NEWS

کر اچی ۔۔۔31اکتو بر 2016ء

کراچی کے امن پسند اور باشعور عوام نے ملک مخالف عناصر کو پوری طرح مسترد کردیاہے، سید مصطفی کمال
پارٹی کے تمام کارکنان و ہمدردکو ورکرز کنونشن کامیاب بنانے پر مبارکباد، چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کما ل

کراچی ( ) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی جنرل ورکر کنونشن کا کامیاب اور بھرپور انعقاد مخالفین کے منفی پروپیگنڈے کا ایک چھوٹا سا جواب ہے کراچی کے امن پسند اور باشعور عوام نے مفاد پرست اور ملک مخالف عناصر کو پوری طرح مسترد کردیاہے ، اپنے بیان میں سید مصطفی کما ل نے کارکنان و ہمدردوں کو ورکرز کنونشن کامیاب بنانے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں اتنی بڑی تعداد میں کراچی کے کارکنان کی آمد کی امید تھی لیکن اہلیان کراچی نے یہ ثابت کردیاہے کہ یہ پڑھے لکھے باشعورلوگ کسی بھی منفی قوت کے سامنے ڈٹ سکتے ہیں ، انہوں نے مزید کہا کہ مجھ سمیت پوری پاک سرزمین پارٹی کی ذمہ داریاں اور بڑھ گئیں ہیں، ہمیں اپنی کامیابی پر غرور نہیں کرنا اور نیک نیتی کے ساتھ اپنے اس وطن پرستی کے کاروان کو منزل مقصود تک پہنچانا ہے اور محبتوں کے پیغام کو نہ صرف عام کرنا ہے بلکہ اپنے کردار سے لوگوں کو اپنی طرف لانا ہے اور اپنے اس پاک وطن کی ترقی اور خوشحالی کے لئے دل و جان سے دن و رات محنت کرنی ہے او ر اس ملک کو قائد اعظم کو حقیقی پاکستان بنانا ہے ۔

کر اچی ۔۔۔31اکتو بر 2016ء

سید مصطفی کمال کی پرامن مظاہرین پر آنسو گیس شیلنگ کی پرزور الفاظ میں مذمت
وزیر اعلی خیبر پختونخواہ کے قافلے کو اسلام آباد آنے سے روکنے کیلئے آنسو گیس شیلنگ سمجھ سے بالاترہے، چیئر مین پاک سر زمین پارٹی

کراچی ( ) چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے پاکستان ہاؤس سے جاری اپنے بیان میں حکومت کی جانب سے پرامن مظاہرین پر آنسو گیس کی شیلنگ اور کنٹینر لگاکر تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے کارکنان کو غیر جمہوری طریقے سے روکنے کی پرزور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ شیخ رشید کی جماعت ہو یا تحریک انصاف کسی بھی جماعت کوپر امن مظاہرہ کرنے کاجمہوری و آئینی حق حاصل ہے اورکوئی بھی طاقت کے بل بوتے پر اسے روکنے کا حق حاصل نہیں ،منتخب وزیر اعلی خیبر پختونخواہ کے قافلے کو اسلام آباد آنے سے روکنااور ان کے قافلے پر آنسو گیس کی شیلنگ سمجھ سے بالاترہے۔ حکومت ایسے غیر آئینی اور غیر قانونی ہتھکنڈوں سے باز رہے ، انہوں نے مزید کہا کہ پاک سرزمین پارٹی پر امن مظاہرین پر حکومتی مشینری کی استعمال کی مخالفت کرتی ہے اور حکومت وقت سے یہ مطالبہ کرتی ہے کہ مظاہرین کے ساتھ ایسا رویہ نہ روا رکھا جائے اور انہیں اشتعال میں لائے بغیر اپنا آئینی حق استعمال کرنے دیا جائے ۔

کر اچی ۔۔۔31اکتو بر 2016ء

چیئرمین سید مصطفی کما ل نے گلگت بلتستان کے جشن آزادی کے موقع پر صوبے کے عوام کو مبارکباد
گلگت بلتستان کے عوام نے جس اتفاق و اتحاد اور فرقہ واریت سے بالاتر جو عملی جدوجہد کی وہ لائق تحسین ہے، سید مصطفی کمال

کراچی ( ) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کما ل نے گلگت بلتستان کے جشن آزادی کے موقع پر صوبے کے عوام کو مبارکباددی ، گلگت بلتستان کے عوام کے نام اپنے پیغام میں انہوں نے کہا ہے آزادی کی اس کامیابی کو حاصل کرنے کے لئے گلگت بلتستان کے عوام نے جس اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کیا اور فرقہ واریت و رنگ و نسل سے بالاتر ہوکر جو عملی جدوجہد کی وہ لائق تحسین ہے۔

 

کر اچی ۔۔۔30اکتو بر 2016ء

سات ماہ کے قلیل عرصے میں پاکستان کی کوئی پارٹی اتنی بڑی تعداد میں کارکنان کو جمع نہیں کر سکی ہے، چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال
یہ کیسی جمہوریت ہے جو شہر پورے پاکستان کا ریونیو انجن ہے ، آج یہاں کے بزرگ پینشن نہ ملنے کی وجہ سے خودکشی کررہے ہیں ا سٹیل مل پچھلے سالوں سے بند ہے، ملازمین سڑکوں پر احتجاج کررہے ہیں ان کی سننے والا کوئی نہیں، سید مصطفی کمال
حکومت کا شیخ رشید اور عمران خان کے احتجاج پر ردعمل غیر قانونی و غیر آئینی ہے،
پاک سر زمین پارٹی کا نقظہ نظر یہ ہے کہ تحریک انصاف اور عوامی مسلم لیگ نے قانون کو ہاتھ میں نہیں لیا، سید مصطفی کمال

کراچی ( ) چیئر میں پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ 7ماہ کے قلیل عرصے میں پاکستان کی کوئی پارٹی اتنی بڑی تعداد میں کارکنان کو جمع نہیں کر سکی ہے، آج پاک سرزمین پارٹی کے لئے تاریخ ساز دن ہے ،پاک سر زمین پارٹی کراچی سے نکل کر پورے پاکستان کی جماعت بن چکی ہے سندھ، پنجاب، بلوچستان، خیبر پختون خواہ، گلگت بلتستان سمیت دبئی، یورپ، برطانیہ، امریکہ، آسٹریلیا سمیت جہاں جہاں پاکستانی موجود ہیں وہاں پاک سر زمین پارٹی کا آرگنائزنگ سسٹم موجود ہے، ہم سب پستی اور گہری کھائی میں گئی قوم کو بچانے کے لئے نکلے ہیں اپنی کامیابی پر گھمنڈ اور غرور نہیں کرنا بلکہ اپنے رب کا شکر ادا کرنا اور جھکنا ہے غلط کام کی طرف قدم نہیں اٹھانا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاک سرزمین پارٹی کے کراچی جنرل ورکر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا ملک کے آئین کے مطابق کسی بھی جماعت کو احتجاج کرنے کا حق حاصل ہے، لیکن حکومت کا شیخ رشید اور عمران خان کے احتجاج پر ردعمل غیر قانونی و غیر آئینی ہے160پاک سر زمین پارٹی حکومت کے ایسے تمام اقدامات کی مذمت اور جمہوری احتجاج کی حمایت کرتی ہے، پاک سر زمین پارٹی کا نقظہ نظر یہ ہے کہ تحریک انصاف اور عوامی مسلم لیگ نے قانون کو ہاتھ میں نہیں لیا،انہوں نے کارکنا ن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ پاک سر زمین پارٹی کی ترقی کی راہ میں رکاوٹ صرف ہمارے اعمال ، روئیے اور نیت کی وجہ سے ہوگی ہمیں اپنی کامیابی پر گھمنڈ اور غرور نہیں کرنا بلکہ اور زیادہ عاجز بننا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سنا ہے ہمارے ملک میں جمہوریت ہے لیکن جمہوری لوگ مردم شماری نہیں کرا سکے کہ کہیں ان کی سیٹوں کی سیاست خطرے میں پڑ جائے گی،افسوس کی بات ہے بغیر مردم شماری کے بجٹ بنا کر عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکی جاتی ہے ہزاروں ارب روپے بغیر کسی سوچ اور پلاننگ کے خرچ کیے جارہے ہیں، سپریم کورٹ بول بول کر تھک گئی لیکن نتیجہ صفر ہے حکومت ہمیشہ کی طرح ٹال مٹول سے کام لیتی ہے، لاکھوں بچے سالانہ خوراک کی کمی اور صاف پانی نہ ملنے سے ہلاک ہو رہے ہیں دشمن ہماری سرحدوں پر آئے روز معصوم شہریوں کو شہید کرتا ہے،پورے ملک میں کسی شعبے کو نہیں بخشا جارہا ہر جگہ دہشتگردی ہے ارباب اختیار عوام کو صحت کی بنیادی سہولت ہی نہیں دے پارہے، تعلیم کے فقدان کی وجہ سے پوری نسل تعلیم کے زیور سے محروم ہے،پاکستان کو کہاں لے کر آچکے ہیں؟ یہ کیسی جمہوریت ہے؟ جو شہر پورے پاکستان کو پالتا تھا ریونیو انجن تھا، آج. یہاں کے بزرگ پینشن نہ ملنے کی وجہ سے خودکشی کررہے ہیں ا سٹیل مل سالوں سے بند ہے، ملازمین سڑکوں پر احتجاج کررہے ہیں ان کی سننے والا کوئی نہیں،یہ کیسی جمہوریت ہے کہ اگر عوامی بنیادی مسائل کے حل کے لیے بھی اگر فوج کام کرے گی تو جمہوری حکومت کا کیا فائدہ؟، سید مصطفی کمال نے کہا کہ صرف ایوانوں میں نہیں بلکہ جمہوریت عوام کے ہاتھوں میں چاہیے، جہاں عوامی نمائندوں کے ہاتھ میں گلی و محلے کا بجٹ ہو ،فوج ضرب عضب میں رات دن مصروف عمل ہے ۔کیافوجی آپریشن سے سب کچھ ٹھیک ہوجائے گا؟ دشمن ہماری سرحدوں پر آئے روز معصوم شہریوں کو شہید کرتا ہے،ہر جگہ دہشتگردی ہے ہمیں ان سب عناصر کا خاتمہ کرنے کیلئے عملی جدوجہد کرنی ہے اور اپنے ملک کو ملی یکجہتی کے ذریعے مشکل حالات سے نکالنا ہے اور اس کی بقاء و سلامتی کے لئے کام کرنا ہے۔

کر اچی ۔۔۔26اکتو بر 2016ء

کراچی( ) پاک سر زمین پارٹی کی جانب سے بھرپور عوامی رابطہ مہم جاری ہے،پارٹی کی جانب سے 30اکتوبر بروز اتوار جنرل ورکرز کنونشن کا انعقاد کیا جا رہا ہے ۔ چیئر مین سید مصطفی کمال نے گلستانِ جوہر کا دورہ کیا جس میں علاقہ مکین اور تاجروں سے ملاقات کی ،پارٹی کارکنان کوجنرل ورکرزکنونشن میں شرکت کی دعوت دی اور عوام کے بھرپور ساتھ دینے پہ ان کا شکریہ ادا کیا نیز انہوں نے کہا کہ جنرل ورکرز کنونشن کے بعد عوامی طاقت سے کرپٹ اور نااہل سیاستدانوں کو اپنے قبلے ٹھیک کرنے پر مجبور کردیں گے اور عوام کے ساتھ مل کر ان کے تمام بنیای حقوق لے کر رہیں گے۔عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں سیکریٹری جنرل رضا ہارون نے بھی کورنگی ٹاؤن کا دورہ کیا عوام سے ملاقات کی ،ان کے مثائل سنے اور ٹاؤن کے ورکرز اجلاس سے خطاب کیا ۔نیز سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر صغیر نے بھی بلدیہ ٹاؤن آفس کا دورہ کیا، عوام کے ساتھ حضرت سید سخی سلطان میاں قادری کے دربار پر حاضری دی ، گھانچی محلہ میں حضرت عبداللہ میاں قادری سے ملاقات کی اور فشر مین کچھی میانہ جماعت کے ذمہ داران اور آزاد کونسلر سے ملاقات کی ۔اس موقع پر کچھی میانہ جماعت کے ذمہ داران نے اپنے بھرپور ساتھ کی یقین دہانی بھی کروائی۔وائس چیئر مین وسیم آفتاب ، ممبر سینٹرل ایکزیکٹو کمیٹی ساجد رشید اور ممبر نیشنل کونسل محمد دلاورنے بھی ڈسٹرکٹ ساؤتھ ،رنچھوڑلائن کا دورہ کیا جہاں تینوں رہنماؤں نے ورکرز اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عوام کی جانب سے اتنے مختصر وقت میں بڑی تعداد میں شرکت پر اظہارِ تشکر کیااور ورکرز کو کنونشن میں مدعو کیا۔ عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں جاری تمام اجلاسوں میں شہداء کوئٹہ کے ایصال ثواب کے لئے دعا کی گئی ،اجلاسوں میں عوام بالخصوص خواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی قیادت پہ بھرپور اعتماد کا اظہار کیا۔

کر اچی ۔۔۔21اکتو بر 2016ء

کراچی( ) سیکریٹری انفارمیشن پاک سر زمین پارٹی افتخار عالم نے اپنے بیان میں کہا کہ کراچی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی تشکیل دی جانے والی گورننگ باڈی اہلیانِ کراچی کے زخموں پہ نمک چھڑکنے کے مترادف ہے ،حکومتِ سندھ کی عدم توجہی کی وجہ سے کراچی پہلے ہی مسائل کے انبار میں گھرا ہوا ہے ، اب KDAجیسے اہم ادرے میں عوامی بلدیاتی نمائندوں اور کراچی چیمبر کی نمائندگی نہ ہونا کراچی کی عوام کے ساتھ سرا سر ذیادتی ہے ، حکومتِ سندھ اہلیان کراچی کے مسائل کو نظر انداز کر کے اور شہری علاقوں کے حقوق سلب کر کے شہری علاقوں میں اپنی اجارہ داری قائم کررہی ہے ۔ KDAجیسے اہم ادارے کی گورننگ باڈی میں عوامی نمائندگان کو نہ لینا بد نیتی پہ مبنی ہے ۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ فی الفورادارے کی گورننگ باڈی تحلیل کر کے نئی گورننگ باڈی بنائی جائے جس میں بلدیاتی نمائندگان اور بالخصوص کراچی چیمبر کی نمائندگی کو یقینی بنایا جائے تاکہ شہر کراچی کے بڑھتے ہوئے مسائل کے حل کو یقینی بنایا جا سکے۔

کر اچی ۔۔۔20اکتو بر 2016ء

گورنر دوہری شہریت کے حامل ہیں اور ملکہ برطانیہ کے وفادار ہیں گورنر سندھ کا نام ایسی ایل میں ڈال کر فی الفور گرفتارکیا جائے ،ان کے خلاف شفاف تحقیقات کا آغاز کیا جائے ۔
کراچی اور اس میں بسنے والی مہاجر کمیونٹی ایک جسم کے مترادف ہے ، مصطفی کمال
گورنر سندھ نے اپنے 14سالہ اقتدار میں عوام کی فلاح کا کوئی کام نہیں کیا ،
مصطفی کمال نے عشرت العباد کی جانب سے لگائے گئے الزامات پر جی آئی ٹی بنانے اور تحقیقات کا مطالبہ کیا
گورنر برطانوی حکومت سے عہدے پر فائز رہ کر بے روز گاری کی مد میں پیسے لیتے رہے ، غلط بیانی پر آرٹیکل62اور63 کی خلاف ورزی کے مرتکب اور نا اہل ہو گئے
سانحہ بلدیہ ،12مئی ،نشتر پارک اور 27دسمبر کو شہر میں ہونے والی قتل و غارت کی از سرِ نوع تحقیقات کامطالبہ
ڈاؤ میڈیکل کالج میں میرٹ کے خلاف4مرتبہ وائس چانسلر بنایامیٹرک اور انٹر بورڈ میں 50ہزار میں ڈگریاں فروخت ہو رہی ہیں
پاکستان کی عسکری قیادت کی ضرب عضب میں صلاحیتوں اورکامیابیوں کو دنیا مانتی ہے

کراچی( )چیئر مین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد کے جانب سے لگائے گئے الزامات کا جواب دیتے ہوئے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر جسم میں ناسور پیدا ہوجائے تو اسے نکالے بغیر انسان ایک صحت مند زندگی نہیں گزار سکتا ،پاکستان اور اس میں بسنے والی تمام کمیونٹیز ایک جسم کے مترادف ہیں ،، ہماری گورنر سندھ سے کوئی ذاتی لڑائی نہیں ہے ،انہوں نے عشرت العباد کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ گورنر خود کو اسٹیبلشمنٹ کا آدمی کہتے ہیں اور خود کو بچانے کے لئے اسٹیبلشمنٹ کا سہارا لیتے ہیں ، پاکستان کی موجودہ عسکری قیادت کی ضرب عضب میں صلاحیتوں اورکامیابیوں کو دنیا مانتی ہے ،گورنر عسکری قیادت سے اپنی قربتیں بتا کر ان کے پیچھے اپنے گناہوں کو چھپانا چاہتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ گورنر کی حقیقت بیان کرنے کے بعد سے ملک بھر سے لوگوں نے پاک سر زمین پارٹی کو گورنر کے خلاف ثبوت بھیجنے شروع کر دیئے ہیں اور گورنر سندھ کے موقف کو یکثر مسترد کر دیا ہے ۔ گورنر سندھ نے اپنے 14سالہ اقتدار میں عوام کی فلاح کا کوئی کام نہیں کیا ، رشوت لے کر ادارے تباہ کر دیئے ، انہوں نے عشرت العباد کی جانب سے خود پرلگائے گئے الزامات پر جی آئی ٹی بنانے اور تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا، انہوں نے 12مئی2007 کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ گورنر2016کے اکتوبر تک کیا کرتے رہے ۔اگر وہ قاتلوں کو پکڑوا سکتے تھے تو مجرمانہ غفلت کیوں کی؟انہوں نے12مئی کے کیس کو کھولنے اور اس کی از سر نوع تحقیقات کا مطالبہ کیا نیز منتخب چیئر مین کراچی وسیم اختر کے اعترافی بیان کا حوالہ بھی دیا جس میں انہوں نے 12مئی کے حوالے سے گورنر ہاؤس میں منعقد کی جانے والی میٹنگز کا اعتراف کیا،انہوں نے سانحہ بلدیہ میں بھی گورنر سندھ پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے فیکٹری مالکان کو گرفتار کر کے رہاء کروایا اور کیس کو دہشتگردی کا کیس بنوا کر پیش کیا تاکہ باہر سے ملنے والی انشورنس کی رقم سے اپنا حصہ لے سکیں ،بلدیہ فیکٹری کو چھ سال گزر گئے آج تک بے گناہ لوگوں کے قاتل نہیں پکڑے گئے ۔انہوں نے مزید کہا کہ گورنر دوہری شہریت کے حامل ہیں اور ملکہ برطانیہ کے وفادار ہیں، وہ دوسرے ممالک کو پاکستان کی اہم معلومات دے سکتے ہیں ، گورنر برطانوی حکومت سے عہدے پر فائز رہ کر بھی بے روز گاری کی مد میں پیسے لیتے رہے ہیں ،غلط بیانی پر آرٹیکل62اور63 کی خلاف ورزی کے مرتکب اور گورنر شپ کے لئے نا اہل ہو گئے ہیں ، اس کے ساتھ انہوں نے 27دسمبر کو شہر میں ہونے والی قتل و غارت کی تحقیقات کامطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ عشرت العباد نے سندھ کے تعلیمی اداروں کو تباہ کردیا ،ڈاؤ یونیورسٹی میں میرٹ کے خلاف4مرتبہ وائس چانسلر بنایامیٹرک اور انٹر بورڈ میں 50ہزار میں ڈگریاں فروخت ہو رہی ہیں ،یہ سب گورنر سندھ کی کرپشن کی کھلی مسال ہے ۔انہوں نے عوام کا ساتھ دینے پہ شکریہ ادا کیا اور مطالبہ کیا کہ گورنر سندھ کا نام ایسی ایل میں ڈال کر فی الفور گرفتارکیا جائے ،ان کے خلاف شفاف تحقیقات کا آغاز کیا جائے ۔

کر اچی ۔۔۔17اکتو بر 2016ء

پاک سرزمین پارٹی کے وائس چیئر مین ، سابقہ ایم پی اے اشفاق منگی کے گھر پر فائرنگ ، بھائی زخمی ،شدید افسوس اور غصے کا اظہار ۔ مصطفی کمال

الطاف حسین سے اسی طرح کی توقعات تھیں وہ ایک بزدل انسان ہیں ۔ چیئر مین پاک سر زمین پارٹی

کراچی ( )چیئر مین پاک سرزمین پارٹی سید مصطفی کمال نے پارٹی وائس چیئر مین اور سابقہ ایم پی اے اشفاق منگی کے گھر پر فائرنگ میں ان کے بھائی کے زخمی ہونے پرشدید افسوس اور غصے کا اظہار کیا،انہوں نے اس موقع پر ارباب اختیار کو اس واقعے کی فوری تحقیقات اور ذمہ داروں کو فلفور گرفتار کر نے کا مطالبہ کیا،اس موقع پہ انہوں نے کہا کہ جو عناصر راء کے ایجنٹوں کے لئے کام کر رہے ہیں وہ انہیں بھی پکڑے جانے کے بعد اپنا نہیں مانیں گے ان کی ماؤں بہنوں کو بھی در در کی ٹھوکر یں کھانے پر مجبور ہونا پڑے گا۔ہم نے وقت کے فرعون کو للکارہ ہے وہ ڈو بتے ڈوبتے بھی آخری حد تک جائے گا ،یہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی ذمہ داری ہے کہ ہم جو کام وطن عزیز کی خاطر اپنی جانوں کی پرواہ کئے بغیرکررہے ہیں اس میں ملک دشمن عناصرکوئی رکاوٹیں کھڑی نہ کر سکیں۔ہمیں الطاف حسین سے اسی طرح کی توقعات تھیں وہ ایک بزدل انسان ہیں اور ہمیں بندوق کی نوک پہ خاموش کرانا چاہتے ہیں اور اپنی دنیاوی طاقت دکھا کر پیچھے ہٹانے کی کوشش کررہے ہیں۔الطاف حسین22ااگست کو ختم ہو گئے تھے انہیں تقویت بخشنے والی قوت متحدہ قومی موومنٹ پاکستان ہے فاروق ستار اور ان کے ساتھ کے لوگ انہیں جلا بخش رہے ہیں۔

کر اچی ۔۔۔13اکتو بر 2016ء

پاک سر زمین پارٹی 6ماہ کے قلیل عرصہ میں کروڑوں لوگو ں کی ترجمان اور ان کے دلوں کی آواز بن چکی ہے۔سید مصطفی کمال
سابقہ سینیئرممبران رابطہ کمیٹی نیک محمد ، سلیم تاجک اورسیدشاکر علی اپنی سابقہ تین دیہائیوں کی رفاقت کو الوداع کہہ کر پاک سر زمین پارٹی میں شامل
ڈی جی رینجرز کراچی کو امن کا گہوارہ بنانا چاہتے ہیں، نیت اورکار کردگی پر شک نہیں ،امن کو مستقل بنیادوں پر جاری رکھنا سیاسی قوتوں کی ذمہ داری ہے
متحدہ کی وکالت وفاق میں ن لیگ اور سندھ میں پی پی پی کر رہی ہے ، عوام کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم رکھنا ان تمام کا مشترکہ ایجنڈا ہے
پاک سر زمین پارٹی کا فلسفہ ہتھیار پھینکو کتابیں اور کمپیوٹر خریدو پورے پاکستان کے لئے مشعل راہ ہے

کراچی ( ) چیئر مین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے پاکستان ہاؤس میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حق و سچ کے قافلے کا سفر اپنی منزل کی جانب جاری ہے آج اس قافلے میں سابقہ متحدہ قومی مو ومنٹ کی سینیئر شخصیات شامل ہورہی ہیں،پاک سرزمین پارٹی تمام آنے والوں کو دل کی گہرایؤں سے خوش آمدید کہتے ہیں، سابقہ سینیئرممبران رابطہ کمیٹی نیک محمد ، سلیم تاجک اورسیدشاکر علی اپنی سابقہ تین دیہائیوں کی رفاقت کو الوداع کہہ کر پاک سر زمین پارٹی میں شامل ،مذکورہ شخصیات کا متحدہ قومی موومنٹ کی تنظیم سازی میں اہم ترین کردار رہا ہے ۔
تین مارچ سے لے کر آج تک ہم پر بہت الزامات لگائے گئے لیکن ہم نے تمام رکاوٹوں کو عبور کیا،خیابان سحر سے شروع ہونے والا قافلہ آج کراچی ہی میں نہیں بلکہ سندھ،بلوچستان،پنجاب،کے پی کے ،گلگت بلتستان ،آزاد کشمیراور پاکستان سے باہر مڈل ایسٹ،سعودیہ،یو ایس اے ،یوکے،کینیڈا،آسڑیلیااور دنیا بھر کے مختلف ممالک میں پہنچ چکا ہے اور پاک سر زمین پارٹی اپنی تنظیم سازی کا کام باخوبی سر انجام دے رہی ہے،صرف6ماہ کے قلیل عرصہ میں کروڑوں لوگو ں کی ترجمان اور ان کے دلوں کی آواز بن چکی ہے ہمارا ارادہ پختہ ہے اور ہمارا سفر منزل پر پہنچ کر ہی ختم ہوگاہم کچھ لوگوں کی رائے سن کر اپنی منزل سے بھٹکنے والے نہیں ،پاک سر زمین پارٹی پہ یہ الزام عائد کیا جاتا ہے کہ ہے کے یہاں آنے والے افراد بالخصوص ایم کیو ایم سے وابسطتگی رکھنے والے جرائم پیشہ ہیں،تو فاروق ستار کو یہ پیش کش کرتا ہوں کے وہ ایم کیو ایم میں باقی رہ جانے والے کارکنان کی لسٹ بنا دیں کہ ان میں سے کون کون جرائم پیشہ ہیں تاکہ پاک سر زمین پارٹی اس لسٹ کے مطابق کسی بھی جرائم پیشہ کو اپنے قافلے میں شامل نہ کرے کیونکہ وہاں پر موجود کارکنان قانون کے پاس دار ہوتے ہیں یہاں آتے ہی وہ جرائم پیشہ کہلانے لگتے ہیں ہم سچ بولتے ہیں اور سچ ہی بولتے رہیں گے ڈی جی رینجرز کراچی کو امن کا گہوارہ بنانا چاہتے ہیں ان کی نیت اورکار کردگی پر کسی کو شک نہیں ہے دنیا اور پاکستان بھر میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کا کام امن قائم کرنے کے لئے سخت اقدامات کرنا ہوتا ہے جو آج کے دور میں ڈی جی رینجرز کر رہے ہیں مگراس امن کو مستقل بنیادوں پر جاری رکھنا سیاسی قوتوں کی ذمہ داری ہے جرائم میں مبتلا معاشرے کے لوگوں کے ذہنوں کو مثبت راہ پر ڈالنا سیاسی قوتوں کی اولین ذمہ داری ہے اور یہ کام پاک سر زمین پارٹی شروع دن سے ہی کر رہی ہے ہمارا فلسفہ ہتھیار پھینکو کتابیں اور کمپیوٹر خریدو پورے پاکستان کے لئے مشعل راہ ہے اسی طرح پورے پاکستان میں امن قائم ہو سکتا ہے ، با شعور لوگ جانتے ہیں کہ متحدہ کی وکالت وفاق میں ن لیگ اور سندھ میں پی پی پی کر رہی ہے کیونکہ عوام کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم رکھنا ان تمام کا مشترکہ ایجنڈا ہے، اربابِ اختیارعوام کوتمام بنیادی سہولتیں پانی ،بجلی ،گیس ،صحت اور تعلیم مہیا کریں ۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ فاروق ستار کو سینئرمانا ہے اور ہم آج آپ کے توسط سے انہیں یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ متحدہ ان کے لئے بہتر جگہ نہیں نہ اس کا مینڈیٹ ان کا ہے ہم انہیں اور ان کی پوری ٹیم کو قوم، اور ملک کے وسیع تر مفاد میں ہاتھ ملانے کی پیشکش کرتے ہیں ،انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان بھر میں نو زائدہ بچوں کی ہلاکتیں بڑھتے ہوئے سالانہ 350000تک جا پہنچی ہیں جسکی وجہ صاف پانی کی عدم دستیابی اور خوراک کی قلت ہے، یہ ارباب اختیار کی غلط پالیسیوں کی نتیجہ ہے تھر ، بلوچستان ،خیبر پختونخواہ اور پنجاب میں ان بچوں کی ہلاکتیں ، قتل کے زمرے میں آتی ہیں جس کی ذمہ داری لینے والا کوئی نہیں۔

کر اچی ۔۔۔6اکتو بر 2016ء

معرف علما دین شاہ تر ب الحق قادری کے انتقال پر پا ک سر زمین پا رٹی کے چےئر مین سید مصطفی کمال نے گہر ے دکھ اور افسوس کا اظہا ر

پا ک سر زمین پا رٹی کے چےئر مین سید مصطفی کما ل نے معرف علما دین شاہ تر ب الحق قادری کے انتقال پرگہر ے دکھ اور افسوس کا اظہا ر کیا ہے ۔اپنے ایک بیان میں مصطفی کما ل نے کہا کہ شاہ تر الحق قادری کا خلاء کو ئی پر نہیں کر سکتا مصطفی کما ل نے شاہ ترب الحق قادری کے تمام سوگوار لو احقین سے دلی تعزیت وہمد ری کا اظہا ر کر تے ہو ئے دعا کی اللہ پا ک شاہ ترب الحق قادری کو جنت الفر دوس میں اعلی مقام عطا کرے اور شاہ تر ب الحق قادری کے لواحقین کو یہ صدمہ بر داشت کر نے کی ہمت دیں ۔(آمین )

کر اچی ۔۔۔6اکتو بر 2016ء

پا ک سر زمین پا رٹی کے وائس چےئر میں وسیم آفتاب نے کر اچی کے بعض علا قوں میں محرم الحرام کے سلسلے میں شہر یو ں کی جانب سے لگا ئی گئی سبلیں پو لیس کی جا نب سے ہٹا نے کی مذمت کی ہے ۔

اپنے ایک بیان میں انہو ں نے کہا کہ گلستان جو ہر اور کر اچی کے دیگر علا قوں میں شہر یو ں نے ہر سال کی طر ح اس اسال مر تبہ بھی محرم الحرام کے سلسلے میں سبیلیں قائم کی ہیں لیکن پو لیس اہلکا رو ں کی جا نب سے اس میں مسلسل رکا وٹیں کھڑی کی جا رہی ہیں مختلف بہا نے اور جو از بنا کر پیش کر کے سبیلو ں کو ہٹا یا جا رہا ہے اور سبیلیں لگا نے والے افراد کی پکڑ دھکڑ کی جا رہی ہے ۔وسیم آفتاب نے حکو مت سندھ اور آئی جی سندھ سے مطا لبہ کیا ہے کہ یہ سلسلہ بند کیا جا ئے اور شہریو ں کی مشکلا ت میں اضا فہ نہ کیا جا ئے ۔