of the Rangers, which expired on April 15.

He questioned the rationale behind the delay by Sindh government, and warned Chief Minister Murad Ali Shah from playing with the life and security of the people of the city.

“Chief minister should resolve the issue right now today,” he said. “He should not play with the security of the people of the city.”

He asked why the provincial government after every three month, when mandate expires, delays the matter unnecessarily when it itself requested the Rangers to deployed.

“What kind a government, after every three months, comes in confrontation with the Rangers, which it itself called for be deployed,” he said.

He said that Sindh government starts to blackmail the Rangers, when the security situation is biggest issue facing the nation, and starts politics and bargaining over the issue.

 

کراچی ، 19اپریل2017

‘They are playing with Karachi’s security by depriving Rangers of powers’

KARACHI (Dunya News) – Pak Sarzameen Party leader Mustafa Kamal has also expressed his views about the extension of Rangers’ powers within the province.

He let it be known that those who are depriving Rangers of their powers are in fact playing with the security of Karachi.

PSP leader professed this while talking outside the Press Club at party’s sit-in that entered thirteenth day.

Mustafa Kamal let it be known that those who played with police department in the past are now doing politics over the Rangers’ powers.

PSP leader warned that if in case his sixteen demands were not met, Karachi will not remain to be a place where someone could live.

Mustafa Kamal also revealed that his party workers will remain peaceful till the end as they have been nurtured to remain peaceful.

کراچی ، 19اپریل2017

ایسی جمہوری حکومتوں پر لعنت جو عوام کو صاف پانی نہیں دے سکتیں، مصطفی کمال
وطن پرست پرامن طور پر کراچی کے وسائل کے حصول کی جنگ لڑ رہے ہیں، مصطفی کمال
رینجرز کے اختیارات حساس معاملہ ہے اس پر سیاست شرمناک ہے مصطفی کمال
شہر میں ہونے والے کسی بھی واقعے کے ذمہ دار وزیر اعلی سندھ ہونگے، مصطفی کمال

کراچی ( )پاک سر زمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ ایسی جمہوری حکومتوں کو شرم و حیا کرنی چاہیے جو اپنے شہریوں کو پینے کا صاف پانی دینے کے لئے بھی تیار نہیں، کراچی والوں میں تمہارے حقوق کے لئے لڑ رہا ہوں اب تمہیں میرے آواز لگانے پر ایک دن کے لئے نکلنا ہوگا، میرے کارکنان تمہارے پاس آکر تمہیں میرا ساتھ دینے کیلئے آمادہ کریں گے، تمام قومیتوں اور مکاتب فکر کے لوگوں سے کہتا ہوں کہ وہ سیاسی طور پر نہیں لیکن اپنے مسائل کے حل کیلئے خدارا نکلیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا. انہوں نے کہا کہ کراچی کے حقیقی وارث موجود ہیں جو ان کے حقوق کی حصول کے لئے پچھلے تیرہ دنوں سے سڑکوں پر ہیں اگر ہمارے سولہ نقاط نہیں مانے گئے تو خدانخواستہ کراچی رہنے کے قابل شہر نہیں رہے گاانہوں نے کہا کہ میرے کارکنان پرامن طور پر کراچی کے لوگوں کے حصول کی جنگ لڑ رہے ہیں اور آخری دم تک پرامن رہیں گے، جلاؤ گھیراؤ کی سیاست کو ختم کر کے آئے ہیں انہوں نے کہا کہ آج ہم اپنی بدترین دشمن جماعت کے مئیر کیلے حقوق مانگ رہے ہیں اورحکومت کو ہمارے بچوں کے مسائل حل کرنا ہی ہوں گے انہوں نے کہا کہ کچھ دنوں سے رینجرز کے اختیارات پر سیاست کی جارہی جو ایک انتہائی حساس مسئلہ ہے اب رینجرز کو اختیارات نہ دے کر کراچی کے لوگوں کی سیکیورٹی کو داؤ پر لگایا جارہا ہے جنہوں نے سیاسی مداخلت کر کر کے پولیس کے محکمہ کو برباد کیا ہے وہ کچھ لوگ اور کچھ دو کی باتیں کر رہے ہیں انہوں نے کہاکہ میں حکومت سے آج مطالبہ کرتا ہوں کے رینجرز کے اختیارات کا مسئلہ آج ہی حل کیا جائے اگر رینجرز کو اختیارات نہ دینے کی وجہ سے اس شہر میں کوئی بھی واقعہ پیش آیا تو وزیر اعلیٰ سندھ اس کے ذمہ دار ہونگے.

 

کراچی ، 18اپریل2017

PSP may spread its protest beyond sit-in

Karachi – Pakistan Sarzameen Party’s (PSP) protest against the missing civic facilities in the city entered into 12th day on Monday with party chairman Mustafa Kamal and Anees Qaimkhani running affairs from the protest camp.

 

The party is mulling to spread the protest from the current sit-in outside the Karachi Press Club to every nook and corner of the city, and has started an awareness campaign in this regard.

Addressing the party’s Karachi division meeting on Monday, Dr Sagheer Ahmed said that thousands of PSP activists had gathered on the call of Mustafa Kamal and Annes Qaimkhani in order to strive for resolving the issues of the city. He said that it was for the first time that the leadership of a party was itself present in open camps and on roads for the rights of people.

“The situation in the province is so worse that even the prime minister comes here to lash out at the provincial government over the heaps of garbage in the metropolis,” he regretted. Speaking about the strategy for the protest, he said the protestors would not create any problems for the people, saying party’s way of doing politics was quite different from that of other parties.

“It is the PSP and Mustafa Kamal who work for law and order and promotion of brotherhood among different segments of the society,” he said, adding that Kamal was the only one who worked for innocent activists who had gone missing. He said that now people of the city had to decide whether they wanted to change the situation or make comprise with the persistent issues.

“We have to convey message to the people that Mustafa Kamal and Anees Qaimkhani are present in the camps outside the Karachi Press Club for their cause and need their support to press the government for resolving their issues,” he said.

کراچی ، 18اپریل2017

. صرف ۳۰ منٹ کے لئے مصطفی کمال کیلئے نہیں اپنے اور آئندہ آنے والی نسلوں کیلئے ہماری پرامن جدوجہد میں شریک ہوں، مصطفی کمال
پر امن جدوجہد کیلئے ڈھائی کروڑ لوگوں کو نکلنا ہوگا،پی ایس پی چیئر مین مصطفی کمال
مصطفی کمال میٹھی باتیں کر کے عوام کو اپنی جانب نہیں بلارہا، آپ کے مسائل کیلئے دھوپ اور تپش برداشت کر رہا ہوں، مصطفی کمال
انجکشن کی سوئی کی چبھن کو کراچی کے لوگوں کو برداشت کرنا پڑے گاتب ہی مسائل حل ہونگے،مصطفی کمال
فطرہ، زکوۃ، کھالیں مانگنے کیلئے میرے کارکنان آپ کے مسائل حل دینے کیلئے اپ کے پاس آرہے ہیں، مصطفی کمال
میں نے ایمانداری سے آواز لگا دی ہے حکمران یا تو ہمارے حقوق دیں گے یا نیست و نابود ہوجائیں گے، مصطفی کمال

کراچی ( )پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ میں اور میرے ساتھی اختیارات ان لوگوں کیلئے مانگ رہے ہیں جو آج اس پنڈال میں موجود بھی نہیں ہیں کراچی کے عوام خود کو ذہنی طور پر تیار کر لیں 30 منٹ کے لئے مصطفی کمال کے لئے نہیں اپنے اور آئندہ آنے والی نسلوں کیلئے ہمارے بتائے گئے مقام سے چلنا شروع کریں تو حکمرانوں کو ہمارے حقوق دینے پڑ جائیں گے، پرامن جدوجہد کے لئے ڈھائی کروڑ لوگوں کو نکلنا ہوگا، میں اور میرے کارکنان گرفتاری اور شیلنگ سے گھبرانے والے نہیں ہیں،انجکشن کی سوئی کی چبھن کو کراچی کے لوگوں کو برداشت کرنا پڑے گاتب ہی مسائل حل ہونگے، مصطفی کمال انیس قائم خانی چار گھنٹے سڑک جام رکھ سکتے ہیں، لیکن ہمیں منفرد احتجاج کرنا ہے انہوں نے کہاکہ روایتی سیاسی جماعتوں نے جو کیا وہ ہم ہرگز نہیں کریں گے مصطفی کمال میٹھی باتیں کر کے آپ کا اپنی جانب نہیں بلارہا، آپ کے مسائل کیلئے دھوپ اور تپش برداشت کر رہا ہے انہوں نے کہاکہ ظالم اس دنیا میں وہ ہے جو خاموشی سے ظلم سہتا ہے میری کامیابی ہے کہ میں نے ایمانداری سے آواز لگا دی ہے حکمرانوں یا تو ہمارے حقوق دیں گے یا نیست و نابود ہوجائیں گے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب پر احتجاجی کیمپ سے پارٹی کے ذمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ یہ مثال ہے کہ دو لوگوں نے حق و سچ کی آواز لگائی تھی اور آج صرف ذمہ داران سے ہمارا پنڈال بھرا ہوا ہے ایسا سوچا بھی نہیں تھا جو ہمارے رب نے ہمیں مقام دلوادیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ میں اور میرے ساتھی فٹ پاتھ ہر سوتے ہیں، کس کیلئے؟ جائیدادیں لینے کیلئے؟ یا اپنے لیے پروٹوکول اور مراعات لینے کیلئے؟ ہم مصطفی کمال آپ اور آپ کے بچوں کے روشن مستقبل کیلئے بیٹھا ہے تمام قومیتوں اور مسالک کے لوگوں تیار ہوجاؤ، میرے کارکنان تمہارے دروازے پر آئیں گے ان کی بات سنو اور فیصلہ کرو اگر تمام شہر کے لوگوں نے اپنے مستقل کیلئے منزل کو تعین کرلیا تو پھر ہمارے مسائل حل ہو کر رہیں گے، انہوں نے کہاکہ جو لوگ دو پٹی کی چپل میں آتے تھے آج انکے شادی حال گرائے جار ہے ہیں ایسے لوگ کس طرح کے الیکٹرک سے 100 ارب روپے کراچی کے عوام کو دلوائیں گے وہ تو کے عوام کے بنیادی مسائل تک حل نہیں کر سکتے جواب اپنے قائد کے تحفظ کیلئے عوام کو سڑکوں پر جمع کرتے رہے ہیں انہوں نے کہاکہ سید مصطفی کمال سے سوال ہوگا کہ لوگوں کیلے آواز کیوں نہی لگائی، خاموشیوں کو توڑو اور میرے ہاتھ مضبوط کرو انہوں نے کہاکہ فطرہ، زکوۃ اور کھالیں مانگنے کیلئے نہیں، جلاؤ گھیراؤ کیلے نہیں آپ عوام کے مسائل کا حل کیلئے نکلے ہیں میرے ساتھی آپ کو دعوت دینے کیلئے آئیں گے کہ ہم نے آپ کے مسائل کا حل ڈھونڈ لیا ہے انہوں نے کہاکہ کراچی کے لوگوں کو بتانا ہے کہ ہم کامیاب ہو چکے ہیں ظلم جبر، سفاکیت اور معاشرے کے فرعونوں کے سامنے ڈٹ کو کھڑا ہونا ہی ہماری کامیابی ہے، انہوں نے کہاکہ41 فیصد شہر میں صاف پانی کی ترسیل کا نظام موجود نہیں ہے کراچی کے اسپتالوں میں دیگر صوبوں سے لوگ علاج کروانے کیلئے آتے تھے لیکن آج اسپتال کو حال خراب ہے، آئین کے مطابق ریاست کی ذمہ داری بچوں کی تعلیم، صحت اور روزگار مہیا کرنا ہے، قرآن پر حلف اٹھانے والے اپنے عوام کیلے ہی کچھ نہیں کر رہے۔ انہوں نے کہاکہ7000 سے زائد گھوسٹ اسکول ہیں جن کا ہر مہینے کا خرچ بجٹ سے جاتا ہے 900 ارب خرچ ہوچکے، 9 ماڈل اسکول اور اسپتال تک نہیں بنا سکے، انہوں نے مزید کہا کہ حکمرانوں نے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے کراچی شہر کے اداروں کو حکومت سندھ کے حوالے کر دیا گیااس شہر کی نمایندہ جماعت نے پہلے ادارے کی حوالگی ہر احتجاج کیوں نہیں کیا؟، اس سلسلے پر آنکھ بند کیوں کی، انہوں نے کہاکہ صوبے کے وزیر اعلی نے کچرا ٹھکانے لگانے والے ادارے کو ایک ڈی جی لگا کر اپنے انڈر میں لے لیا ہے ماسٹر پلان کی وجہ سے بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی پر مانیٹرنگ تھی اسے بھی ماتحت کر دیا گیا،،کے ڈی اے صوبائی حکومت کے پاس ہے وزیر اعلی کو صفائی کا شوق ہے تو وہ یو سی ناظم بن جائیں اوراین ایف سی ایوارڈ کی رقم وزیر اعلی کو پرونشل فنانس کمیشن بنا کر اسے شہروں میں ایوارڈ کیا جاتا۔انہوں نے کہاکہ طلبہ، طالبات، پروفیسر، وکلاء،پولیس، رینجرز،فنکار، کھلاڑی سمیت تمام شعبوں کو دعوت دیتا ہوں کہ آؤ اور آکر میرے ساتھ کھڑے ہو جاؤ مجھے ووٹ مت دینا مگر مسائل کے حل کیلئے کھڑے تو ہوسکتے ہو، ہم نے الطاف حسین کو ایکسپوز کر نے کیلئے کوئی دھرنا نہی دیا قدرت کی لاٹھی بے آواز ہے، آج وہ لوگ اپنا وجود صحیح دکھانے کیلئے ویڈیو سوشل میڈیا پر جاری کرتے ہیں ذمہ داران ہر شہری سے جا کر بات کریں، ہمیں اپنے شہر والوں پر بھروسہ ہے وہ ہماری بات سنیں گے.کریں، ہمیں اپنے شہر والوں پر بھروسہ ہے وہ ہماری بات سنیں گے

کراچی ، 18اپریل2017

پاک سرز مین پارٹی کا کراچی کے مسائل کے حل کے لئے احتجاج کراچی پریس کلب کے باہر بارہویں روز میں داخل
احتجاجی کیمپ مختلف جماعتوں کے رہنماوں نے احتجاج کیمپ کا دورہ اور اظہار یکجہتی
یہ تاریخ میں پہلی بار انوکھا احتجاج ہے جس میں قائدین کھلے آسمان تلے بیٹھ کو عوام کے مسائل کے حل کیلئے موجود ہیں، ڈاکٹر صغیر احمد،
کارکنان مصطفٰی کمال اور انیس قائم خانی کی تحریک کے ہراول دستہ کا کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہو جائیں، آصف حسنین

کراچی ()پاک سرز مین پارٹی کا کراچی کے مسائل کے حل کے لئے احتجاج کراچی پریس کلب کے باہر بارہویں روز میں داخل ہو گئی ہے۔ اس سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کے احتجاجی کیمپ پرپاک مسلم الانیس. انجمن تاجران بولٹن مارکیٹ، آل سٹی تاجر اتحاد کراچی، اولڈ سٹی مارکیٹ الانیس کراچی، لاشاری برادری کا سربراہ سردار دھنی بخش، آل کراچی واٹر ٹینکر ایسوسی ایشن، واٹر بورڈ لیبر یونین انٹر نیشنل ورکرز فیڈریشن آف پاکستان، آئی بی اے کوالیفائیڈ ایکشن کمیٹی کا وفدکی جانب سے احتجاجی کیمپ کا دورہ کیا گیا اور شرکاء سے اظہار یکجہتی کیا۔ اس موقع پرعوام جن میں خواتین سمیت پی ایس پی کے کارکنان بڑی بھی موجود ہے۔
دریں ایں اثناء پاک سرزمین پارٹی کے سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر نے کہاکہ یہ تاریخ میں پہلی بار انوکھا احتجاج ہے جس میں قائدین کھلے آسمان تلے بیٹھ کو عوام کے مسائل کے حل کیلئے موجود ہیں،اس صوبے میں وزیراعظم آکر کچرا نہ اٹھانے پر بازپرس کرتے ہیں، انہوں نے کہاکہ چند قدم پر ریڈ زون ہے لیکن ہم عوام کو پریشانی میں مبتلا نہیں ہونگے ریڈ زون میں مظاہرے ہوتے رہے لیکن پھر مسئلے کو دبا دیاجائے گا ان خیالات اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب پر کراچی ڈویژن کے ذمہ داران سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ آپ تمام ذمہ داران نے عوام تک پاک سرزمین پارٹی کا پیغام پہنچایا ہے، لوگوں کا پریس کلب آکر ہمارے ساتھ اظہار یکجہتی کرنا ذمہداران کی محنت کا نتیجہ ہے انہوں نے کہاکہ پاکستان میں بڑے مسائل اور لیڈروں کی رہائی، جلاوطنی ختم کروانے کیلئے احتجاج اور آواز بلند کی گئی اور تمام راحتوں کو چھوڑ کر چیئرمین پی ایس پی سید مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی یہاں عوام کیلے موجود ہیں، انہوں نے کہاکہ ہم منفرد کام کر رہے ہیں پاک سرزمین پارٹی عوام کو کسی بھی قسم کی پریشانی میں مبتلا نہیں کرے گی ہماری سیاست روایتی سیاسی جماعتوں سے مکمل طور پر الگ ہے امن و امان اور بھائی کو بھائی سے ملانے کا کارنامہ سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے انجام دیا ہے انہوں نے کہاکہ لااپتہ، بے گناہ افراد کیلئے پاک سرزمین پارٹی نے آواز بلند کی ہے اور ہمیں طے کرنا ہے کہ ہمیں اپنے حالات بدلنا ہیں یہ دیگر علاقوں کو عوام کی طرح مسائل سے سمجھوتہ کرنا ہے، انہوں نے کہاکہ 1کلومیٹر کی سڑک بنانے پر لوگ حکمرانوں کو سجدے کرتے ہیں اب آگے کے سفر کا آغاز کرنا ہوگا اورعوام کو یہ پیغام پہنچانا ہے سید مصطفی کمال اور انیس سمیت تمام رہنما گھر نہیں جاتے پریس کلب پر آپ کیلئے موجود ہیں۔انہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے ہمارے احتجاج پر اپنا جو رویہ اختیار کیا ہے وہ عوام کے سامنے ہے ،بلدیاتی ادارے وسائل کا رونہ روتے ہیں عوام کے مسائل کون حل کرے گا؟ مصطفی کمال کی سینیٹر شپ نہیں عوام کیلئے پانی، بجلی، گیس تعلیم و ٹرانسپورٹ مانگ رہے ہیں اور ہمیں وہ کام کر دکھانا ہے جس سے آنے والی نسلوں کا مستقبل بہتر ہو، اس موقع پر صدر کراچی ڈویژن آصف حسنین نے کہاکہ کارکنان مصطفٰی کمال اور انیس قائم خانی کی تحریک کے ہراول دستہ کا کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہو جائیں پی ایس پی کے کارکنان اپنے طور پر علاقوں میں عوامی رابطہ مہم کا آغاز کریں اورکارکنان عوام کو ملین مارچ کے لئے ذہنی طور پر تیار کریں اور حق کا پیغام پہنچائیں انہوں نے کہاکہ کراچی میں ماضی کے حکمران یہ سمجھتے تھے کہ ہم کام کریں یا نہ کریں اقتدار ہمارے پاس ہی رہے گاانہوں نے کہاکہ پی ایس پی کے ذمہ داران ایک میسج پر ہزاروں کی تعداد میں جمع ہو گئے لوگوں کا پی ایس پی سے دل سے جڑنا ہمارے نظریہ کی سچائی کا نتیجہ ہے

کراچی ، 17اپریل2017

Mustafa Kamal announces ‘million march’

KARACHI: Chief of Pak Sarzameen Party (PSP) Syed Mustafa Kamal has announced a ‘million march’ in Karachi for resolution of city’s civic issues.

However, he did not disclose a final date and venue for the protest.

While addressing workers on 11th day of PSP’s protest camp at Karachi Press Club, Syed Mustafa Kamal claimed that a march of ‘ten million’ will be held to press the PPP-led provincial government for resolution of civic issues of the metropolis.

“I’m giving you a call for the sake of your next generations… One million people from the city of 25 million should come out,” he said. – Samaa

کراچی ، 17اپریل2017

PSP will not make political compromises like MQM: Mustafa Kamal

KARACHI: 

 

Taking a jibe at his former party, Pak Sarzameen Party Chairperson Mustafa Kamal said that they were not like the Muttahida Qaumi Movement (MQM). According to him, they will not make political compromises on the basic issues of the people.

“I am not doing any politics here,” he said, addressing the media on Sunday as the sit-in staged by his party outside the Karachi Press Club entered its 11th consecutive day. “I just want that Karachi and its people should be given their due rights.”

He further stated that come what may, his party will never resort to violence in order to get its demand fulfilled. “We have also set a precedent of peaceful protests and we believe that it’s the right way.”

Advertisement

We won’t back down: CM should return municipal depts to local govt

According to Kamal, if one million people in Karachi started walking on a specific street on a specific day on his call, their problems will be resolved within a span of 20 minutes.

The PSP chairperson said the party has all the muscle to come out on the main arteries and stage a demonstration but it would not do so because it will cause traffic jams and nuisance on the roads, affecting people.

Question of 16 demands

Kamal reiterated his stance that he will not leave the streets until work on his 16 demands is initiated by the authorities.

Mentioning the two meetings of his party leaders with the province-ruling Pakistan Peoples Party (PPP) delegations, he said that perhaps the negotiators mistook PSP as the MQM who would retreat from their position on mere verbal assurance. “They [the PPP delegates] marked ticks on eight of our 16 demands and said that they were ready to accept them,” the PSP chief said. “We instead asked them to go back to their chief minister and tell him to start the work first.”

Civic issues: Karachi needs more water, says PSP chief

Interestingly, many of his demands call for empowering the Karachi mayor, a position held by MQM-Pakistan’s Wasim Akhtar at the moment.

“The Karachi Building Control Authority (KBCA) and Master Plan Department should be handed over to the mayor,” he said. “The mayor should also be given the charge of Karachi Water and Sewerage Board (KWSB) and Karachi Development Authority (KDA).”

Kamal further demanded that roads network and hospitals be placed under the city government and that district and union council chairpersons should be transferred resources.

Mustafa Kamal makes 16 demands for Karachi

The PSP chief also demanded that work on the K-IV project should be immediately announced. “Five garbage transfer stations should be established across the city [and] public transport buses should be increased,” he said. “The K-Electric should also return the overbilled amount of more than Rs100 billion [to the residents].”

He further said parks should also be handed over to the city government and the provincial finance commission should be formed immediately while the Road Infrastructure Authority should be devolved. “District cadre system should be formed – punishments should be set to end land-grabbing and Hyderabad should be given a special package,” he further demanded.

 

کراچی ، 17اپریل2017

Workers told to stay put as PSP rethinks protest strategy

Addressing party workers on the 11th day of the sit-in on Sunday, Pak Sarzameen Party (PSP) chief Mustafa Kamal asked party workers to remain patient and wait for the party leadership to announce the next strategy of protest.

The PSP on April 16 kicked off an indefinite protest outside the Karachi Press Club against the Sindh government for keeping the city ‘deprived of its due rights’.

Kamal said that his party did not believe in the politics of violence, adding, that it was the 11th day that party leaders and workers were sitting at the press club calling for Karachi’s people to be given their basic civil rights.

He said the party was fully aware of the government’s insincerity in accepting the 16 points put forward by the PSP. “But we will not leave this place till our last breath,” the party chief claimed.

According to the PSP chief, the party’s protest has been successful as millions of people visited the camp without the party’s invitation.

Having rejected politics of violence, he warned the government that party workers could shut the entire city and lockdown the red zone on a single call.

“The PPP leaders visited us twice but we are fully aware that they are not sincere,” Kamal added.

He said it was unacceptable that the city which generates 70 percent of the country’s revenue does not have enough water or civic facilities.

“It is the 11th day of our protest but it seems that the rulers have not budged; but we will surround their ‘palaces’ to make them listen to our demands.”

Referring to the party’s senior leader Anis Qaim Khani, Kamal said that neither him (Anis Qaim Khani) nor his workers are here to become prime ministers but are at the sit-in only to demand people’s rights.

He reiterated that foreign donors should not give aid to the Sindh government since it was only being used for corruption.

In his address to party workers on the protest’s fourth day, he stated that the Sindh Chief Minister Murad Ali  Shah recalled MQM founder Altaf Hussain but forgot that whenever a protest was lodged against him, former interior minister Rehman Malik  would dash to London to defuse the tension.

He said the party would continue with its protest till the people of Karachi are given their basic civil rights and facilities. “We will not allow those involved in looting and plunder of the city to go scot free.”

Responding to a question over what would the party do for the city if it was unable to supply water to it, Kamal said he had put in place – during his time as city mayor – a 50-year plan for the city but was scrapped by preceding rulers.

As for the under construction K-IV bulk water supply project, the PSP chairman said the project would be unable to provide water to the city. He added that he was ready to supervise a project to lay water supply lines without any expenditure.

کراچی ، 17اپریل2017

PSP ‘considering’ million march to make govt accept demands

KARACHI  –  The Pak Sarzameen Party (PSP) on Sunday decided to stage a million march in the city against non-provision of facilities to Karachiites.

 

The party leadership has asked its cadres to initiate an awareness campaign to motivate the masses to the march.

Although PSP Chairman Mustafa Kamal did not announce any date for the million march, he said while addressing party workers on Sunday that issues of the city could be resolved in 20 minutes if one million people take to the streets on a specific day on his call.

“The PSP has got the muscles to take to the streets and stage a demonstration,” he said.

He said the PSP would not retreat from its 16 demands at any cost and would not repeat the politics of their former party, the Muttahida Qaumi Movement (MQM).

“I am not doing any politics here. I just want that Karachi and its people should be given their due rights,” he said. “We will refrain from violent activities and set a precedent of peaceful protests, as we believe that this is the right way,” he said.

Speaking on negotiations with the government on issues facing the city, Kamal said that PPP’s negotiators wanted them to end their protest on verbal assurances, but they refused to do so and asked them to initiate work on these projects to make them end the protest.

Interestingly, he has also demanded powers for the Karachi mayor, a position held by MQM-Pakistan’s Wasim Akhtar at the moment.

“The Karachi Building Control Authority (KBCA) and Master Plan Department should be handed over to the mayor,” he said, adding that the mayor should be empowered and given charge of the Karachi Water and Sewerage Board (KWSB) and the Karachi Development Authority (KDA).

Kamal demanded that roads and hospitals should be placed under the city government and that district and union council chairpersons should be transferred resources.

The PSP chief also demanded that work on the K-IV project should be initiated immediately.  On Friday, on the ninth day of the protest, several activists and leaders of the party joined the protest camp outside the Karachi Press Club.  Talking to the media, PSP leader Dr Sagheer Ahmed said that they would not end their sit-ins until the government gives assurance about implementing their agenda and starts action on it.

“Our demonstration will continue until the provincial government starts providing facilities to people. It is not only the Sindh government, we have issues with the centre as well,” he said.

The PSP leader said they had staged the sit-in after due consideration and soon they would announce their next course of action.

He said the level of the party’s movement would go high with the every passing day and the struggle would go on until “we pull off our assignment”.

He warned that all negotiations would be in vain if the government fails to take practical measures to address the city’s issues. He said the party was looking forward to talks, but would take to streets if the negotiations fail.

In a related development, Sindh Minister for Transport Nasir Hussain Shah said while talking to the media that he did not want to create a controversy through his statements, but the PSP protest was nothing more than a point-scoring event. “I am part of the negotiating team therefore cannot speak more than this,” he said.

 

کراچی ، 16اپریل2017

ریڈ زون کراس کیا تو کراچی کے مسائل مزید دب جائیں گے، سید مصطفی کمال

حکومت سندھ ہمیں ایم کیو ایم کی طرح نہ سمجھے، ٹیلی-فون کال ہمیں پیچھے نہیں ہٹا سکتی، مصطفی کمال کی میڈیا سے گفتگو

ہمارے مطالبات سیاسی ہرگز نہیں، عوامی امنگوں کے مطابق ہیں، چیئرمین پی ایس پی

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفی کمال نے کہا ہے کہ ہم کسی قومیت کا ایجنڈا لے کر نہیں چلے لیکن کراچی والوں کو تھوڑی تکلیف برداشت کرناہوگی اور گھروں سے نکلنا ہوگا اور ہمیں اپنے لوگوں سے قوی امید ہے کہ وہ ان کے مسائل کے حل کیلئے ہماری جانب ضرور آئیں گے اور ہمارا ساتھ دیں گے اگر کراچی کے مسائل سے چھٹکارا چاہتے ہیں اورمیری کال پر دس لاکھ لوگ ایک جگہ جمع ہوجائیں گے تو ہڑتال، دکانیں بند کروانے اور سڑکوں ہر عوام کو تنگ کیے بغیر سارے مسائل حل ہونا شروع ہو جائیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب کے باہر احتجاجی کیمپ پر میڈیا کے نمائندوں اور کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا.انہوں نے کہا کہ ہم اپنی بات منوانے کے لئے تشدد کا راستہ نہیں اپنائیں گے’اگر ہم نے ریڈ زون کراس کیا تو کراچی کے مسائل دب جائیں، تحریک اہم مرحلے میں داخل ہوگئی ہے’آج گیارواں دن ہے اور ہم احتجاج کررہے ہیں اور کرتے رہیں گے، انہوں نے کہا کہ اپنے گھروں کو نہیں گئے دن میں دھوپ کہ تپش اور رات میں مچھروں کو اپنے عوام کی خاطر برداشت کیا ہے، ہمارے مطالبات سیاسی نہیں ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم کراچی کے حقوق کی بات کررہے ہیں کراچی والوں کو پانی بجلی گیس، تعلیم، معیاری ٹرانسپورٹ اور روزگار فراہم کیا جائے ہم حکومت گرانے کی بات نہیں بلکہ حکومت سے عوام کو ان کے حقوق دینے کی بات کر رہے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ شاید حکومت سندھ ہمیں بھی ایم کیو ایم سمجھ رہی ہے جو کہ ان کی غلط فہمی ہے ہم ٹیلی فون کال پر احتجاج ختم کر کے گھر جانے والوں میں سے نہیں ہیں اور نہ ہی مطالبات کی منظوری تک دھرناختم کریں گے تمام مشکلات کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔

کراچی ، 15اپریل2017

16 مطالبات نہیں تسلیم کئے گئے تو کراچی کی تباہی کو کوئی نہیں روک سکتا, سید مصطفی کمال

اپنے لئے نہیں بلکہ کراچی کےمیئر کے لئے اختیارات کا سوال کر رہے ہیں، سید مصطفی کمال

ہزاروں ارب روپے سندھ میں کاغذوں میں خرچ ہو چکے لیکن پینے کا صاف پانی لوگوں کو میسر نہیں، چیئرمین پی ایس پی

پاک سرزمین پارٹی کےچیئرمین مصطفی کمال نے کہاکہ اگر 16 مطالبات نہیں تسلیم کئے گئے تو کراچی کی تباہی کو کوئی نہیں روک سکتا لوگوں کو شہر سے ہجرت کرنی پڑے گی، مظلوم کی سدا پر خاموش رہنے والا زیادہ بڑا گناہ گار ہے اور کل ہفتے کو شام  چھ بجے کارکنان کا اجلاس کر یں گے ہم کارکنان کو حالات سے آگاہ کریں گے اور  لائحہ عمل طے کریں گے  ان خیالات کا اظہار انہوں پریس کلب کے باہر احتجاجی کیمپ میں موجود میڈیا کے نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا. انہوں نے کہا کہ ہماری جدوجہد کو 9 روز مکمل ہو چکےجس پر میں اللہ کا شکر ہے کے اس نے ہمیں غریبوں اور مظلوموں کی آواز بنایا
انہوں نے کہا کہ حکمران عوام میں اتنی ناامیدی پھیلا رہے ہیں کہ عوام اس اپنا مقدر سمجھ بیٹھے ہیں اورجہاں سے جانور پانی پیتے ہیں وہاں سے انسانوں کو بھی پانی پینا پڑ رہا ہے انہوں نے کہا کہ ہزاروں ارب روپے سندھ میں کاغذوں میں خرچ ہو چکے لیکن پینے کا صاف پانی لوگوں کو میسر نہیں اورسندھ میں تباہی اور مایوسی مزید بڑھتی جا رہی ہے جو حکمران یہ سوچ کر خوش تھے کہ عوام نے اپنے حقوق کا سوال کرنا چھوڑ دیا ہے ان کی نیندیں اڑ چکی ہیں اورپی ایس پی کے احتجاج کی وجہ عوام اپنے حقوق کے حصول کے لیے کھڑے ہو چکے ہیں انہوں نے کہا کہ تمام سیاستدانوں نے قرآن مجید پر حلف اٹھایا ہوا ہے کہ عوام کو ان کے حقوق دیں گے ہر گلی محلے اور شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے احتجاج میں شرکت کی  اورہر فرد نے یہ تسلیم کیا کہ جو مسائل ہم اجاگر کر رہے ہیں وہ ہر پاکستانی کے مسائل ہیں. انہوں نے کہا کہ ہمارے 16 نکات میں کسی قسم کی کوئی سیاسی پوائنٹ اسکورنگ نہیں ہے یہ پہلی مرتبہ پی ایس پی کی وجہ سے ملک میں مذہبی، لسانی اور فرقہ وارانہ سیاست سے بالاتر ہو کر عوام کے مسائل پر سیاست شروع ہوئی. انہوں نے کہا کہ ملک میں عام آدمی نہیں سوچ سکتا تھا کہ کسی سیاسی جماعت کا لیڈر اپنا آرام چھوڑ کر اس کے حقوق کے لیے گرمی میں سڑک پر بیٹھے گا.
انہوں نے کہا کہ ہمیں پتہ ہے یہ کرپٹ حکمران ہماری بات یہاں بیٹھنے سے نہیں مانیں گےہمارے احتجاج کا طریقہ کار تبدیل ہو سکتا ہے لیکن 16 نکات پر سمجھوتہ نہیں ہو گا انہوں نے کہا کہ ہم. اپنے لئے نہیں بلکہ کراچی کےمیئر کے لئے اختیارات کا سوال کر رہے ہیں جو ہمارا مخالف ہے اورمیئر کی اپنی جماعت بھی ان کے لئے اس طرح سے آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات نہیں کر رہے انہوں نے کہا کہ 16 نکات کو مانے بغیر کراچی کے مسائل حل نہیں ہو سکتے اوراپنی آئندہ آنے والی نسلوں کی بہتری کے لئے ہمیں ابھی تھوڑی تکلیف برداشت کرنی پڑے گی آ نہوں نے کہا کہ دنیا کی تاریخ میں بدترین حکومت نے بھی اپنے اہم ترین شہر کے لوگوں کو پیاسا نہیں مارا ہوگا اورکہ انگریزوں کے دور میں بھی لوکل گورنمنٹ کو. زیادہ اختیارات حاصل تھےانہوں نے کہا کہ اگر شہر میں اسی طرح چلتا رہا تو 70 نسلیں بھی یہاں کی تباہی کو سنبھال نہیں سکیں گے میں اپنی سانسیں مانگ رہا ہوں اس لیے اس پر مذاکرات نہیں ہو سکتے انہوں نے کہا کہ کراچی کو ملک بھر کے لیے رول ماڈل بنانا چاہتے ہیں. مصطفی کمال نے وزیر اعلٰی سے سوال  کیا کہ انہوں نے میئر کو اختیارات دے دیئے اوروزیراعظم سے اختیارات کا سوال تب بنتا ہے جب خود وزیر اعلٰی سندھ اپنے اختیارات بھی نچلی سطح پر تقسیم کریں

 

کراچی ، 14اپریل2017

PSP protest enters ninth day as talks with PPP bear little fruit

Waqar Mehdi says 10 of PSP’s 16 demands acceptable; Mustafa Kamal

says no deal until all points agreed upon

Following a meeting between a Pakistan Peoples Party (PPP) delegation and the Pak Sarzameen Party (PSP) leadership late on Wednesday night, a representative of the ruling party said they were willing to implement 10 of the PSP’s 16 demands and work on new legislations to that effect.

PSP chief Syed Mustafa Kamal, however, has refused to end his sit-in, which entered its ninth day on Thursday, as he reiterated that the protest for the city’s rights would not be called off until all 16 demands were fulfilled by the provincial government.

The visiting delegation was headed by transport minister Syed Nasir Shah and included PPP Karachi Secretary General Waqar Mehdi.

Talking to The News, Mehdi said it was their second visit to the protesting party’s camp erected outside the Karachi Press Club (KPC).

Mehdi said the PSP chief wanted the government to immediately fulfil all of his demands, but he was told that some of his demands, including giving some civic bodies under the control of the Karachi mayor, could only be fulfilled through a legislative process.

While the PPP is trying to convince the PSP chief to end his protest, Kamal has vowed to push his movement to the next level.

Speaking to The News on Tuesday, he said: “We have conveyed our message to the masses. People are coming in large numbers at our camp to express their solidarity with our cause,” Kamal said.

“We have now decided to move forward since this sit-in has already been successful in helping people realise their rights and making them stand for ensuring civil liberties,” he said.

To a query, he said the party did not have any plan to stage a sit-in outside the Chief Minister House.” Our mission is to move far beyond the walls of the CM House,” he said with a smile.

Talking about his working relationship with the Muttahida Qaumi Movement-Pakistan, Kamal said he was in constant touch with MQM-P chief Dr Farooq Sattar. “Our doors are open for everybody,” he said.

Kamal said the level of the party’s movement would go high with everyday passing. “The struggle will go on until we pull off our assignment.”

PSP Vice President Dr Sagheer Ahmed reiterated that the sit-in would continue till the government fulfilled their demands.

A day earlier, the party vowed to continue the protest until all 16 of its demands were met by the government.

The party’s leaders also warned that all negotiations would be in vain if the government failed to actually take practical measures to address the city’s issues.

Addressing protesters at the KPC on Monday, PSP President Anis Qaimkhani said the party was looking forward to talks but would take to streets if the negotiations failed.

Earlier on Friday, another lawmaker of the Muttahida Qaumi Movement, Iritiza Khalil Farooqui, announced his inclusion in the PSP as he joined the party’s sit-in staged outside the KPC.

Farooqui, is the seventh MQM lawmaker to join the Mustafa Kamal-led party, was welcomed by the PSP central leadership on the second day of their protest against the Sindh government for keeping the city ‘deprived of its due rights’.

کراچی ، 13اپریل2017

PSP’s protest enters eighth day

 

The Pak Sarzameen Party’s (PSP) protest campaign entered its eighth day on Thursday as the party continued to stage a sit-in outside the Karachi Press Club, demanding the uplift of the city.

Mustafa Kamal makes 16 demands for Karachi

PSP Chairperson Mustafa Kamal had made 16 demands to the federal and provincial governments on April 6 for increment in funds and resources for Karachi. He had asserted that the city was deprived of its fair share.

In the wee hours of Thursday, a Pakistan Peoples Party (PPP) delegation led by Sindh Transport Minister Nasir Hussain Shah paid a visit to the protest camp and met PSP’s leaders.

‘41% of Karachi has no water pipelines’

PSP leader Dr Sagheer Ahmed, leading his side, told the PPP delegation about his party’s demands, PSP Spokesperson Waseem Aftab said. He added that the PPP delegation agreed to their demands and vowed to take up the matter with their high-command.

Aftab said that the PSP was not about to pack their bags and head home over mere promises. “We will not leave until our demands are fulfilled,” he maintained.

کراچی ، 09اپریل2017

PSP’s protest will continue, says Kamal

KARACHI: Pak Sarzameen Party’s (PSP) protest against government’s corruption entered fourth consecutive day on Sunday.

The party staged a sit-in outside the Karachi Press Club.

Speaking on the occasion, PSP Chairman and former Karachi mayor Mustafa Kamal has said the protest would continue until the basic rights of the City’s residents are restored.

Carrying placards and shouting anti-government slogans, the PSP workers demanded that the provincial government fulfills the basic needs, including the provision of water, electricity, and a proper sewage system.

Kamal claimed that people came out of their houses to support the party’s stance in over 20 locations across the country.

He alleged that the Sindh government had taken over the local government department so as to carry out corrupt activities.

کراچی ، 12اپریل2017

پاک سر زمین پارٹی کے تحت کراچی پریس کلب کے باہر احتجاجی کیمپ ساتوں روز میں داخل
مختلف تاجر برادری. انجمن تنظیموں. مختلف ایسوسی ایشن، اسکولز کے بچے اور بچیوں، دیگر وفود کے آمد کا سلسلہ جاری ہے

پاک سرزمین پارٹی کے زیراہتمام کراچی کے مسائل کے حل کے لیے کراچی پریس کلب کے باہر احتجاجی کیمپ قائم ہے اور اظہار یکجہتی کیلئے کراچی عوام. مائیں بہنیں، بزرگ اور نوجوانوں، مختلف تاجر برادری. انجمن تنظیموں. مختلف ایسوسی ایشن، اسکولز کے بچے اور بچیوں، دیگر وفود کے آمد کا سلسلہ جاری ہے اور اس سلسلے میں کراچی کے بنیادی مسائل حل کیلئے پاک سر زمین پارٹی کے تحت کراچی پریس کلب کے باہر احتجاجی کیمپ ساتوں روز میں داخل ہوچکی ہے ۔شدید گرمی کے باوجود پی ایس پی کے کارکنان و ہمدروں کی بہت بڑی تعداد میں احتجاجی کیمپ موجود ہیں شدید گرمی کے باجود بھی پی ایس پی کارکنان کے حوصلہ پر عزم ہیں اور انکے ساتھ پی ایس پی کے چیئر مین سید مصطفی کمال، صدر انیس قائم خانی، سینئر وائس چیئر مین انیس ایڈوکیٹ، ڈاکٹر صغیر احمد، وائس چیئر مین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوا، اشفاق منگی دیگر پی ایس پی تمام مرکز ی ذمہ داران کراچی پریس کلب کے باہر موجود تھے، احتجاجی کیمپ مختلف جماعتوں کے رہنماوں نے احتجاج میں شرکت کی اور شرکا ء سے اظہار یکجہتی کیا۔ اس سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کے احتجاجی کیمپ مشہور سماجی شخصیت صارم برنی،بوہری کمیونٹی ،کوئٹہ انجمن تاجران یسوی یشن ، لٹل پیپلزآف پاکستان ایسوی ایشن،سندھ تاجر الائنس ،صدر مارکیٹ ایسوی ایشن، زرگر الائنس ایسوسی ایشن کی جانب سے احتجاجی کیمپ کا دورہ کیا گیا اور شرکاء سے اظہار یکجہتی کیا۔

کراچی ، 12اپریل2017

کراچی کے نوجوان، مائیں، بہنیں ذہنی طو رپرتیاری کرلیں اپنے حقوق لیکر اٹھاگے یا پھر اپنی جانیں دیں گے، مصطفی کمال
ہم نے پھولوں کی سیج سمجھ کر یہ راستا اختیار نہیں کیا تھا، چیئرمین پاک سرزمین پارٹی
دو قطروں سے آج سمندر بند گیا ہے شمولیتوں کا نہ رکھنے کا سلسلہ جاری ہے
مصطفی کمال کسے کے پیر نہیں ہڑے گا، کوئی بلیک میل نہیں کر سکتا، سید مصطفی کمال

کراچی ()پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی کے نوجوان، مائیں، بہنیں ذہنی طو رپرتیاری کرلیں اپنے حقوق لیکر اٹھاگے یا پھر اپنی جانیں دیں گے، پاکستانیوں اور پاکستان کے لوگوں کو گواہ بنا کر کہتا ہوں کہ ہم پھولوں کی سیج سمجھ کر یہ راستا اختیار نہیں کیا تھا، ساتواں روز ہے اور ہم جسمانی اور ذہنی امتحان میں اللہ کے سامنے سرخرو ہو رہے ہیں 42 سینٹی گریڈ کی گرم دن و راتوں میں گزارے ہوے لمحات سنہری حروف سے لکھے جائیں گے لوگوں کو امید ہوچکی ہے کہ آیندہ آنے والی ایک اچھے ماحول میں آنکھ کھولے گی انہوں نے کہاکہ۔ وو قطروں کا دریاں آج سمندر بند گیا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب کے باہر پی ایس پی کے تحت شہریوں کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے پرس کلب کے باہر لگائے گئے احتجاجی کیمپ کے ساتوں روز میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ مصطفی کمال کسے کے پیر نہیں پڑے گا، کوئی بلیک میل نہیں کر سکتا عوام کی مینڈیٹ پر عیاشی کرنے والے بلیک اور وائیٹ پیپر جاری کرتے ہیں پروٹوکول، شادی حال کی جگہ، عہدوں کی لالچ میں نہیں اپنے عوام کیلے بنیادی حقوق مانگ رہے ہیں انہوں نے کہاکہ سرکاری اسکولوں میں معیاری تعلیم، گھروں میں صاف پانی، نوجوان کو نوکریاں اور انصاف کا نظام آئے گا شہر تفرقے اور قوم پرستی میں بٹ چکا تھا حکمرانوں کو بتانا چاہتا ہوں کہ اسٹریٹ پارو دکھانا پڑی تو کراچی کے تمام علاقوں میں نظر آئے گی کٹی پہاڑی، سہراب گوٹھ، لیاری چکرا گوٹھ سمیت دیگر علاقوں سے لوگ نکلیں گے.. انہون نے کہاکہ حکمرانوں نے عوام کو فرقہ واریت اور قوم پرستی میں مبتلا کر کے ان کے حقوق چھینے تھے مہاجر پختون کو، سندھی مہاجر کو غرض سب ایک دوسرے کو دشمن سمجھنے لگے کے الیکٹرک نے اسی دوران 100 ارب روپے کا شہریوں پر ڈاکہ ڈالا سب سے پہلے نعرہ لگایا کہ ہم بھائیوں کو بھائیوں سے ملانے کیلئے آئے ہیں انہوں نے کہاکہ ہماری نیت تھی کہ اس ملک کے جھنڈے کی حرمت کا خیال رکھنے والا مخالف کیوں نہ ہو ہمارا بھائی ہے اپنے پاس آنے والے ایک ایک شخص کو بتایا کہ ہر جماعت مسلک و رنگ و نسل کے لوگوں سے ملو اور آپس میں محبتیں بانٹو آج اس پنڈال میں تمام مسالک رنگ نسل و زبان کے لوگ موجود ہیں، اس قوم نے اب فیصلہ کر لیا ہے کہ وہ حکمرانوں کی سلطنتوں کو زمین بوس کریں گے انہوں نے کہاکہ ووٹوں کی گنتی کروانے کیلئے، لوگوں کو چھڑوانے، شادی حال کا قبضہ چھڑوانے کیلے اپنے حقوق مانگے کیلئے بیٹھے ہیں پینے کا صاف پانی مانگ رہے ہیں، یہ تو حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ شہریوں کو سہولیات مہیا کرے مذاکرات کس طرح کروں، حکومت کو میرے بچوں کو چور ڈکیت بنا رہے ہو تو میں بھی تمہاری نیندیں حرام کرونگا، انہوں نے کہاکہ جس کا بیٹا صاف پانی، دوائی نہ ہونے اور معاشی حالات کی وجہ سے مرے گا وہ تو کچھ بھی کرنے سے گریز نہیں کرے گا پولیس کے ذریعے لوگوں کا ماروا کر کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں، گینگ وار کے لیڈر کو مارا تو اس کا بیٹا لیڈر بن گیا جب تعلیم، روزگار، تعلیم اور اچھا معاشرہ نہیں بناؤ گے تو ایسے عناصر پیدا ہوں گے اور دہشت گرد انہیں استعمال کریں گے انہوں نے کہاکہ لعنت ہے ایسی جمہوریت پر جہاں صاف پانی پینے کیلئے احتجاج کرنا پڑے حکومت اربوں روپے ضایع کرتی ہے، ہمارے احتجاج کہ باتوں ہر توجہ کوئی نہیں دیتا،مصطفی کمال بندوقوں کے سامنے کھڑا ہو گا، کسی کو آنے کیلئے مجبور نہیں کیا اور نہ کروں گاانہوں نے کہاکہ حکمران کرپشن کر رہے ہیں اور غلط اقدامات کر کے عوام کے دلوں میں اپنے ملک سے محبت کو کم کررہے ہیں کراچی کے لوگوں تیاری کرو، ہم نے آواز لگائی اور اپنے مطالبات جمہوری اور قانون طریقے سے سب کو بتادئے12 جگہوں ہر کراچی اور 20 مقامات پر پورے ملک میں احتجاج کر کے ٹیلر دکھا دیا انہوں نے کہاکہ رحمان ملک ہمیں کال کر کے احتجاج ختم نہیں کروایا سکتا مصطفی کمال، انیس قائم خانی سمیت پوری سینٹرل کیبنٹ سامنے کھڑے ہوں گے بستر پر گزاری ہوئی سات راتیں یہاں فٹ پاتھ ہر گزاری راتوں سے کئی گنا زیادہ بہتر ہیں

11-April-2017

پاکستان کی کسی سیایسی لیڈر شپ نے آج تک خود سے اپنے عوام کے مسائل کیلئے احتجاج نہیں کیا، مصطفی کمال
پارٹی پاک سرزمین پارٹی اپنی مخالف جماعت کے لے بھی آج اختیارات مانگ رہی ہے
مظلوم عوام کے مسائل حل کرنے کے لئے یہاں کھلے آسمان تلے بیٹھا ہوں چاہے کچھ بھی ہو جائے یہاں سے اپنے مطالبات کی منظوری تک نہیں اٹھیں گے
عوام کے حقوق حذف کرنے والے حکمرانوں کا احتساب عوام کریں گی

پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید سید مصطفی کمال نے کہاکہ پاکستان کی کسی لیڈر شپ نے آج تک خود سے اپنے عوام کیلے احتجاج نہیں کیا. جس آئین کے تحت حلف اٹھا کر وزیر بنتے ہو اسی پر عمل درآمد کرتے ہوئے عوام کو ان کے حقوق کیوں نہیں دیتےِ اسکولوں میں بنیادی تعلیم، اسپتالوں میں دوائیاں اور نوجوانوں کو نوکریاں دے دو، مڈل کلاس فیملی اپنے بچوں کو معیاری دودھ پلاتے ہیں تو صاف پانی نہیں پلا سکتے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب کے باہر پی ایس پی کے تحت شہریوں کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے پرس کلب کے باہر لگائے گئے احتجاجی کیمپ کے چھٹے روز اظہار یکجہتی کیلئے کثیر تعداد میں آنے والی لیاری ٹاون، سرجانی ٹاؤن ،یوسی 38 رنچھوڑلائن، پاک کالونی ، ناظم آباد گلبہار، کورنگی ٹاون اور اورنگی تاون قصبہ علگڑھ سے تعلق رکھنے والی خواتین اور میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ جو پارٹی پاک سرزمین پارٹی کی مخالف ہے ہم ان کے کیلئے بھی آج اختیارات مانگ رہے ہیں وزیر اعظم بننے کیلئے نہیں بلکہ اپنی مظلوم عوام کے مسائل حل کرنے کیلے یہاں کھلے آسمان تلے بیٹھا ہوں چاہے کچھ بھی ہو جائے یہاں سے اپنے مطالبات کی منظوری تک نہیں اٹھیں گے اپنی جان قربان کروں گا لیکن کسی کے لولی پوپ دینے پر نہیں اٹھیں گے انہوں نے کہاکہ میرا رب جانتا ہے کہ میری نیت کسی کے خلاف نہیں، انہوں نے کہاکہ سندھ کے حکمرانوں نے اگر توبہ نہیں کی تو عذاب آئے گا یہ لوگ نیست و نابود ہوں گے اب فیصلہ ہوگیا کہ ماؤں نے اپنے بچے خاموشی سے دفن نہیں کرنے، حکمرانوں سے ان کی عیاشیوں کو چھین لیں گیانہوں نے کہاکہ اگر مینڈیٹ ہو تو کراچی سے بیٹھ کر پاکستان کے مسائل کو حل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اورووٹ لیتے وقت نام نہاد سیاست دانوں نے ہمیں خواب دکھائے وہ سب دھوکہ تھا انہوں نے کہاکہ4 باکردار لوگ حق و سچ ہر کھڑے ہوگئے تو 4 کروڑ پر بھاری ہوں گے یہ اللہ کا شکر کے میرے ساتھی با کردار ہیں اور اپنے لیے نہیں عوام کیلے اپنے آرام کو قربان کر رہے ہیں ہمارا یہاں اپنے لوگوں کیلئے گزاری ہوئی راتیں افضل ترین راتیں ہیں۔
درایں اثناء پاک سرز مین پارٹی کا کراچی کے مسائل کے حل کے لئے احتجاج کراچی پریس کلب کے باہر چھٹے روز بھی جاری ہے۔ احتجاجی کیمپ میں شدید گرمی کے باوجود پی ایس پی کے چیئر مین سید مصطفی کمال، صدر انیس قائم خانی، سینئر وائس چیئر مین انیس ایڈوکیٹ، ڈاکٹر صغیر احمد، وائس چیئر مین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوا، اشفاق منگی دیگر پی ایس پی تمام مرکز ی ذمہ داران کراچی پریس کلب کے باہر موجود تھے، احتجاجی کیمپ مختلف جماعتوں کے رہنماوں نے احتجاج میں شرکت کی اور شرکا ء سے اظہار یکجہتی کیا۔ اس موقع پرعوام جن میں خواتین سمیت پی ایس پی کے کارکنان بڑی بھی موجود ہے اس سلسلے میں پاک سرزمین پارٹی کے احتجاجی کیمپ پر صدر کراچی بار کونسل نعیم قریشی، جنرل سیکرٹری خالد نواز مروت اور دیگر وکلاء آمد اور سید مصطفی کمال کو کراچی بار کونسل میں خطاب کی دعوت دی ، کراچی کے مختلف اسکولوں کے بچوں اور بچیوں ،لیاری ٹاون، سرجانی ٹاؤن ،یوسی 38 رنچھوڑلائن، پاک کالونی ناظم آبا د گلبہار، کورنگی ٹاؤن ، اورنگی تاون قصبہ علگڑھ خواتین کی مختلف وفود کی جانب سے احتجاجی کیمپ کا دورہ کیا گیا اور شرکاء سے اظہار یکجہتی کیا۔۔ اس موقع پرعوام جن میں خواتین سمیت پی ایس پی کے کارکنان بڑی بھی موجود ہے۔اس موقع پرایم کیوایم سندھ تنظیمی کمیٹی کے رکن اور سوشل فورم کے انچارج عاشق حسین اسدی .نے پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا

10-April-2017

کراچی سولجر بازار میں قائم 100 سالہ قدیم اسکول جفل ہرسٹ گورنمنٹ اسکول کو قبضہ مافیہ کی جانب سے
منہدم کرنے کے واقعے پر ڈاکٹر صغیر احمد کا اظہارمذمت
سندھ حکومت کی اس نااہلی اور تاریخی ورثے کو نقصان پہنچانے اور مسلسل تعلیم دشمنی پر مبنی اقدام قرار دیا ہے ، ڈاکٹرصغیر احمد

کراچی ()پی ایس پی کے سینئر وائس چیئرمین ڈاکٹر صغیر نے کہاکہ کراچی سولجر بازار میں قائم 100 سالہ قدیم اسکول جفل ہرسٹ گورنمنٹ اسکول کو قبضہ مافیہ کی جانب سے منہدم کرنے کے واقعے پر سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کی اس نااہلی اور تاریخی ورثے کو نقصان پہنچانے اور مسلسل تعلیم دشمنی پر مبنی اقدام قرار دیا ہے انہوں نے کہا کہ 100 سالہ جفل ہرسٹ گورنمنٹ اسکول کی عمارت کو تاریخی ورثہ قرار ہے اسکے باوجود قبضہ مافیہ کی جانب سے اسکول کی عمارت کو منہدم کرنا حکومت سندھ کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے، انہوں نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کے جفل ہرسٹ گورنمنٹ اسکول کو فوری طور پر دوبار تعمیر کی جائے اور اس واقعہ میں ملوث قبضہ مافیہ کو گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے

کراچی ، 09اپریل2017

PSP protest will continue until Sindh govt fulfills demands: Mustafa Kamal

KARACHI: Chairman of Pak Sarzameen Party (PSP) and former mayor Karachi Mustafa Kamal, on Sunday, said the party’s protest will continue until the basic rights of Karachi residents are restored.

“Our motion is to fight for the basic amenities for the masses,” Kamal said while addressing a press conference. “We are not asking the government to fetch stars from the sky, we only demand clean water.”

The former mayor, for a period of two months, offered his services gratis, to monitor the process of laying water pipes.

“We demand only two percent of the entire water allocated to Sindh,” the PSP chief said. “We have no objections to share water with our Sindhi brothers.”

He claimed that the established democracy is a sham if the government is unable to provide clean drinking water to the public. He urged the Sindh government to lay water pipes in addition to constructing roads.

“Even under the worst examples of governance, citizens have not been deprived of their basic rights,” the former mayor said. “We will bury the fake grandeur of our rulers.”

Kamal stressed that Karachi with its two ports is the economic hub of the country and the entire country benefits from the city. “Karachi earns PKR 12 billion in an hour but no one cares about the city’s [shabby] state. The elected representatives are only interested in looting Karachi.”

Talking about the K-IV water project, the PSP chief claimed to have created the project. “I had made plans for Karachi for the next fifty years.”

He claimed that K-IV project would not cover the acute shortage of water in the city. “The government would have to start implementing phase 2 of the project.”

“I appeal to the international organisations working with the Sindh government to review their decisions,” Kamal said.

The former mayor claimed that people came out of their houses to support the party’s stance in over 20 locations across the country.

On April 8, PSP set up protest camps at 12 different locations in the city.

PSP workers, on April 7, threatened to impede smooth operations of the Sindh government until it would solve issues pertaining to Karachi.

While protesting outside Karachi Press Club,  PSP workers demanded that the provincial government fulfils the basic needs, including the provision of water, electricity, and a proper sewage system.

The party alleged that the Sindh government has taken over the local government department so as to carry out corrupt activities.

09-April-2017

دنیا میں جہاں جہاں پاکستانی بستے ہیں ان کو بتانا چاہتا ہوں کے آپ کے حقوق کے لئے میں اور میرے ساتھی آج کئی دنوں سے گھر سے باہر ہیں، مصطفی کمال
ہمارا مقصد یہاں کے بسنے والے ہر شخص کو اس کے بنیادی حقوق دلانا ہے
حکمرانوں سن لو اگر پانی نہیں دے سکتے تو اب عوام کا ہاتھ ہوگا اور ظالم حکمرانوں کے گریبان ہوگاآخری سانس تک یہ احتجاج جاری رہے گا

پاک سرزمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے دنیا میں جہاں جہاں پاکستانی بستے ہیں ان کو بتانا چاہتا ہوں کے آپ کے حقوق کے لئے میں اور میرے ساتھی آج کئی دنوں سے گھر سے باہر ہیں میں یا میرے ساتھی آپنے کسی ذاتی مفادات کے لئے اپنے دن اور رات بے آرام نہیں کررہے ہمارا مقصد یہاں کے بسنے والے ہر شخص کو اس کے بنیادی حقوق دلانا ہے ان خیالات اظہار انہون نے کہاکہ پریس کلب کے باہر احتجاجی تحریک کے کیمپ مین موجود میڈیا کے نمائندون یس گفتگو کر تے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ حکومت شکر ادا کرے کے ہم یہاں بیٹھے ہو ہیں اگر ہم نے چلنا شروع کردیا تو ہماری سمت ھمارے گھروں کی طرف نہیں ہوگی بلکہ ہماری سمت حکمرانوں کے محلات کی طرف ہوگی جو انہوں نے یہاں کے لوگوں کے خون چوس چوس کے بناے ہیں اگر حکمران اس خوش فہمی مے مبتلا ہیں کے ہم خالی پریس کانفرنس کر کے چلے جائے گے تو وہ احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں جو شہر پورے ملک کا ستر فیصد ریونیو جنریٹ کرتا ہے اس شہر کے بسنے والے بوند بوند کو ترس رہے ہیں انہون نے کہاکہ میںآج سندھ گورمنٹ کے ساتھ کام کرنے والے تمام ڈونرز اداروں بیرونِ ملک بینک جو ان کو پیسے دے رہے ہیں وہ فلفور اپنے فیصلوں پر نظرِژانی کریں جب وطن پرستوں کی حکومت آئی تو تمہارے واجبات بند کردئے جائیں گے اور مقدمات بنائیں جائیں گے انہوں نے کہاکہ میں خراجِ تحسین پیش کرنا چاہتا ہوں اپنی ماوں بہنوں اور ساتھیوں کو جنہوں نے ہماری کال پر پاکستان مے بیس سے زائد جگہوں پر پر امن احتجاج کیاحکمرانوں سن لو اگر پانی نہیں دے سکتے تو اب عوام کا ہاتھ ہوگا اور ظالم حکمرانوں کے گریبان ہوگاآخری سانس تک یہ احتجاج جاری رہے گا بغیر حقوق لئے یہاں سے نہی اٹہیں گے

08-April-2017

کل سے احتجاج کا دائرہ کراچی کے تمام علاقوں تک پھیل جائے گاملک بھر میں 20 سے زائد مقامات پر احتجاج کیا جائے گا مصطفی کمال
دنیا بھر میں جہاں کہیں بھی ہمارا سیٹ اپ موجود ہے وہاں سے آواز لگائیں گے
ہم اس وطن سے محبت رکھتے ہیں کیونکہ ہمارے آباؤ اجداد نے یہ ملک بنایا تھا

چیئرمین پی ایس پی سید مصطفی کمال کی پریس کانفرنس نے کل سے احتجاج کا دائرہ کراچی کے تمام علاقوں تک پھیل جائے گاملک بھر میں 20 سے زائد مقامات پر احتجاج کیا جائے گا ہزاروں کارکنان کراچی، حیدرآباد سمیت ملک کے تمام صوبوں میں موجود ہیں جو اپنے لوگوں کے حقوق کیلئے نکلیں گے اورکل کراچی کے لوگ بتائیں گے کہ اپنے حقوق کیلئے کیسے احتجاج ہوتا ہے اور اپنی حقوق حاصل کیے جاتے ہیں ان خیالات اظہار انہو نے پریس کلب کے باہر احتجاجی تحریک کے کیمپ مین موجود میڈیا کے نمائندون یس گفتگو کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ دنیا بھر میں جہاں کہیں بھی ہمارا سیٹ اپ موجود ہے وہاں سے آواز لگائیں گے اپنے ذات سے کسی کی جان و مال اور املاک کو نقصان نہیں پہنچائیں گے ہم دو راتوں سے کس کیلئے ایک روڈ پر گرمی میں اپنے دن و رات گزرا رہے ہیں؟ انہوں نے کہاکہ اس صوبے کے عجیب بچوں کیلئے تعلیم، صحت اور صاف پانی اور ٹرانسپورٹ کا نظام مانگ رہے ہیں ہمارا کون ایسا مطالبہ ہے جو حکومت کا روز مرہ کام نہیں ہے، لیکن مجبوراً ان مسائل کے حل. کیلئے احتجاج کررہے ہیں حکمران اپنی عیاشی میں لگے ہوئے ہیں، غریب عوام کا کوئی پرسان حال نہیں ہے انہوں نے کہاکہ ہم اس وطن سے محبت رکھتے ہیں کیونکہ ہمارے آباؤ اجداد نے یہ ملک بنایا تھاحکمران مردہ باد کے نعرے لگائیں گے، ملک سے محبت کوئی کم نہیں کرواسکتا، فی الفور پانی کی لائینوں کو صحیح نظام، ٹرانسپورٹ کا نظام، اسپتالوں میں دوائیاں کل سے مل سکتی ہیں انہوں نے کہاکہ اپنی آسائشوں کو چھوڑ کر جو راتیں اپنے عوام کیلئے کرکے آسمان تلے گزارے وہ زندگی کے بہترین لمحات ہیں کل رات سے فیملیاں، بزرگ، نوجوان سول سوسائٹی سمیت مختلف کمیونٹی کے لوگ ہمارے احتجاج میں شرکت کررہے ہیں ہم صبر کریں گے، حکمرانوں کے کانوں پر جوں ضرور رینگے گی انہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے عوام کو روزگار، تعلیم اور دیگر وسائل دینے میں ہٹ دھرمی دکھائی تو عوام اننکے جھوٹے محلات گرائیں گے، ثابت قدمی سے اپنے عوام کے تمام وسائل ان تک پہنچنے تک احتجاج جاری رہے گا انہوں نے کہاکہ اللہ تعالٰی نے اس ملک کے غریبوں کی آواز حکمرانوں کے کانوں تک پہنچا دی ہے ہم وہ لوگ نہیں جو پریس کانفرنس کر ک واپس جا کر آرام سے بیٹھ جائیں گے

 

07-April-2017

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاک سرز مین پارٹی کا کراچی کے مسائل کے حل کے لئے احتجاج کراچی پریس کلب کے باہر دوسرے روز بھی جاری ہے۔ جس میں مختلف جماعتوں کے رہنماؤں نے احتجاج میں شرکت کی اور شرکا ء سے اظہار یکجہتی کیا۔ احتجاجی کیمپ میں پی ایس پی کے چیئر مین سید مصطفی کمال ، صدر انیس قائم خانی، سینئر وائس چیئر مین انیس ایڈوکیٹ، ڈاکٹر صغیر احمد، وائس چیئر مین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوا، اشفاق منگی دیگر پی ایس پی تمام مرکز ی ذمہ داران کراچی پریس کلب کے باہر موجود ہیں۔ اس موقع پرعوام جن میں خواتین سمیت پی ایس پی کے کارکنان بڑی بھی موجود ہے۔ اس سلسلے میں ہیومن رائٹس رائٹس فیڈریشن آف پاکستان کے صدر اسحاق شیخ، پاکستان عوامی تحریک کراچی کے صدر ایس ایم ضمیر و اراکین اور مزدور یونین کی جانب سے احتجاجی کیمپ کا دورہ کیا گیا اور شرکاء سے اظہار یکجہتی کیا ۔اس موقع پر ایم کیو ایم کے اندوران سندھ لونگ خان چنہ ، ایم کیو ایم پاکستان لیاقت آباد یوسی 38 کے جوائنٹ انچارج عادل ،یوسی 38 لیا قت آباد شعبہ خواتین کی عصمت اشفاق، جماعت اسلامی سہراب گوٹھ کے زمہ داران سعید اللہ خان. طاہر خان،ایم کیو ایم سندھ تنظیمی کمیٹی کے جوائنٹ انچارج سید خورشید علی،پاپوش نگر ایم کیو ایم یونٹ 181 جوائنٹ انچارج محمد اسلم شیخ ا ور دیگر نے پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت کا اعلان بھی کیا۔

07-April-2017

ایم کیوایم پاکستان پی ایس119منتخب ہونے والے ارتضی فاروقی نے پاک سرزمین پارٹی میں شمیولیت کا اعلان
کسی اور کے گناہ کی سزا میں ملک سے دور رہ کر کیوں برداشت کروں میں اپنی ایم پی اے شپ سے آج استعفیٰ دے رہا ہوں، ارتضی فاروقی
ہم پاکستان نہیں حکمران مردہ باد کو نعرہ لگائیں گے اور ہم جس ملک میں رہتے ہیں اس ملک کیلئے مردہ باد کا نعرہ کیسے لگاسکتے ہیں، ارتضی فاروقی
پاکستان کے عوام کی مسالک، قومیت اور نظریات سے پاک ہوکر ان کی خدمت کرنا ہمارا مشن ہےِ مصطفی کمال
پاکستان کی تاریخ کا پہلا احتجاج ہے جس میں پورہ لیڈر شپ سڑکوں ہر بیٹھی ہوئی ہے
ہمارے مسائل حل کریں گے تو سر پر بٹھائیں گے نہیں کریں گے تو حکمرانی نہیں کر پائیں گے ، مصطفی کمال
ہم پر ظلم کرکے ہمارے حقوق غصب کرکے ہماری اس ملک سے محبت کو کم کرنے کی کوشش مت کریںِ مصطفی کمال

کراچی ()ایم کیوایم پاکستان پی ایس119منتخب ہونے والے ارتضی فاروقی نے پاک سرزمین پارٹی میں شمیولیت کا اعلان کر دیا گیا ہے انہوں نے کہاکہ کسی اور کے گناہ کی سزا میں ملک سے دور رہ کر کیوں برداشت کروں میں اپنی ایم پی اے شپ سے آج استعفیٰ دے رہا ہوں اورآج سے سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کے ساتھ ان کے کارواں میں شامل ہوں یہ اعلان انہوں نے پی ایس پی چیر مین سیدمصطفی کمال کے ہمراہ احتجاجی تحریک میں کے سلسلے میں پریس کلب کے باہرلگائے گئے کیمپ میں پرہجوم پر یس کا نفر نس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی، وائس چیئر مین وسیم آفتاب، افتخار رندھاوا دیگر پی ایس پی تمام مرکز ی ذمہ داران بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان نہیں حکمران مردہ باد کو نعرہ لگائیں گے اور ہم جس ملک میں رہتے ہیں اس ملک کیلئے مردہ باد کا نعرہ کیسے لگاسکتے ہیں انہوں نے کہاکہ جو قرض اس شہر کا ہمارے کاندھوں پر ہے اسے اتارنے کیلئے آیا ہوں اوریہ اللہ کا کرم ہے ہمیں سید مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی صورت میں ہمیں ایک سچا راستہ مل گیا انہوں نے کہاکہ22 اگست کو اسی مقام پر ایک ڈرون حملہ کیا گیا، جس کے لاکھوں کروڑوں لوگوں کی دل آزاری ہوئی چھوٹا منہ بڑی بات، فاروق بھائی ایم کیو ایم ایک شخص کی ہی ہے انہوں نے کہاکہ اس شہر کو لاڑکانہ بنا دیا گیا، اس شہر کو مصطفی کمال کے ساتھ رواتوں کو جاگ کر بنایا تھاکراچی شہر آج کچرے کا ڈھیر بن گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری تربیت یہ تھی کہ مڈل کلاس طبقے اور جغرافیائی حدود میں رہتے ہوئے اس شہر اور اس ملک کو ترقی یافتہ بنائیں گے اورمصطفی کمال انیس قائم خانی اور دیگر کے ساتھ مل کر اس شہر کی خدمت کرنا چاہتا ہوں چیئرمین پی ایس پی سید مصطفی کمال نے کہاکہ پاک سرزمین پارٹی کے احتجاج کا دوسرا دن شروع ہوچکی ہے جمہ کے بابرکت کے دن ارتضی فاروقی پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت پر مبارک پیش کرتے ہیں اللہ تعالٰی ان کا فیصلہ صحیح ثابت کرے، انہوں نے کہاکہ پاکستان کے عوام کی مسالک، قومیت اور نظریات سے پاک ہوکر ان کی خدمت کرنا ہمارا مشن ہے اورارتضی فاروقی کی شمولیت ہماری پارٹی کیلئے اچھا شگون ہے، انہوں نے کہاکہ اپنے موقف کی دعوت دی ہے کسی پر اپنی بات منوانے کیلے جبر نہیں کیاجو ہماری بات پر لبیک کہتا ہے وہ ہمارا بھائی ہے جو نہیں مانتا وہ بڑا بھائی ہے انہوں نے کہاکہ ایک سال کی مدت میں ہمارے کسی بھی کارکن نے مزاحمت کے باوجود ایک پتھر تک نہیں مارا پاکستان کی تاریخ کا پہلا احتجاج ہے جس میں پورہ لیڈر شپ سڑکوں ہر بیٹھی ہوئی ہے اورمصطفی کمال اور انیس قائم خانی کو وزیراعظم اور وزیر اعلی نہیں بننا اپنے عوام کیلے اس احتجاج کا آغاز کیا ہے انہون نے کہاکہ واٹر بورڈ کو صوبائی حکومت نے اپنے ماتحت کر لیا ہے لیکن عوام کو پانی نہیں مل رہا ،مئیر کراچی کو واٹر بور کا اختیار دیا جائے تاکہ وہ عوام کو جوابدہ ہوں، 41 فیصد شہر میں پانی کی سپلائی کا نظام موجود نہیں سب سے پہلے انفراسٹرکچر کو ڈالا جائے ،گاربیج اسٹیشن بنایا جائے تاکہ کچرا آسانی سے ٹھکانے لگایا جاسکے ،انہوں نے کہاکہ ماسٹر پلان ڈپارٹمنٹ غیر قانونی تعمیرات سے روکتا تھا اسے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسر کے ماتحت کر دیا گیا رشوت کے عیوض غیر قانونی بلند عمارت کے اجازت نامے جاری کر دیے گئے ۔ انہون نے کہاک تمام محکموں کو میئر سے لے کر اتھارٹی بنا کر اپنے لوگوں کو پروجیکٹ ڈائیریکٹر لگایا گیا ہے اورٹرانسپورٹ کا نظام درہم برہم ہے، وفاقی حکومت کے منصوبے گرین لائین پر کسی طرح سے کام ہورہا ہے اورکراچی کیلئے فوری طور پر مانز ٹرانزٹ سسٹم نافذ کیا جائے انہوں نے کہاکہ کراچی کے لوگوں کے خون پسینے کی کمائی کو کے الیکٹرک نے لوٹا ہے وفاقی حکومت کے ادارے رپورٹ تیار کر چکے ہیں کہ کراچی میں اوور بلنگ ہوئی ہے لیکن کوئی ایکشن نہیں لیا گیا کراچی والوں سے پوچھے بغیر کے الیکٹرک کو ایک بار پھر بیچ دیا گیا ہے اورکے الیکٹرک کے سی ای او کو گرفتار کے کر فوری طور پر اوور بلنگ ہر تحقیقات کی جائیں انہوں نے کہاکہ ہم پاکستان بنانے والوں کی اولادیں ہیں ہمارے ساتھ نا انصافیوں کا سلسلہ بند کیا جائے حکمرانوں کی جھولی شان و شوکت اور جھوٹے مینڈیٹ پر حملہ کریں گے انہون نے کہاکہ ہمارے مسائل حل کریں گے تو سر پر بٹھائیں گے نہیں کریں گے تو حکمرانی نہیں کر پائیں گے سندھ کی ایک نہر کو صفائی کے نام ہر بند کردیا گیا، سندھ کے حکمران باردانہ اپنے لوگوں کو دے رہے ہیں، کسانوں کا کوئی پرسان حال نہیں، خدارا غریب کسانوں پر رحم کرو. اوربلوچستان کی حکومت وہاں تیار ہوئی گندم کو خریدنے کیلئے حکومت مراکز قائم کرے انہوں نے کہاکہ ترکی اور چائنا کی مثال دینے والے یہ بتائیں کے وہاں بلدیاتی ترقیاتی کام وزیراعظم کرتے ہیں یا میئر، ہماری تحریک ختم ہونے والی نہیں ہے یہاں سے اٹھیں گے کسی اوت جگہ جا کر احتجاج کریں گے ہم نہ گولی چلائیں گے نہ ہنگامہ آرائی کریں گے بلکہ اپنے عوام کے حقوق کیلئے لڑیں گے انہوں نے کہاکہ ہم پر ظلم کرکے ہمارے حقوق غصب کرکے ہماری اس ملک سے محبت کو کم کرنے کی کوشش مت کریں ہم کل کی رات سینکڑوں ہزاروں راتوں سے بہتر ہے جو فٹ پاتھ پر اپنے لوگوں کیلئے گزاری ہے اورانیس قائم خانی اور دیگر رہنما اپنے لیے پروٹوکول حاصل کرنے کیلے نہیں بیٹھے،

 

05-April-2017

لاہور بیدیاں روڈ خودکش دھماکے پر سید مصطفی کمال کا اظہار مذمت

دہشت گردی کے خلاف اس جنگ مے پوری قوم افواج پاکستان اور دیگر عسکری اداروں کے ساتھ سیسہ پلاء دیوار بن کر کھڑی ہے
چیئرمین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفیٰ کمال نے لاہور بیدیاں روڈ خودکش دھماکے کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اور خودکش دھماکے کے نتیجے میں مردم شماری کے اہلکاروں سمیت سیکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہارکیا ہے ۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ دہشت گردی کے خلاف اس جنگ مے پوری قوم افواج پاکستان اور دیگر عسکری اداروں کے ساتھ سیسہ پلاء دیوار بن کر کھڑی ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم نواز شریف، صدر مملکت ممنون حسین، وفاقی وزیر دخلہ چوہدری نثارعلی خان دیگر اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ دہشت گردی کے اس واقع مے شامل عناصر کو فی الفور گرفتار کر کے قانون کے مطابق سخت سے سخت سزا دی جائے ۔انہوں نے دھماکے میں زخمیوں ہونے والے افراد کے جلد و مکمل صحت یابی کیلئے دعا بھی کی۔

================

سیاست انسانی درد کے ساتھ کی جائے تو معاشرے کا درد ختم ہوجائے گا ,رضاہارون پی ایس پی سیکریٹری جنرل
مصطفی کمال سے وہ محبت کر تے ہیں اور یہ محبت بہت جلد لارڈنذیر اور مصطفی کمال سے ملاقات کا سبب بنے گی، لارڈنذیر
پی ایس پی کی وفد کی آج کے پروگرام میں موجودگی پر خوشی کا باعث بھی ہے اور خوش آئند بھی ہے,KORTچیئریٹی کے روح رواں چوہدری اختر

لندن۔( )KORTچیئریٹی کاپر گروام شفیلڈ میں منعقد ہو اجس میں KORTچیئریٹی کے روح رواں چوہدری اختر ،پی ایس پی سیکریٹری جنرل رضاہارون، لارڈنذیر احمد ، ،چوہدری الطاف شاہد، غلام بنی عامر، ڈاکٹر سرورخان، فرحان راجہ،دیگر عمائدین شہر کونسلرز اور خواتین و حضرات کی ایک بڑی تعداد میں شرکت کی ۔ ، تقریب سے خطاب کر تے ہوئے پی ایس پی کے سیکریٹری جنرل رضاہارون نے کہاکہ آج کے دور میں اس طرح کی خدمت کی نظیر نہیں ملتی ہے یقیناًچوہدری اختر نے دینا میں ہی جنت کمائی ہے۔انہوں نے کہاکہ سیاست انسانی درد کے ساتھ کی جائے تو معاشرے کا درد ختم ہوجائے گا اس مو قع پر لارڈنذیر نے کہاکہ پاک سرزمین پارٹی کی وفد کی آمد پرزبردست خراج تحسین پیش کر تے ہوئے کہاکہ مصطفی کمال سے وہ محبت کر تے ہیں اور یہ محبت بہت جلد لارڈنذیر اور مصطفی کمال سے ملاقات کا سبب بنے گی۔KORTچیئریٹی کے روح رواں چوہدری اختر نے کہاکہ وہ گزشتہ ما ہ پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی ذمہ داروان سے ملاقات کرکے آئے ہیں اس ملاقات کے سحر میں وہ ابھی تک مبتلا ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ پی ایس پی کے سیکریٹری جنرل رضاہاورن ودیگر وفد کی آج کے پروگرام میں موجودگی پر خوشی کا باعث بھی ہے اور خوش آئند بھی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سید مصطفی کمال کےKORT میں دورے کی دعوت پی ایس پی کے سیکریڑی جنرل رضاہارون کو دی۔ اس مو قع پر رضا ہارون نے یقین دلایا کہ پی ایس پی کے چیئر مین سید مصطفی کمال بہت جلد ہیKORTچیئریٹی میر پور آذاد کشمیر کاور کریں گے۔ اس مو قع پر پاک سرزمین پارٹی کے سینئر نائب صدر فرحان راجہ نے بھی خطاب کیا۔

 

04-April-2017

مردم شماری کے نتائج سے قبل نئی حلقہ بندیاں غیرآئینی و غیر قانونی ہیں ، رضاہارون سیکریٹری جنرل
الیکشن کمیشن آف پاکستان کی کارکردگی پہلے ہی مایوس کن ہے اور تمام ہی سیاسی جماعتوں نے اس کی کارکدگی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے
پی ایس پی موجودہ حلقہ بندیوں میں مردم شماری سے قبل کسی بھی تبدیلی کی اطلاعات کو پاکستانی قوم کے خلاف سازش سمجھتے ہوئے مسترد کرتی ہے
اعلی عدالتوں سے بھی رجوع کرے گی۔

کراچی () پاک سرزمین پارٹی کے سیکریٹری جنرل رضاہارون نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے ملک میں مردم شماری کے نتائج سے قبل نئی حلقہ بندیوں کی اطلاعات پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس عمل کو غیرآئینی و غیر قانونی قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں جاری مردم شماری کے مکمل نتائج کی روشنی میں ہی آئین وقانون کے مطابق نئی حلقہ بندیاں کی جا سکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی کارکردگی پہلے ہی مایوس کن ہے اور تمام ہی سیاسی جماعتوں نے اس کی کارکدگی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو ایک آزاد اور غیر جانبدار ادارے کے طور پر کام کرنا چاہئے اور اصلاحات و جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کے ذریعے الیکشن کے شفاف انعقاد کرانے پر توجہ مرکوز رکھنے چاہئے۔ رضا ہارون نے واضح کیا کہ پی ایس پی موجودہ حلقہ بندیوں میں مردم شماری سے قبل کسی بھی تبدیلی کی اطلاعات کو پاکستانی قوم کے خلاف سازش سمجھتے ہوئے مسترد کرتی ہے۔ پی ایس ہی ایسے عمل کو قطعی غیرآئینی و غیر قانونی سمجھتی ہیاور ایسے عمل کے خلاف نہ صرف احتجاج کرے گی بلکہ اعلی عدالتوں سے بھی رجوع کرے گی۔

=====================

صحرائے تھرمیں قحط سالی اورخوراک کی قلت سے آٹھ بچوں کی ہلاکت پر افتخار عالم کا اظہار تشویش
تھر میں قحط اور خشک سالی کی صورتحال انتہائی سنگین ہے علاج کی بنیادی سہولیتں نہ ہونے کی وجہ سے اب تک 87بچے کم سن بچے سسک سسک کر دم توڑ چکے ہیں

کراچی( ) پاک سر زمین پارٹی سیکرٹری انفارمیشن افتخار عالم نے صحرائے تھرمیں قحط سالی اورخوراک کی قلت سے آٹھ بچوں کی ہلاکت پر شدید تشویش کااظہار کیاہے اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ تھر میں قحط اور خشک سالی کی صورتحال انتہائی سنگین ہے علاج کی بنیادی سہولیتں نہ ہونے کی وجہ سے اب تک 87بچے کم سن بچے سسک سسک کر دم توڑ چکے ہیں انہوں نے کہاکہ قحط اورخشک سالی، حکومتی بدانتظامی کی وجہ سے درد ناک مناظرپیش کررہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت اداروں کی بدحالی اور تباہی کی ذمہ دار ہے اور تھر میں معصوم بچوں کی ہلاکت سندھ حکومت کی خاموشی مجرمانہ عمل ہے، انہوں نے کہا کہ پروٹوکول کے نام پر وزراء کڑوں روپے ماہانہ خرچ کرجاتے ہیں لیکن تھر نہ تو اسپتال اور ڈسپنریوں میں دوائیاں مہیا کی جاتی ہیں انہوں نے حکومت سند ھ سے مطالبہ کیا ہے کہ تھر میں قحط سالی اور انسانی جانوں کے تحفظ کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرے تاکہ قیمتی جانوں کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے